22 ستمبر, 2014 | 26 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

کالا باغ ڈیم کیخلاف قرارداد سندھ اسمبلی میں منظور

سندھ اسمبلی۔ فائل فوٹو
سندھ اسمبلی۔ فائل فوٹو

کراچی: سندھ اسمبلی نے کالاباغ ڈیم کی تعمیر کے خلاف مذمتی قرارداد منظور کرلی ہے۔

 جمعے کو اجلاس اسپیکر نثار کھوڑو کی صدارت میں مقررہ وقت سے ڈیڑھ گھنٹہ تاخیر سے شروع ہوا۔

 ارکان نے ڈیم کے حوالے سے اپنی ناراضگی کا اظہار کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ کالاباغ ڈیم کا معاملہ قومی یکجہتی کو نقصان پہنچانے کی سازش ہے۔

 ارکان اسمبلی کا کہنا تھا کہ کالا باغ ڈیم سے سندھ کی زمینیں بنجر اور شہر ویران ہوجائیں گے۔

 اس دوران وقفہ سوالات بھی قرارداد پیش کر کے معطل کردیا گیا۔ سندھ کے وزیر خزانہ مراد علی شاہ نے کہا کہ جب تک پیپلزپارٹی کا ایک بھی رکن زندہ ہے کالا باغ ڈیم نہیں بن سکتا۔

 سندھ کے وزیر اطلاعات شرجیل میمن کا کہنا تھا کہ 'اگر کسی میں دم ہے تو کالاباغ ڈیم بناکر دکھائے'

 مذمتی قراردار کی منظوری کے بعد اجلاس غیرمعینہ مدت تک کے لیے ملتوی کردیا گیا۔

 واضح رہے کہ گزشتہ روز کالاباغ ڈیم کے خلاف سندھ اسمبلی میں قرارداد پیش کی گئی تھی۔

 اس موقع پر ڈپٹی اسپیکرسندھ اسمبلی کا کہنا تھا کہ ڈیم کی حمایت کرنے والے ڈیم کے مخالف تین صوبوں کے نمائندوں کو جاہل سمجھتے ہیں

 دوسری جانب شرجیل میمن کا کہنا تھا کہ کالا باغ ڈیم کے حوالے سے فیصلہ لاہور ہائی کورٹ نے اپنی ڈومین سے ہٹ کر دیا ہے۔

اس حصے سے مزید

الطاف حسین کی سندھ میں چار صوبوں کی تجویز

انہوں نے سوال کیا کہ اگر سندھ ایک ہے تو چالیس اور ساٹھ فیصد کا کوٹہ کیوں مقرر کیا گیا ہے۔

کراچی: فائرنگ کے واقعات میں 6 افراد ہلاک

لانڈھی میں ہوٹل پرناشتہ کرنےوالے 3نوجوانوں کونشانہ بنایاگیا،پراناحاجی کیمپ،مومن آباداورلیاری میں ایک ایک شخص ہلاک ہوا

کراچی میں خودکش بمبار داخل

حساس ادارے کا سندھ حکومت کو خط، دہشت گرد کراچی میں داخل ہو گئے اور شہر کے کسی بھی مقام کو نشانہ بنا سکتے ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

پاکستان کی "مڈل کلاس" بغاوت

پاکستان کے مڈل کلاس لوگ ہی جمہوریت کے سب سے بڑے مخالف ہیں اور کچھ کیسز میں تو جمہوریت کی مخالفت بغاوت کی حد تک شدید ہے۔

!میرے پیارے اسلام آباد

میں آپ سے معافی چاہتا ہوں کہ میں نے آپ کی جانب دو دھرنے بھیجے ہیں، جنہوں نے آپ کا امن و سکون تباہ کر دیا ہے۔

بلاگ

بلوچ نیشنلزم میں زبان کا کردار

لسانی معاملات پر غیر دانشمندانہ طریقہ سے اصرار مزید ناراضگی اور پیچیدگیوں کا سبب بن سکتا ہے، جو شاید مناسب قدم نہیں۔

خواندگی کا عالمی دن اور پاکستان

تعلیم کو سرمایہ کاروں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے جن کے لیے تعلیم ایک جنس ہے جسے بیچ کر منافع کمایا جاسکتا ہے-

ڈرامہ ریویو: چپ رہو - حساس ترین موضوع پر بہترین پیشکش

زیادتی جیسے واقعات ہر وقت خبروں میں رہتے ہیں اس حوالے سے یہ ڈرامہ شعور اجاگر کرنے میں اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔

میں باغی ہوں

اس ملک میں کہیں قانون کی حکمرانی نہیں، ہر جگہ لوٹ مار مچی ہے- کسی کو قانون کا پاس نہیں- تبدیلی آئی تو سب کا احتساب ہوگا-