29 اگست, 2014 | 2 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

الطاف حسین کو توہین عدالت کا نوٹس جاری

قائد متحدہ قومی موومنٹ الطاف حسین۔ فائل فوٹو۔۔۔
قائد متحدہ قومی موومنٹ الطاف حسین۔ فائل فوٹو۔۔۔

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کے قائد الطاف حسین کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا ہے۔

عدالت کا کہنا ہے کہ الطاف حسین کا کراچی بدامنی کیس کی سماعت کرنے والے ججوں سے متعلق خطاب توہین اور دھمکی آمیز تھا۔

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں عدالت عظمٰی کے تین رکنی بینچ نے کراچی بدامنی کیس کی سماعت کی۔

سماعت کے آغاز پر عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے سینیٹر حاجی عدیل کے وکیل نے کہا کہ انہوں نے اس مقدمے میں ایک آئینی درخواست دائر کی ہے۔

اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ انہیں رجسٹرار آفس سے ایک نوٹ بھجوایا گیا ہے جس میں الطاف حسین کی تقریر کے اقتباسات دیے گئے ہیں کہ جج صاحبان معافی مانگیں جس کا انہیں نوٹس لینا ہے۔

جسٹس افتخار نے کہا کہ رجسٹرار آفس نے بتایا ہے کہ ایم کیو ایم کے سربراہ، جو ایک سیاسی لیڈر ہیں، نے ایک مجمعے سے خطاب کرتے ہوئے ججوں کو تنقید کا نشانہ بنایا اور الزامات لگائے اسلیے پیمرا کواحکامات دیے گئے ہیں کہ وہ ان کی تقریر کا متن پیش کرے۔

ان کا کہنا تھا کہ کراچی میں بدامنی کیس کی سماعت کرنے والا بینچ اس فیصلے کے عملدرآمد کی سماعت کر رہا تھا جسے کبھی چیلنج نہیں کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ آخری تاریخ سماعت پر ایک عبوری حکم دیا گیا تھا جس میں کراچی میں نئی حلقہ بندیوں کے حوالے سے بات کی گئی تھی۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ احکامات کا پس منظر سوائے عدالت کے احکمات پر عملدرآمد کے اور کچھ نہیں تھا تاہم ایم کیو ایم کے رہنما نے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے توہین آمیز کلمات ادا کیے۔

جسٹس افتخار نے کہا انہوں نے تقریر کا متن دیکھا ہے اور انکی رائے ہے کہ جو زبان استعمال کی گئی وہ توہین آمیز اور دھمکانے والی تھی اور عدالت کی راہ میں رکاوٹ ڈالنے کے مترادف تھی۔

اس پر عدالت نے ایم کیو ایم کے قائد کو آئین کے آرٹیکل دو سو چار اور توہین عدالت کے آڑڈیننس دو سو تین کی دفعہ تین کے تحت توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا ہے۔

  سپریم کورٹ نے ایم کیو ایم کے پارلیمانی لیڈر فاروق ستار کو بھی وضاحت کے لیے نوٹس جاری کیا ہے۔

ساتھ ہی عدالت نے چیف سیکرٹری، آئی جی، ہوم سیکرٹری سندھ سے بھی رپورٹ طلب کرلی ہے۔

اس کے علاوہ وزارت خارجہ کو نوٹس کی تعمیل یقینی بنانے کا حکم بھی دیا گیا ہے۔

اس حصے سے مزید

الطاف حسین کا بھی ٹیکنو کریٹ حکومت بنانے کا مطالبہ

ایم کیوایم کےقائد نےمطالبہ کرتےہوئے کہاہےکہ آئینی طریقہ ہے تو ٹھیک ہے ورنہ غیرآئینی طریقہ بھی استعمال کیا جا سکتا ہے۔

ڈھائی لاکھ لاوارث قبریں

ایدھی فاؤنڈیشن کی جانب سے قائم کردہ مواچھ گوٹھ کراچی کے قبرستان قبروں کے کتبوں پر ناموں کے بجائے نمبر درج کیے جاتے ہیں۔

کراچی: پرتشدد واقعات میں سیاسی جماعت کے کارکن سمیت 4 ہلاک

شہر رینجرز اور پولیس کے مشترکہ آپریشن کے باوجود فرقہ وارانہ ٹارگٹ کلنگ کا سلسلہ بھی جاری ہے۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (1)

ehtesham
15 دسمبر, 2012 18:43
Why new constituencies only in Karachi.It is against MQM.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

اسلام آباد کا تماشا

عمران خان کو یہ تسلیم کرنا چاہیے کہ جوڈیشل کمیشن ایک کمزور وزیر اعظم کے اثر و رسوخ سے آزاد ہو کر تحقیقات کر سکے گا.

جمہوریت کے تسلسل کی ضرورت

حکومت نےکس قدر عجلت میں مذاکرات کا فیصلہ کیا، اس سے معاملات کے اوپر جی ایچ کیو کی گرفت کا اچھی طرح اندازہ ہوجاتا ہے۔

بلاگ

اجتماعی سیاسی قبر

فوج کو سیاسی معاملات میں شرکت کی دعوت دینا اس بات کا ثبوت ہے کہ سیاستدان سیاسی معاملات سے نمٹنے کی طاقت نہیں رکھتے۔

مووی ریویو: مردانی - پاورفل کہانی، بہترین پرفارمنس

بولی وڈ اداکار رانی مکھرجی اور طاہر بھاسن دونوں ہی اپنی بولڈ پرفارمنس کے لئے تعریف کے لائق ہیں۔

عظیم مقاصد، پر راستہ؟

اس طوفان کے نتیجے میں ان چاہی افرا تفری پھیل سکتی ہے، اسلیے اچھے مقاصد کے لیے ایسے راستے اختیار نہیں کیے جانے چاہییں۔

انقلاب معافی چاہتا ہے

ڈی چوک وہ سیاسی چراغ ہے جس کو اگر ضدی شہزادے کافی حد تک رگڑ دیں تو کچھ پتا نہیں اس میں سے انقلاب کا جن نکل ہی آئے۔