24 اگست, 2014 | 27 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

مسلم لیگ ن کی ٹیکس ایمنسٹی بل کی مخالفت

فائل فوٹو۔۔۔
فائل فوٹو۔۔۔

اسلام آباد: پاکستان کی اہم اپوزیشن پارٹی مسلم لیگ نواز نے جمعے کو ٹیکس ایمنسٹی بل کی مخالفت کردی ہے۔

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس سینیٹر نسرین جلیل کی صدارت میں پارلیمنٹ ہاؤس اسلام آباد میں منعقد ہوا۔

سینیٹر اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ اس اسکیم کی منظوری کے بعد حکومت گراس اسیسمنٹ ٹیکس بھی لگائے گی۔

انکا کہنا تھا کہ حکومت آخری دنوں میں یہ اسکیم نہ لائے، بہتر ہوگا کہ یہ معاملہ آنے والی حکومت پر چھوڑ دیا جائے۔

چیئرمین ایف بی آر نے کہا کہ پاکستان میں وائٹ سے زیادہ بلیک منی ہے، دو لاکھ انتہائی امیر افراد ٹیکس نہیں دیتے، جن میں بڑے بڑے نام شامل ہیں جنہیں چند روز میں نوٹسز بھیج دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ان کے بس میں ہو تو ٹیکس ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ اٹھانے والوں پر ٹیکس کی شرح صفر کردیں۔

چیئرمین ایف بی آر نے تجویز دی کہ پانچ سال سرکاری ملازمت یا حکومت میں رہنے والوں کو اس اسکیم سے نکالا جاسکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آنے والی حکومت کو بھی اس اسکیم سے فائدہ ہوگا۔

اس حصے سے مزید

دسواں دن:’مائنس ون فارمولا‘تحریک انصاف اورحکومتی ٹیم میں ڈیڈلاک

ابھی تک یہ واضح نہیں ہوسکا کہ تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے دھرنوں کے باعث موجودہ سیاسی صورتحال کیا رخ اختیار کرے گی۔

اسلام آباد کے ریڈ زون میں موبائل فون سروسز بند

ترجمان پی ٹی اے کے مطابق وزارت داخلہ کی ہدایت پر ریڈ زون میں تاحکم ثانی موبائل فون سروسز بند کی گئی ہیں۔

عمران خان کا نواز شریف سے ایک ماہ کیلئے استعفی کا مطالبہ

پی ٹی آئی کے دھرنے سے خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف ایک ماہ کے لیے بھی کرسی چھوڑنے کے لیے تیار نہیں ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ڈرامے کی آخری قسط

اب اس آخری میلوڈرامہ کا جو بھی انجام ہو- اس نے پاکستانیوں کی آخری ہلکی سی امید کوبھی ریزہ ریزہ کردیا ہے-

پی ٹی آئی کی خالی دھمکیاں

جو دھمکیاں دی جا رہی ہیں، وہ حقیقت سے دور ہیں۔ ایسا کوئی راستہ موجود نہیں، جس سے پارٹی اپنی ان دھمکیوں پر عمل کر سکے۔

بلاگ

سیاست میں شک کی گنجائش

شکوک کے ساتھ ساتھ ان افواہوں کو بھی تقویت مل رہی ہے کہ عمران خان اور طاہرالقادری اصل میں اسٹیبلشمنٹ کے مہرے ہیں۔

پکوان کہانی : شاہی قورمہ

جو اکبر اعظم کے شاہی باورچی خانے کی نگرانی میں راجپوت خانساماؤں کے تجربات کا نتیجہ ہے۔

دفاعی حکمت عملی کے نقصانات

مصباح کے دفاعی انداز کے اثرات ہمارے جارحانہ انداز رکھنے والے بیٹسمینوں پر بھی پڑے ہیں

پاکستان ایک "ساس" کی نظر سے

68 سالہ جین والر کو پاکستان بہت پسند آیا، اتنا زیادہ کہ بقول ان کے مجھے پاکستان سے محبت ہوگئی ہے۔