20 ستمبر, 2014 | 24 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

سی این جی قیمت کیس کا فیصلہ جاری

فائل فوٹو۔۔۔
فائل فوٹو۔۔۔

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے سی این جی کی قیمتوں سے متعلق کیس کا فیصلہ سنانا شروع کردیا ہے۔

سپریم کورٹ نے اوگرا کا قیمتوں کا فارمولہ کالعدم قرار دے دیا۔ عدالت نے اوگرا کو قیمتوں کا نیا فارمولہ بناکر قیمتیں مقرر کرنے کی ہدایت کردی ہے۔

عدالت نے فیصلے میں لکھا ہے کہ اوگرا کو اجارہ داری پر مبنی سرگرمی کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔ اتھارٹی نے قانون کی خلاف ورزی کی۔

فیصلے میں کہا گیا کہ صارف کے مفاد کا تحفظ اوگرا کی ذمہ داری ہے لیکن اتھارٹی صارف کے حقوق کے تحفظ میں ناکام رہی۔

مزید کہا گیا کہ سی این جی کارٹل بناکر حکومت کی ملی بھگت سے غریب شہریوں کے حقوق کی خلاف ورزی کی گئی۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ دوہزارآٹھ میں سی این جی قیمت تینتیس روپے فی کلو تھی جو ستمبر دوہزار بارہ میں پچانوے روپے فی کلو ہوگئی۔ ۔سی این جی قیمتیں قانون کے مطابق نہیں تھیں اور بہت زیادہ اضافی چارجزوصول کیےجارہے ہیں۔

فیصلے کے مطابق قیمتوں کے تعین کی ذمہ داری اوگرا کی ہے اور اوگرا وفاقی حکومت سے الگ خودمختار ادارہ ہے۔

فیصلے میں کہا گیا کہ اوگراحکومت کی گائیڈلائنزکو مدنظر رکھے لیکن من وعن تسلیم کرنے کا ذمہ دارنہیں۔

فیصلے میں مزید کہا گیا کہ اوگرا کو وفاقی حکومت کے نوٹیفکیشن کا پابند بنایا گیا ہے اور صارف کے مفاد کا تحفظ اوگرا کی ذمہ داری ہے۔

سپریم کورٹ کا کہنا تھا کہ اوگرا سی این جی کی نئی قیمتیں مقرر کرے ہم نہیں کریں گے۔

چیئرمین اوگرا سعید احمد کا کہنا تھا کہ تفصیلی فیصلہ ابھی موصول نہیں ہوا اور نئے فارمولے کے لیے جلد کوئی فیصلہ کرلیں گے۔

اوگرا کی طرف سے 48 گھنٹوں میں نئی قیمتوں کا اعلان کرنے کا بھی کہا گیا۔

اس حصے سے مزید

سول نافرمانی تحریک:عمران خان نےبجلی کابل جلادیا

تحریک انصاف کے چیئرمین نے حکومت مخالف تحریک میں اتوار کو کراچی کے جلسے میں عوام سے بھی بجلی کے بل جلوانے کا اعلان کیا ہے

کسی کو جمہوریت پر کلہاڑا نہیں چلانے دیں گے، وزیراعظم

قومی اسمبلی میں اظہارِ خیال کرتے ہوئے نواز شریف کا کہنا تھا کہ حکومت کسی کو بھی قومی سلامتی سے کھیلنے نہیں دے سکتی ہے۔

منی لانڈرنگ کیس: شریف خاندان باعزت بری

غیر قانونی اثاثہ جات، حدیبیہ پیپر مل اور رائے ونڈ محل کے ریفرنسز میں شریف خاندان کے دیگر افراد کے نام بھی شامل تھے۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (1)

Teyyab Shahzad
21 دسمبر, 2012 11:31
Assalam-O-Alaikum! Ye To Koi Faisala Nahi, Supreme Court Ko koi Thoos Faisala Karna Chahea tha.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

رودرہیم کا سبق

بچوں پر ہونیوالے جنسی تشدد پر ہماری شرمندگی کی سمت غلط ہے۔ شرم کی بات تو یہ ہے کہ ہم اس کو روکنے کی کوشش نہ کریں-

رکاوٹیں توڑ دو

اشرافیہ تعلیمی نظام کا بیڑہ غرق کرنے پر تلی ہوئی ہے جو خاص طور سے 1970ء کی دہائی کے بعد سے بد سے بدتر ہورہاہے۔

بلاگ

مووی ریویو: دختر -- دلوں کو چُھو لینے والی کہانی

اپنی تمام تر خوبیوں اور کچھ خامیوں کے ساتھ اس فلم کو پاکستانی نکتہ نگاہ سے پیش کیا گیا ہے۔

پھر وہی ڈیموں پر بحث

ڈیموں سے زراعت کے لیے پانی ملتا ہے، پانی پر کنٹرول سے بجلی پیدا کی جاسکتی ہے اور توانائی بحران ختم کیا جاسکتا ہے۔

شاہد آفریدی دوبارہ کپتان، ایک قدم آگے، دو قدم پیچھے

اس بات کی ضمانت کون دے گا کہ ماضی کی طرح وقار یونس اور شاہد آفریدی کے مفادات میں ٹکراؤ پیدا نہیں ہوگا۔

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔