18 ستمبر, 2014 | 22 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

کراچی، سندھ کے دیگر بڑے شہروں میں رات گئے کشیدگی

کراچی پولیس۔ فائل تصویر
کراچی پولیس۔ فائل تصویر

کراچی: کراچی اور سندھ کے دیگر بڑے شہروں میں رات گئے اچانک کشیدگی پھیل گئی۔ مختلف علاقوں میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے دکانیں اور کاروباری مراکز بند کرادیئے۔

جبکہ مقامی انتظامیہ اور سیکیورٹی ادارے اس بارے میں خاموش رہے اور نہ ہی اس کی کوئی وجہ بیان کرسکے۔

اچانک فائرنگ سے لوگوں میں خوف و ہراس پھیل گیا۔

سندھ وزیر اعلی نے پولیس اور رینجرز کو حساس علاقوں میں گشت کرنے کے احکامات جاری کیے ہیں۔

علاوہ ازیں ایم کیو ایم کے ترجمان کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ ایم کیو ایم کا اس معاملے سے کچھ لینا دینا نہیں۔

فائرنگ اور دکانیں بند کرانے کا آغاز کراچی کے علاقے گلستان جوہر سے ہوا۔ اس کے بعد شہر کے دیگر علاقوں ناظم آباد ، گرومندر،اورنگی ٹاؤن،ملیر، جمشید روڈ، لانڈھی ، کورنگی میں بھی بازار ، پیٹرول پمپس ، سی این جی اسٹیشن اور دیگر دکانیں مکمل طور پر بند ہوگئیں۔

لطیف آباد ، پریٹ آباد، پھلیلی ، گاڑی کھاتہ میں بھی دکانیں بند کرادی گئیں۔۔میرپور خاص، سکھر ، نواب شاہ، کوٹری، ٹنڈو الہیار میں بھی فائرنگ کے بعد دکانیں بند ہوگئیں۔

اس حصے سے مزید

مقامی حکومت کےبغیرجمہوریت آمریت سےبدتر، الطاف حسین

اپنی61ویں سالگرہ کی تقریب سےویڈیولنک سےخطاب میں ان کاکہناتھاکہ دنیامیں کوئی پارلیمنٹ سڑکوں اورپلوں کی تعمیر نہیں کرتی۔

کراچی،پولیس کا آپریشن،7مبینہ دہشت گرد ہلاک

ایس ایس پی ملیرنےکہاہےکہ10دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع پر کارروائی کی,ہلاک ہونے والوں سے بھاری اسلحہ برآمدہواہے۔

کراچی میں خاتون کے ہاں 5 بچوں کی پیدائش

جڑواں بچوں میں ایک بیٹا اور چار بیٹیاں شامل تھیں، تاہم پیدائش کے فورا بعد ایک بچی انتقال کرگئی۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (2)

altaf ka baap
15 دسمبر, 2012 04:53
altaf tujhay ab zameen per panah nahen milay ge qatil
عثمان
15 دسمبر, 2012 06:46
اگرچہ خبر کا متن شہر بند کروانے والوں کی شناخت کے بارے میں خاموش ہے مگر اس کا یو آر ایل سب کچھ بتا رہا ہے.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔

کریچر - تھری ڈی: گوڈزیلا یا ڈیوی جونز کا کزن؟

یہ کہنا غلط نہ ہوگا بپاشا ہارر تھرلرز تک محدود ہوگئی ہیں جبکہ عمران عبّاس نے انکے گرد چکر کاٹنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔