24 جولائ, 2014 | 25 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

انٹیلیجنس چیف حملہ: افغانستان، پاکستان امن کے خواہاں

سہ فریقی مذاکرات کے موقع پر رہنماوں کا گروپ فوٹو۔ – اے پی

انقرہ: ترکی کے صدر کا کہنا ہے کہ بدھ کو ہونے والی میٹنگ کے بعد پاکستانی اور افغانی رہنماء افغانی انٹیلیجنس چیف پر حملہ کے باوجود امن عمل میں پیش رفت کے خواہاں ہیں۔

صدر عبداللہ گل نے اس حملہ کو، جسکے بارے میں افغانستان کا موقف ہے کہ اس کی منصوبہ بندی پاکستان میں کی گئی تھی، دونوں ملکوں کے درمیان جاری مذاکرات کو ناکام بنانے کی ایک سازش قرار دیا۔

ایک ایم ملاقات کے اختتام پر، جسکا مقصد کابل اور اسلام آباد حکومتوں کے درمیان تعاون بڑھانا اور تناو کم کرنا تھا، صدر گل نے کہا کہ دونوں فریقین ایک دوسرے کیساتھ ملکر کام کرنے کیلئے رضامند ہیں اور دونوں نے ایک دوسرے پر اعتماد کی تجدید بھی کی ہے۔

یاد رہے افغان انٹیلجنس چیف اسد اللہ خالد پچھلے ہفتے ایک خودکش بمبار کے حملے میں، جس نے خود کو ایک طالبان امن ایلچی ظاہر کیا تھا، شدید زخمی ہو گئے تھے۔

صدر حامد کرزئی نے اس حملے کے بعد براہ راست اسلام آباد پر تو الزام نہیں لگایا البتہ حملہ کی منصوبہ بندی کوئٹہ میں کئے جانے کا عندیہ دیا تھا۔ حملہ کی ذمہ داری بعد میں افغان طالبان نے قبول کر لی تھی۔

انقرہ ملاقات کے بعد ایک مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صدر کرزئی نے کہا کہ اس معاملہ پہ دونوں رہنماوں کے درمیان کافی سیر حاصل گفتگو ہوئی ہے البتہ انہوں نے اس کی تفصیلات میں جانے سے گریز کیا۔

افغان حکام نے بتایا تھا کہ صدر کرزئی ملاقات کے دوران اپنے پاکستانی ہم منصب کو حملہ سے متعلق شواہد مہیا کرینگے۔

اس موقع پر افغان صدر نے امید ظاہر کی کہ جلد ہی دونوں ممالک دہشت گردی اور شدت پسندی سے نجات حاصل کرنے میں کامیاب ہو جائینگے۔

دوسری جانب صدر آصف علی زرداری نے اپنے خطاب میں اسد اللہ خالد پہ حملہ سے اپنے ملک کو دور رکھا۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گرد نہیں چاھتے کہ دونوں ممالک کی حکومتیں مل جل کر کام کریں اور قوم کو امن کیجانب لے جائیں۔ "خوشحال افغانستان پاکستان کے مفاد میں ہے" اور انہوں نے مزید کہا کہ "یہ میرے فائدے میں ہے کہ افغانستان میں امن واپس قائم ہو جائے۔"

پریس کانفرنس کے اختتام پر ایک مشترکہ بیان بھی جاری کیا گیا جس میں کہا گیا کی ایک جوائنٹ ورکنگ گروپ اس حملہ کی تحقیقات کریگا۔

اس حصے سے مزید

کابل: خود کش حملے میں تین غیر ملکی مشیر ہلاک

ابتدائی رپورٹس میں غیر ملکی مشیروں کی شہریت کے بارے تفصیلات موصول نہیں ہوسکی ہیں۔

'پاکستان، افغانستان ناکام ہوئے تو القاعدہ واپس آ جائے گی'

افغانستان میں کامیابی کا دارومدار پاکستان کی اپنی سرحدوں میں شدت پسندوں کے خلاف کارروائی پر بھی ہے، امریکی جنرل۔

کابل ایئرپورٹ پر طالبان کا حملہ، پروازیں منسوخ

ایک افغان جنرل افضل امان کا کہنا ہے کہ مسلح افراد نے کابل میں محوِ پرواز آئی ایس اے ایف کے جیٹ طیاروں پر بھی فائرنگ کی۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

بلاگ

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

شکایتوں کا بن جو میرا دیس ہے

شکایتی ٹٹو زنده قوم کی نشانی ہوتے ہیں۔ مستقل شکایت کرتے رہنا اب ہماری پہچان بن چکا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-