25 اپريل, 2014 | 24 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

پاک افغان بارڈر پر سرگرمیاں بحال

۔۔۔۔فائل فوٹو۔
۔۔۔۔فائل فوٹو۔

پشاور: پاکستانی مزدوروں پر تشدد کے خلاف پاک افغان بارڈر کئی گھنٹے بند رہنے کے بعد افغان حکام کی یقین دہانی کے بعد کھول دی گئی ہے۔

 ہفتے کو افغانستان سے لوٹنے والے 29 محنت کشوں کا کہنا تھا کہ وہ مزدوری کرنے کابل گئے تھے جہاں افغان کمپنی نے نہ صرف انہیں تنخواہیں دینے سے انکارکیا بلکہ احتجاج کرنے پرتشدد کانشانہ بنایا اورپل چرخی جیل میں بند بھی کردیا۔

 مزدوروں نے الزام لگایا کہ افغان حکام نے ان کے پاسپورٹ بھی تلف کردیے۔

 متاثرہ محنت کش افغانستان سے بارڈر پرپہنچے اور خود پرہونے والے تشدد کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے طورخم بارڈر کوبند کردیا جس کی وجہ سے پاکستان اور افغانستان کے درمیان ہرقسم کی آمدورفت بند ہوگئی۔

 سرحد بند ہونے کے باعث نیٹوسپلائی بھی معطل ہوگئی تھی جس کے بعد پاکستانی سکیورٹی فورسز اور افغان بارڈر حکام کے درمیان مذاکرات میں افغان حکام نے متعلقہ کمپنی کیخلاف کارروائی کی یقین دہانی کرائی ہے۔

 دوسری جانب پاکستان نے افغانستان کے سفیر کو دفتر خارجہ طلب کرکے پاکستانی مزدوروں پر افغان فورسز کے تشدد کے خلاف شدید احتجاج کیا ہے۔

 دفتر خارجہ نے افغان سفیر سے استفسار کیا کہ پاکستانی مزدوروں کے پاس قانونی دستاویزات ہونے کے باوجود ان پر تشدد کیوں کیا گیا۔

 پاکستان نے افغان حکومت سے معاملے کی فوری تحقیقات اور کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مستقبل میں اس قسم کے واقعات سے بچنے کے اقدامات بھی کئے جائیں۔

 ادھر افغانستان میں پاکستانی سفیر نے بھی افغان حکومت سے اس معاملے پر احتجاج کیا ہے۔

اس حصے سے مزید

خیبر ایجنسی میں فورسز کی کارروائی۔ 24 شدت پسند ہلاک

ذرائع کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں وہ شدت پسند بھی شامل ہیں جو اسلام آباد سبزی منڈی اور پشاور دھماکے میں ملوث تھے۔

پشاور ہسپتال سے نو مبینہ جنگجو گرفتار

چھ مبینہ جنگجو اپنے تین زخمی ساتھیوں کو ایک ایمبولینس میں لیڈی ریڈنگ ہسپتال لائے،جہاں پولیس نے انہیں گرفتار کر لیا۔

جماعتِ اسلامی کا پشاور میں جرگے کا فیصلہ

جے آئی کے سربراہ کا کہنا ہے کہ یکم مئی کو ہونے والے اس جرگے میں تمام مکاتبِ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد شرکت کریں گے۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

مقدّس ریپ

دو دن وہ اسی گاؤں میں ماں کے بازؤں میں تڑپتی رہی۔ گھر میں پیسے ہی کہاں تھے کہ علاج کے لئے بدین تک ہی پہنچ پاتے۔

میڈیا اور نقل بازی کا کینسر

ایسا نہیں کہ میں کوئی پہلا انسان ہوں جس کے خیالات پر نقب لگائی گئی ہو، مگر آخری ضرور بننا چاہتا ہوں

!مار ڈالو، کاٹ ڈالو

مجھے احساس ہوا کہ مجھے اس پر شدید غصہ آ رہا ہے اور میں اسے سچ بولنے پر چیخ چیخ کر ڈانٹنا چاہتا ہوں-

خطبہء وزیرستان

کس سازش کے تحت 'آپکو' بدنام کرنے کے لئے دھماکے کیے جاتے ہیں؟ کس صوبے کے مظلوم عوام آپکے بھائی ہیں؟