19 اپريل, 2014 | 18 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

سپریم کورٹ نے وزیراعظم کے خلاف کیس نمٹا دیا

سپریم کورٹ،۔ فائل تصویر اے ایف پی

اسلام آباد: سپریم کورٹ میں این آر او عمل درآمد کیس کی سماعت ہوئی۔

سماعت کے دوران وفاقی وزیر قانون فاروق ایچ نائک کا کہنا تھا کہ اکتوبرکے حکم کے دونوں حصوں کی تعمیل کردی ہے۔

جسٹس انور ظہیرجمالی کی سربراہی میں کام کرنے والے پانچ رکنی لارجر بینچ نے کیس ختم کرتے ہوئے اپنے آرڈر میں کہا  کہ عدالت کے حکم پر عمل ہوچکا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ خط سفارتی ذرائع سے بھجوایا گیا ہے۔

فاروق نائک کا کہنا تھا کہ نومبرکو خط جنیوا کے اٹارنی جنرل کو موصول ہوگیا ہے اور وزیراعظم کو سمری اور اس کی منظوری کی نقل بھی جمع کرادی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کے خلاف توہین عدالت کا کیس ختم کیا جائے۔

دریں اثناء سپریم کورٹ نے وزیراعظم کے خلاف توہین عدالت کا کیس نمٹا دیا اور وزیراعظم کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ختم ہوگئی۔

بعد میں عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر قانون نے کہا کہ انصاف اور جمہوریت کی فتح ہوئی ہے۔

فاروق نائیک کا کہنا تھا کہ حکومت نے عدالت کے ہر حکم کی تعمیل کی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ خط لکھ دیا ہے اور اب معاملہ اٹارنی جنرل جنیوا کے ہاتھ میں ہے۔

وزیرقانون کا کہنا تھا کہ خط مجبوری میں نہیں بلکہ سپریم کورٹ کے حکم کے مطابق لکھا ہے۔ ان کے مطابق سوئزرلینڈ میں کوئی کرمنل کیس زیر سماعت نہیں ہے۔

اس حصے سے مزید

سپریم کورٹ نے نیب چیئرمین تقرری کو قانونی قرار دیدیا

دوسری جانب بیرسٹر اعتزاز احسن نے اپنے دلائل میں کہا کہ حکومت اور اپوزیشن دونوں ہی نیب چیئرمین کی تقرری پر متفق ہیں۔

تحفظ پاکستان آرڈیننس سینیٹ میں پیش، اپوزیشن کا احتجاج

اپوزیشن کے شدید احتجاج کے باوجود وفاقی حکومت نے تحفظ پاکستان بل 2014 کو سینیٹ میں پیش کر دیا ہے۔

پروسیکیوٹر کی تقرری سے متعلق مشرف کی درخواست مسترد

خصوصی عدالت نے اپنے فیصلے میں درخواست کو ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے مسترد کیا۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (1)

نون میم
14 نومبر, 2012 06:24
پاکستان عوام یہ جاننے کا حق رکھتی ہے کہ اس نوراکشتی میں ملک کو جو مالی اور نفسیاتی نقصان ہوا اسکا ذمہ دارکون ہے اور اس نقصان کا ازالہ کون کرے گے. دونمبری ساستدان اور سیاسدانوں سے دو قدم آگے منصفوں نے اپنی انا کی تسکین کی خاطر اس ملک کو یرغمال بنایا ہوا ہے، اور ان کو پوچھنے والا، یا ان کا احتساب کرنے والا کوئی نہیں ہے.
مقبول ترین
بلاگ

ریویو: بھوت ناتھ - ریٹرنز

مرکزی کرداروں سے لیکر سپورٹنگ ایکٹرز سب اپنی جگہ کمال کے رہے اور جس فلم میں بگ بی ہوں اس میں چار چاند تو لگ ہی جاتے ہیں۔

میانداد کا لازوال چھکا

جب بھی کوئی بیٹسمین مقابلے کی آخری گیند پر اپنی ٹیم کو چھکے کے ذریعے جتواتا ہے تو سب کو شارجہ ہی یاد آتا ہے۔

جمہوریت، سیکولر ازم اور مذہبی سیاسی جماعتیں

مذہب کے نام پر کوئی متفقہ سیاسی نظام بن ہی نہیں سکتا کیونکہ مذاہب کے درجنوں دھڑے کسی ایک ایشو پر متفق نہیں ہو سکتے۔

یکسانیت اور رنگا رنگی

یکسانیت جانی پہچانی بلکہ اطمینان بخش بھی ہوسکتی ہے، لیکن اس کا مطلب ہے چیلنج سے بچنا، جس کے بغیر کامیابی ممکن نہیں۔