26 جولائ, 2014 | 27 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

اصغرخان کیس:الیکشن کمیشن کارروائی نہیں کرسکتا

چیف الیکشن کمشنر فخرالدین جی ابراہیم۔ فائل تصویر

اسلام آباد: چیف الیکشن کمشنر فخرالدین جی ابراہیم کا کہنا ہے کہ اصغر خان کیس فیصلے میں سیاستدانوں کے خلاف الیکشن کمیشن کے پاس کاروائی کی کوئی گنجائش نہیں۔

چیف جسٹس سے ملاقات کے بعد الیکشن کمشن میں میڈیا سے گفتگو میں چیف الیکشن کمشنر جسٹس ریٹائرڈ فخرالدین جی ابراہم نے بتایا کہ اصغر کیس فیصلے میں الیکشن کمیشن کے پاس سیاستدانوں کیخلاف کاروائی کا کوئی ائینی جواز نہیں ہے۔

رحمان ملک کی اہلیت سے متعلق فخرالدین جی ابراہیم نے کہا کہ چیرمین سینٹ سے تاحال ریفرنس موصول نہیں ہوا،ریفرنس موصول ہونے پر رحمان ملک کے خلاف کاروائی کی جائیگی۔

فخرالدین جی ابراہیم کا کہنا تھا کہ چیف جسٹس سے ملاقات میں عام انتخاب ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افیسرز عدلیہ سے تعینات کرنے پر بات ہوئی جس میں تعاون کی یقین دہانی کرائی گئی ہے۔

اس حصے سے مزید

آرٹیکل245 کا اطلاق خطرناک ثابت ہو گا،تحریک انصاف

پی ٹی آئی کےمطابق اسلام آباد میں امن عامہ کی صورتحال کنٹرول کرنے کیلئے فوج طلب کرنے کے فیصلے کوتسلیم نہیں کیاجائے گا۔

اسلام آباد: 'فوج طلب کرنے کا فیصلہ واپس نہیں لیا گیا'

وفاقی دارالحکومت میں فوج طلب کرنے کا نوٹیفیکیشن گزشتہ روز ہی جاری کردیا گیا تھا، ترجمان وزیراعظم ہاؤس۔

عمران خان بھی فلسطینیوں کے حق میں بول پڑے

اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل کو خط میں انہوں نے کہا کہ عالمی ادارہ فلسطینیوں کی ہلاکت پر خاموش تماشائی بنا ہوا ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

جنگ اور ہوائی سفر

پرواز کرنے کا معجزہ، جو انسانی ذہانت کا خوشگوار مظہر ہے، انسان کے انتقامی جذبات اور خون کی پیاس کی نذر ہوگیا ہے

تھوڑا سا احترام

آپ ایک مایوس، خوفزدہ بیوروکریسی سے کیا توقع کرسکتے ہیں جنہیں اپنی سمت کا علم نہ ہو؟

بلاگ

اخلاقیات: غیر مسلم پاکستانیوں کے لیے

اگر آج پاکستان میں غیر مسلم پاکستانیوں کا تناسب 5 فی صد بھی ہے تو 20 کروڑ کے ملک میں یہ ایک کروڑ پاکستانی بنتے ہیں۔

لکیر کے فقیر

دونوں صدارتی امیدواروں کے بیچ اقتدار کی جنگ نے افغانستان کو نسلی فسادات کی طرف دھکیل دیا ہے

گھریلو تشدد: پاکستانی 'کلچر' - حقیقت کیا ہے؟

پاکستانی سماج میں عورت مرد کی جائداد اور اس سے کمتر ہے چناچہ اس کے ساتھ کسی قسم کا سلوک روا رکھنا مرد کا پیدائشی حق ہے-

ریاستی تنہائی اور اجتماعی مہاجرت

جب تک سوچنے اور سوچ کے اظہار کے لیے ممکنہ حد تک ازادی موجود نہ ہو تب تک سماج میں تکثیریت پروان نہیں چڑھ سکتی