02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

پاکستان ہندوستان کیساتھ دوستانہ تعلقات کا خواہاں ہے: صدر زرداری

صدر آصف علی زرداری اور بھارتی ریاست بہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار کے درمیان ملاقات کا ایک منظر۔ – اے پی پی فوٹو

اسلام آباد: صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ پاکستان ہندوستان کے ساتھ دوستانہ اور تعاون پر مبنی تعلقات کا خواہش مند ہے اور دونوں ممالک کے درمیان تعاون بڑھانے کے شاندار مواقع موجود ہیں۔

منگل کی شام ایوان صدر میں ہندوستانی ریاست بہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار اور ان کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے صدر نے تعلیم ‘ صحت اور کمیونٹی ڈویلپمنٹ کے شعبوں میں تعاون تلاش کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

صدر نے دونوں ممالک کے درمیان جاری مذاکراتی عمل پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی تمام مرکزی سیاسی جماعتوں میں ہندوستان کے ساتھ اچھے تعلقات کے لئے عمومی اتفاق رائے پایا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم خطے میں دیر پا امن کے لئے تمام تصفیہ طلب تنازعات کا پرامن حل چاہتے ہیں۔

صدر نے ہندوستانی وفد کو دیوالی کی مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان اس طرح کے پارلیمانی تبادلے انتہائی حوصلہ افزاء ہیں اور ان سے عوامی روابط مضبوط ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک اپنی صوبائی اسمبلیوں میں فرینڈ شپ گروپ تشکیل دینے پر غور کرسکتے ہیں۔

صدر نے بہار کے شاندار ثقافتی اور تہذیبی ورثے کو سراہتے ہوئے کہا کہ عوام کے درمیان زیادہ رابطوں اور وسیع تر تعاون سے دونوں ممالک کو فائدہ پہنچے گا۔

انہوں نے بہار کے ترقیاتی ماڈل کو سراہا جس میں سماجی شعبے خصوصاً تعلیم ‘صحت اور کمیونٹی ڈویلپمنٹ پر زور دیا گیا ہے۔اس موقع پر صدر نے بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کا ذکر کیا جس کی بدولت ملک بھر میں لاکھوں غریب لوگوں کو فائدہ پہنچ رہا ہے۔ انہوں نے پروگرام کے مختلف حصوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو غربت اور بے روزگاری کے خاتمے میں اپنے تجربے کے تبادلے پر مسرت ہوگی۔

نتیش کمار نے صدر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کے عوام بھی پاکستان کے ساتھ اچھے اور دوستانہ تعلقات خواہش مند ہیں۔

ملاقات کے دوران ہندوستانی وفد کے ارکان قائم مقام ہائی کمشنر گوپال بگلے ‘ بہار کی وزیر انڈسٹری رینو کماری ‘ وزیر ثقافت سکھادا پانڈے ‘ ڈپٹی چیئرمین بہار قانون ساز کونسل سلیم پرویز ‘ بہار کے اقلیتی کمیشن کے چیئرمین نوشاد احمد ‘ رکن راجیہ سبھا این کے سنگھ‘ چیف سیکرٹری بہار اشوک کمار سنہا کے علاوہ وزیر خارجہ حنا ربانی کھر ‘ بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی چیئرپرسن فرزانہ راجہ ‘ قومی ہم آہنگی کے وزیر ڈاکٹر پال بھٹی ‘ رکن قومی اسمبلی اسماء ارباب عالمگیر ‘ رکن صوبائی اسمبلی انور سیف اللہ خان اور دیگر اعلیٰ حکام بھی موجود تھے۔

بعد میں صدر نے نتیش کمار اور ان کے وفد کے اعزاز میں عشائیہ بھی دیا ۔

اس حصے سے مزید

'سفارت کار نقل و حرکت میں احتیاط برتیں'

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق احتیاط کی ہدایات دی گئیں تاہم سفارتخانوں کی بندش کی کوئی ہدایت جاری یا موصول نہیں ہوئی ہے۔

وزیراعظم نیٹو سمٹ میں شرکت نہیں کریں گے

سیاسی بحران کے باعث وزیراعظم کا دورہ منسوخ کرکے جونیئر سفارتی عہدیدار کو پاکستان کی نمائندگی کے لیے بھیجا جائے گا۔

وزیراعظم کی نااہلی کیلئے دائر درخواست ناقابل سماعت قرار

دوسری جانب رکن قومی اسمبلی جمشید دستی کی نااہلی کے لیے دائر درخواست لاہور ہائیکورٹ میں سماعت کے لیےمنظور کرلی گئی ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماڈل ٹاؤن کیس: کچھ حماقتیں

حکمرانوں کے منع کرنے پر پولیس کی جانب سے مقتولین کی ایف آئی آر درج کرنے میں تاخیر کی وجہ سے معاملہ مزید خراب ہوا۔

بیوروکریٹس کی یونین

ذاتی مفادات کے لیے چوری چھپے سیاسی ہونے سے زیادہ بہتر ہے کہ ریاست کے وسیع تر مفاد کے لیے کھلے عام سیاسی ہوا جائے۔

بلاگ

ڈرامہ ریویو: 'لا'...الجھتے رشتوں کی کہانی

ڈرامہ پرفیکٹ نہیں بھی تھا تو بھی یہ ان ڈراموں میں سے ایک ضرور تھا جسے دیکھ کر بیزاری کا احساس نہیں ہوتا۔

مووی ریویو : 'راجہ نٹور لال' سٹیریو ٹائپنگ کا شکار ہوگئی

یہ فلم نہ تو مزاح پر پوری اترتی ہے اور نہ ہی اس میں اتنا تھرلر ہے جو اسے ذہن میں نقش کر دے۔

سستا خون: براۓ انقلاب

"انقلاب" سیاست چمکانے کے لیے ایک خوشنما لفظ بن چکا ہے، اور اسے مزید چمکانے کے لیے کارکنوں کا سستا خون بھی دستیاب ہے۔

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔