01 اگست, 2014 | 4 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

آئی ایس آئی سیاسی سیل پانچ سال قبل ختم کردیا گیا تھا'

سینیٹ کے اجلاس کا ایک منظر۔ فائل تصویر

اسلام آباد: سیکریٹری دفاع لیفٹنٹ جنرل ریٹائرڈ آصف یاسین ملک نے سینیٹ میں بتایا کہ انٹر سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) میں سیاسی سیل پانچ سال قبل ختم کردیا گیا تھا اور آئی ایس آئی ایسے کسی سیل کو نہیں چلاتی۔

ڈان نیوز کے مطابق سینیٹ میں دفاعی پیداوار پر قائمہ کمیٹی کی میٹنگ کے دوران ملک نے بتایا کہ فی الحال آئی ایس آئی میں کوئی سیاسی سیل کام نہیں کررہا۔

سیکریٹری دفاع نے مزید کہا کہ جب شمسی ایئر بیس امریکہ کے زیرِ استعمال تھا تو وہاں سے ڈرون حملے کئے جاتے تھے اور یہ فضائی حملے حکومت کی اجازت سے ہوتے تھے۔

بیس اکتوبر دوہزار گیارہ کو یہ ایئر بیس امریکہ کے بعد متحدہ عرب امارات کو سب لیز کردیا گیا تھا جس کی اجازت پرویز مشرف نے دی تھی۔ امریکہ نے گیارہ دسمبر دوہزار گیارہ کو یہ ایئربیس خالی کردیا گیا تھا۔

اجلاس کے دوران سیکریٹری دفاع نے رواں سال کی دفاعی بجٹ کی تفصیلات سینیٹ کی دفاعی کمیٹی میں پیش کی۔

انہوں نے  بتایا کہ رواں سال کا مجموعی دفاعی بجٹ پانچ سو پینتالیس ارب روپے ہے۔

دفاعی بجٹ میں سے فوج کا حصہ دو سو چونسٹھ ارب ،ایئر فورس کا بجٹ  ایک سو  چودہ  ارب اورنیوی کا  باون ارب  روپے ہے۔ دفاعی بجٹ میں سے  بانوے ارب کی رقم ائی ایس ائی، جوائنٹ اسٹاف ہیڈ کورٹر، ائی ایس پی ار اور دفاعی پیداوار کے اداروں کو فراہم کی جاتی ہے۔

سیکریٹری دفاع کا کہنا تھا کہ دفاعی اداروں، بشمول ائی ایس ائی کا بجٹ باقاعدہ آڈٹ کیا جاتا ہے۔  فوج ٹیکسوں کی مد میں اٹھائیس ارب روپے واپس کرتی ہے۔

امریکا نے نائین الیون کے بعد اب تک پاکستان کو بارہ ارب ڈالر دیے ہیں اور شمسی ائیر بیس استعمال کرنے پر امریکہ نے پاکستان کو ایک پائی بھی ادا نہیں کی۔

انہوں نے بتایا کہ نیٹو سپلائی کے بعد سے امریکا کی جانب سے دفاعی امداد بحال ہوچکی ہے۔

اجلاس میں شامل سینیٹر مشاہد حسین نے بتایا کہ کہ تینوں مسلح افراد کے سربراہاں دفاعی کمیٹی کے بلانے پر مستقبل میں پیش ہوں گے۔

سیکریٹری دفاع نے مزید بتایا کہ کوای لیشن اور اتحادی سپورٹ فنڈ کی امداد براہ راست جی ایچ کیو کونہیں ملتی۔

اس حصے سے مزید

اسلام آباد آج سے فوج کے حوالے

پاک فوج اسلام آباد کی سیکیورٹی کے لیے تین مہینے تک سول انتظامیہ کی مدد کرے گی۔

'دو سو ارب ڈالر واپسی کیلئے سوئس حکومت سے مذاکرات'

مذاکرات کے کئی دور ہوں گے جن میں تین سے چار سال تک کا عرصہ بھی لگ سکتا ہے، وفاقی وزیر خزانہ۔

ایل او سی: گلتری سیکٹر پر ہندوستان کی بلااشتعال فائرنگ

پاکستانی سیکیورٹی فورسز نے ہندوستانی فائرنگ کا بھرپور جواب دیا جس کے بعد فائرنگ کا سلسلہ روک گیا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ہمارا پارٹ ٹائم لیڈر

اتنی ناکارہ لیڈرشپ کی مثال مشکل سے ملیگی جس میں کسی دوراندیشی کی کوئی جھلک نہ ہو-

بجٹ اور صحت کا شعبہ

ایسا لگتا ہے کہ صحت کے بجٹ کی بڑھتی ہوئی ضروریات کیلئے عطیات دینے والے ملکوں کے پیسے پر زیادہ انحصار کیا جاتا ہے

بلاگ

پکوان کہانی: موسم گرما کی سوغات 'آم

پرانے وقتوں کے لوگوں کی دلچسپ تصور اور حکمت کی بدولت، پھلوں کا بادشاہ عام انسان کی غذا بن گیا۔

پاکستان میں اسٹارٹ اپس اب تک ناکام کیوں؟

آجکل یہ فیشن سا بن گیا ہے کہ ہر کوئی یہی کہتا نظر آ رہا ہے کہ اس کے پاس 'اسٹارٹ اپ' ہے-

ساغر صدیقی : ایک دل شکستہ شاعر

وہ خوبصورت نظمیں لکھتے، پھر بلند آواز میں خالی نگاہوں سے پڑھتے، پھر ان کاغذات کو پھاڑ دیتے جن پر وہ نظمیں لکھی ہوتیں

پکوان کہانی: کابلی پلاؤ - شمال کی شان

گوشت میں پکے چاول اس خطے کے جنگجوؤں کی ذہنی مطابقت اور جسمانی ساخت کے لیے موزوں تھے۔