19 ستمبر, 2014 | 23 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

مستقبل کی طرف دیکھنا ہوگا: رحمان ملک

رحمان ملک نیو دہلی میں ہندوستان ایئر فورس اسٹیشن پر پہنچنے کے بعد بات کرتے ہوئے۔ اے ایف پی فوٹو
رحمان ملک نیو دہلی میں ہندوستان ایئر فورس اسٹیشن پر پہنچنے کے بعد بات کرتے ہوئے۔ اے ایف پی فوٹو

نیو دہلی: پاکستان کے وزیر داخلہ رحمان ملک نے این ڈی ٹی وی کودیے جانے والے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ ان کے بیانات کو غلط سمجھا گیا جبکہ انہوں نے کبھی بھی نائن الیون اور ممبئی حملے سے  بابری مسجد کے انہدام کا مقابلہ نہیں کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ وہ چاہتے ہیں کہ ہندوستان کے لوگ یہ جان لیں کہ ان کے بیانات کو غلط سمجھا گیا۔

رحمان ملک کا کہنا تھا کہ جب انہوں نے بابری مسجد کی بات کی تو دو مذاہب کے بیچ میں امن کے حوالے سے بات کی اور پاکستان میں ہونے والی شیعہ ہلاکتوں کے بارے میں بھی وہ اسی پس منظر میں بات کرتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سرابھ کالیا کی موت کا سبب جاننے کیلئے تحقیقات کرانے کے لیے تیار ہیں اور یہ کہ ہندوستان نے پہلی دفعہ کل کالیا کا کیس باضابطہ طور پر اٹھایا تھا۔

حافظ سیعد کے حوالے سے رحمان ملک کا کہنا تھا کہ عدالت نے انہیں رہا کیا ہے لحاضہ عدالت کا احترام کرنا ان کا فرض ہے۔

ان کا اس بارے میں کہنا تھا کہ وہ حافظ سیعد کو کل ہی گرفتار کرنے کو تیار ہیں لیکن اگر ان کے خلاف کوئی ٹھوس ثبوت موجود ہوں جنہیں عدالت میں پیش کیا جاسکے۔

ان کا کہنا تھا کہ دونوں ملکوں کو ماضی کی تلخیاں بھلا کر مستقبل کی طرف دیکھنا ہوگا۔

اس حصے سے مزید

'ایمرجنسی کا ریکارڈ پرویز مشرف کے عملے نے غائب کردیا تھا'

غداری کے مقدمے کی سماعت کے دوران تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ خالد قریشی نے یہ بیان خصوصی عدالت کے سامنے دیا۔

جامعہ کراچی: شعبہ اسلامک اسٹڈیز کے سربراہ فائرنگ سے ہلاک

ڈاکٹر شکیل اوج کی گاڑی کو گلشن اقبال میں نامعلوم افراد نے نشانہ بنایا، جامعہ کراچی تین دن کے لیے بند رکھنے کا اعلان۔

گلو بٹ پر پولیس پر حملے کی فردِ جرم عائد

جبکہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کی ٹی وی فوٹیج میں اس کو ماڈل ٹاؤن میں پولیس کی موجودگی میں گاڑیوں کے شیشے توڑتے دکھایا گیا تھا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

شاہد آفریدی دوبارہ کپتان، ایک قدم آگے، دو قدم پیچھے

اس بات کی ضمانت کون دے گا کہ ماضی کی طرح وقار یونس اور شاہد آفریدی کے مفادات میں ٹکراؤ پیدا نہیں ہوگا۔

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔