01 اگست, 2014 | 4 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

سی این جی قیمتوں میں اضافے کی درخواست مسترد

سی این جی اسٹیشن۔ فائل فوٹو آن لائن
سی این جی اسٹیشن۔ فائل فوٹو آن لائن

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے سی این جی مالکان کی جانب سے قیمتوں میں اضافے کی درخواست مسترد کردی۔

اس کے علاوہ عدالت نے سی این جی سٹیشنز کے اکاؤنٹس کی تفصیلات بھی طلب کرلیں ہیں۔

جسٹس جواد ایس خواجہ اور جسٹس خلجی عارف حسین پر مشتمل عدالت عظمٰی کے دو رکنی بینچ نے سی این جی قیمتوں سے متعلق کیس  کی سماعت کی۔

اوگرا کے وکیل سلمان اکرم راجہ نے آج دلائل دیے۔

دوران سماعت، جسٹس جواد ایس خواجہ نے ان سے استفسار کیا کہ عدالت کو تین ہزار، تین سو پچانوے سی این جی اسٹیشنز کا ٹیرف پیش کیا جائے کیونکہ لائسنس کے بغیر سی این جی فروخت نہیں کی جائے گی۔

سپریم کورٹ میں جمع کرائے گئے سی این جی نرخوں کے نئے فارمولے کو بھی عدالت نے مسترد کردیا۔

سماعت کے دوران اوگرا نے دیگر سفارشات اور وزارت پیٹرولیم کے کردار سے متعلق بھی عدالت کو آگاہ کیا۔

دریں اثناء عدالت نے کیس کی سماعت کل تک ملتوی کردی۔

اس حصے سے مزید

اسلام آباد آج سے فوج کے حوالے

پاک فوج اسلام آباد کی سیکیورٹی کے لیے تین مہینے تک سول انتظامیہ کی مدد کرے گی۔

'دو سو ارب ڈالر واپسی کیلئے سوئس حکومت سے مذاکرات'

مذاکرات کے کئی دور ہوں گے جن میں تین سے چار سال تک کا عرصہ بھی لگ سکتا ہے، وفاقی وزیر خزانہ۔

ایل او سی: گلتری سیکٹر پر ہندوستان کی بلااشتعال فائرنگ

پاکستانی سیکیورٹی فورسز نے ہندوستانی فائرنگ کا بھرپور جواب دیا جس کے بعد فائرنگ کا سلسلہ روک گیا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ہمارا پارٹ ٹائم لیڈر

اتنی ناکارہ لیڈرشپ کی مثال مشکل سے ملیگی جس میں کسی دوراندیشی کی کوئی جھلک نہ ہو-

بجٹ اور صحت کا شعبہ

ایسا لگتا ہے کہ صحت کے بجٹ کی بڑھتی ہوئی ضروریات کیلئے عطیات دینے والے ملکوں کے پیسے پر زیادہ انحصار کیا جاتا ہے

بلاگ

پکوان کہانی: موسم گرما کی سوغات 'آم

پرانے وقتوں کے لوگوں کی دلچسپ تصور اور حکمت کی بدولت، پھلوں کا بادشاہ عام انسان کی غذا بن گیا۔

پاکستان میں اسٹارٹ اپس اب تک ناکام کیوں؟

آجکل یہ فیشن سا بن گیا ہے کہ ہر کوئی یہی کہتا نظر آ رہا ہے کہ اس کے پاس 'اسٹارٹ اپ' ہے-

ساغر صدیقی : ایک دل شکستہ شاعر

وہ خوبصورت نظمیں لکھتے، پھر بلند آواز میں خالی نگاہوں سے پڑھتے، پھر ان کاغذات کو پھاڑ دیتے جن پر وہ نظمیں لکھی ہوتیں

پکوان کہانی: کابلی پلاؤ - شمال کی شان

گوشت میں پکے چاول اس خطے کے جنگجوؤں کی ذہنی مطابقت اور جسمانی ساخت کے لیے موزوں تھے۔