29 اگست, 2014 | 2 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

مستقبل کی طرف دیکھنا ہوگا: رحمان ملک

رحمان ملک نیو دہلی میں ہندوستان ایئر فورس اسٹیشن پر پہنچنے کے بعد بات کرتے ہوئے۔ اے ایف پی فوٹو
رحمان ملک نیو دہلی میں ہندوستان ایئر فورس اسٹیشن پر پہنچنے کے بعد بات کرتے ہوئے۔ اے ایف پی فوٹو

نیو دہلی: پاکستان کے وزیر داخلہ رحمان ملک نے این ڈی ٹی وی کودیے جانے والے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ ان کے بیانات کو غلط سمجھا گیا جبکہ انہوں نے کبھی بھی نائن الیون اور ممبئی حملے سے  بابری مسجد کے انہدام کا مقابلہ نہیں کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ وہ چاہتے ہیں کہ ہندوستان کے لوگ یہ جان لیں کہ ان کے بیانات کو غلط سمجھا گیا۔

رحمان ملک کا کہنا تھا کہ جب انہوں نے بابری مسجد کی بات کی تو دو مذاہب کے بیچ میں امن کے حوالے سے بات کی اور پاکستان میں ہونے والی شیعہ ہلاکتوں کے بارے میں بھی وہ اسی پس منظر میں بات کرتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سرابھ کالیا کی موت کا سبب جاننے کیلئے تحقیقات کرانے کے لیے تیار ہیں اور یہ کہ ہندوستان نے پہلی دفعہ کل کالیا کا کیس باضابطہ طور پر اٹھایا تھا۔

حافظ سیعد کے حوالے سے رحمان ملک کا کہنا تھا کہ عدالت نے انہیں رہا کیا ہے لحاضہ عدالت کا احترام کرنا ان کا فرض ہے۔

ان کا اس بارے میں کہنا تھا کہ وہ حافظ سیعد کو کل ہی گرفتار کرنے کو تیار ہیں لیکن اگر ان کے خلاف کوئی ٹھوس ثبوت موجود ہوں جنہیں عدالت میں پیش کیا جاسکے۔

ان کا کہنا تھا کہ دونوں ملکوں کو ماضی کی تلخیاں بھلا کر مستقبل کی طرف دیکھنا ہوگا۔

اس حصے سے مزید

وزیر اعظم کی فوج سے کردار ادا کرنے کی درخواست

تین دن میں ہونےوالی دوسری ملاقات میں نوازشریف کی جانب سے گفتگو میں کہا گیا کہ فوج بحران حل کرنے کیلئے اپنا کردارادا کرے

آرمی چیف نے عدالتی کمیشن بنانے کی ضمانت دی ہے، عمران خان

جب تک وزیراعظم نواز شریف کا استعفیٰ نہیں آتا، دھرنا جاری رہےگا، سربراہ پاکستان تحریک انصاف۔

نوازشریف نے آرمی چیف کو ضامن مقرر کر دیا، طاہرالقادری

جنرل راحیل شریف نے عوامی تحریک اور حکومت کےدرمیان ثالث بننا منظورکرلیا ہے،مطالبات کی منظوری کیلئے 24 گھنٹےکاوقت مانگا ہے


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

متوازی سیاست

بعض لحاظ سے ان میں اور ان لوگوں میں کوئی بہت زیادہ فرق نہیں ہے جنھیِں وہ ہٹانا چاہتے ہیں-

انتخابی اصلاحات کی فوری ضرورت

پاکستان میں انتخابی عمل کوشفاف اور غیر متنازعہ بنانے کے لیے انتخابات کے آٹھ شعبوں میں اصلاحات کی ضرورت ہے۔

بلاگ

پاکستان کی نوجوان نسل اور غیرت بریگیڈ

"فحاشی" ایک دماغی بیماری ہے جس کا شکار ذہن عورت کو گھر کی دہلیز سے باہر دیکھ کر شدید 'صدمے' کا شکار ہو جاتا ہے۔

ڈی چوک، گدھا اور نا تجربہ کار حجام

آپ کے لیڈر رہیں یا چلے جائیں، یا رسی سے گدھا بندھا ہو یا نہیں، لیکن کسی نا تجربہ کار شخص کو اپنی حجامت مت بنانے دیجئے گا

دھرنے بمقابلہ جمہوریت

جمہوریت میں ہر بندے کی رائے برابر کی اہمیت رکھتی ہے۔ ممکن ہے کہ وہ سیاست دان بھی منتخب ہوجائیں، جو لیڈرشپ کے قابل نہیں۔

آزادی کے سائیڈ افیکٹس

اس قوم کا مزید آزادی کی بات کرنا بہت حیران کن ہے۔ یہ قوم تو آزادی کے سائیڈ افیکٹس کا شکار ہے۔