25 جولائ, 2014 | 26 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

میانمار: تازہ نسلی فسادات میں 100 سے زائد افراد ہلاک

میانمار میں بدھ مت راکھنی اور روہنگیا مسلمانوں کے درمیان نسلی فسادات میں ایک سو سے زائد افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں ۔ فائل تصویر رائٹرز

ستوے: میانمار کی مغربی ریاست راکھین کے ایک حکومتی ترجمان نے کہا ہے کہ حالیہ تشدد کی لہر میں ایک سو سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

راکھین کے ریاستی ترجمان ون میائنگ نے جمعہ کو بتایا کہ بدھ مت کے پیروکار اور مسلمانوں کی روہنگیا برادری کے درمیان اتوار کو شروع ہونے والے فسادات میں ۔ لڑائی میں بہتر افراد زخمی بھی ہوئے جن میں دس بچے شامل ہیں۔

ان تازہ حملوں کے بعد جب میانمار کی مرکزی اسلامی تنظیم نے جمعہ سے شروع ہونے والی عیدالاضحیٰ کی چار روزہ تقریبات کو منسوخ کرنے کا اعلان کیا تھا، جس پر بین الاقوامی برادری نے اپنے ردِ عمل کا اظہار کیا تھا۔

امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کی ترجمان وکٹوریہ نولینڈ نے جمعرات کو اپنے ردِ عمل میں کہا کہ امریکہ تمام فریقین سے فوری طور پر ہر قسم کے حملے بند کرنے کی درخواست کرتا ہے جبکہ اقوامِ متحدہ نے تشدد پر اپنی تشویش کا اظہار کیا ہے۔

میانمار کی حکومت کی جانب سے آٹھ لاکھ روہنگیا مسلمانوں کو بنگلہ دیشی تارکین قرار دیا جاتا ہےاور عام برمی باشندے بھی انہیں بنگالی کے نام سے پکارتے ہیں۔

اس حصے سے مزید

اسرائیلی فوج کی اسکول پر بمباری، 15 افراد ہلاک

جمعرات کو اقوام متحدہ کے اسکول پر اسرائیلی بمباری میں بچوں سمیت 15 ہلاک، 17 روزہ لڑائی میں مرنے کی کل تعداد 747 ہو گئی۔

عراق:کرد سیاسی رہنما فواد المعصوم صدر منتخب

جنرل سیکریٹری اقوام متحدہ نےعراق کادورہ کیا اوراہم سیاسی رہنمائوں سےملاقات کی جبکہ تازہ حملوں میں 73افراد ہلاک ہوئے

الجزائر کا مسافر طیارہ تباہ، مسافروں سمیت 116 ہلاک

برکینا فاسو سے الجائر جانے والا مسافر طیارہ گر کر تباہ، طیارے میں سوار مسافروں اور عملے سمیت 116 افراد ہلاک ہو گئے


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

بلاگ

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

شکایتوں کا بن جو میرا دیس ہے

شکایتی ٹٹو زنده قوم کی نشانی ہوتے ہیں۔ مستقل شکایت کرتے رہنا اب ہماری پہچان بن چکا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-