20 ستمبر, 2014 | 24 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

انٹیلیجنس چیف حملہ: افغانستان، پاکستان امن کے خواہاں

سہ فریقی مذاکرات کے موقع پر رہنماوں کا گروپ فوٹو۔ – اے پی

انقرہ: ترکی کے صدر کا کہنا ہے کہ بدھ کو ہونے والی میٹنگ کے بعد پاکستانی اور افغانی رہنماء افغانی انٹیلیجنس چیف پر حملہ کے باوجود امن عمل میں پیش رفت کے خواہاں ہیں۔

صدر عبداللہ گل نے اس حملہ کو، جسکے بارے میں افغانستان کا موقف ہے کہ اس کی منصوبہ بندی پاکستان میں کی گئی تھی، دونوں ملکوں کے درمیان جاری مذاکرات کو ناکام بنانے کی ایک سازش قرار دیا۔

ایک ایم ملاقات کے اختتام پر، جسکا مقصد کابل اور اسلام آباد حکومتوں کے درمیان تعاون بڑھانا اور تناو کم کرنا تھا، صدر گل نے کہا کہ دونوں فریقین ایک دوسرے کیساتھ ملکر کام کرنے کیلئے رضامند ہیں اور دونوں نے ایک دوسرے پر اعتماد کی تجدید بھی کی ہے۔

یاد رہے افغان انٹیلجنس چیف اسد اللہ خالد پچھلے ہفتے ایک خودکش بمبار کے حملے میں، جس نے خود کو ایک طالبان امن ایلچی ظاہر کیا تھا، شدید زخمی ہو گئے تھے۔

صدر حامد کرزئی نے اس حملے کے بعد براہ راست اسلام آباد پر تو الزام نہیں لگایا البتہ حملہ کی منصوبہ بندی کوئٹہ میں کئے جانے کا عندیہ دیا تھا۔ حملہ کی ذمہ داری بعد میں افغان طالبان نے قبول کر لی تھی۔

انقرہ ملاقات کے بعد ایک مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صدر کرزئی نے کہا کہ اس معاملہ پہ دونوں رہنماوں کے درمیان کافی سیر حاصل گفتگو ہوئی ہے البتہ انہوں نے اس کی تفصیلات میں جانے سے گریز کیا۔

افغان حکام نے بتایا تھا کہ صدر کرزئی ملاقات کے دوران اپنے پاکستانی ہم منصب کو حملہ سے متعلق شواہد مہیا کرینگے۔

اس موقع پر افغان صدر نے امید ظاہر کی کہ جلد ہی دونوں ممالک دہشت گردی اور شدت پسندی سے نجات حاصل کرنے میں کامیاب ہو جائینگے۔

دوسری جانب صدر آصف علی زرداری نے اپنے خطاب میں اسد اللہ خالد پہ حملہ سے اپنے ملک کو دور رکھا۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گرد نہیں چاھتے کہ دونوں ممالک کی حکومتیں مل جل کر کام کریں اور قوم کو امن کیجانب لے جائیں۔ "خوشحال افغانستان پاکستان کے مفاد میں ہے" اور انہوں نے مزید کہا کہ "یہ میرے فائدے میں ہے کہ افغانستان میں امن واپس قائم ہو جائے۔"

پریس کانفرنس کے اختتام پر ایک مشترکہ بیان بھی جاری کیا گیا جس میں کہا گیا کی ایک جوائنٹ ورکنگ گروپ اس حملہ کی تحقیقات کریگا۔

اس حصے سے مزید

افغانستان: بغلان میں مسجد کے باہر دھماکا، 6 ہلاک

صوبائی پولیس چیف کے ترجمان کا کہنا ہے کہ دھماکا مسجد کے باہر ہوا تاہم یہ واضح نہیں ہے کہ اس کے پیچھے کون ملوث ہے۔

افغانستان: طالبان کے حملے میں 6 پولیس اہلکار ہلاک

صوبائی پولیس چیف ترجمان کے مطابق پولیس کی جوابی کارروائی سے آٹھ طالبان بھی مارے گئے ہیں۔

کابل: امریکی سفارتخانے کے قریب خودکش حملہ،3 ہلاک

حکام کے مطابق خودکش حملہ آور بارود سے بھری ایک گاڑی میں سوار تھا، جس نے غیرملکی فوج کے ایک قافلے کو نشانہ بنایا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

اب عمران خان کیا کریں گے؟

عمران خان انتخابی اصلاحات اور تحقیقات کی پیشکش کو تسلیم کر کے جیت سکتے تھے لیکن وہ مزید چیزیں داؤ پر لگائے جارہے ہیں۔

رودرہیم کا سبق

بچوں پر ہونیوالے جنسی تشدد پر ہماری شرمندگی کی سمت غلط ہے۔ شرم کی بات تو یہ ہے کہ ہم اس کو روکنے کی کوشش نہ کریں-

بلاگ

ڈرامہ ریویو: چپ رہو - حساس ترین موضوع پر بہترین پیشکش

زیادتی جیسے واقعات ہر وقت خبروں میں رہتے ہیں اس حوالے سے یہ ڈرامہ شعور اجاگر کرنے میں اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔

میں باغی ہوں

اس ملک میں کہیں قانون کی حکمرانی نہیں، ہر جگہ لوٹ مار مچی ہے- کسی کو قانون کا پاس نہیں- تبدیلی آئی تو سب کا احتساب ہوگا-

دھرنے، عوام اور امید کی ہار

یہ میچ بھلے ہی جتنا بھی عرصہ جاری رہے، پر اس میں کھیلنے والے اور دیکھنے والے سب ہی ہارنے والے ہیں۔

مووی ریویو: دختر -- دلوں کو چُھو لینے والی کہانی

اپنی تمام تر خوبیوں اور کچھ خامیوں کے ساتھ اس فلم کو پاکستانی نکتہ نگاہ سے پیش کیا گیا ہے۔