19 ستمبر, 2014 | 23 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

مسلم لیگ ن کی ٹیکس ایمنسٹی بل کی مخالفت

فائل فوٹو۔۔۔
فائل فوٹو۔۔۔

اسلام آباد: پاکستان کی اہم اپوزیشن پارٹی مسلم لیگ نواز نے جمعے کو ٹیکس ایمنسٹی بل کی مخالفت کردی ہے۔

سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس سینیٹر نسرین جلیل کی صدارت میں پارلیمنٹ ہاؤس اسلام آباد میں منعقد ہوا۔

سینیٹر اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ اس اسکیم کی منظوری کے بعد حکومت گراس اسیسمنٹ ٹیکس بھی لگائے گی۔

انکا کہنا تھا کہ حکومت آخری دنوں میں یہ اسکیم نہ لائے، بہتر ہوگا کہ یہ معاملہ آنے والی حکومت پر چھوڑ دیا جائے۔

چیئرمین ایف بی آر نے کہا کہ پاکستان میں وائٹ سے زیادہ بلیک منی ہے، دو لاکھ انتہائی امیر افراد ٹیکس نہیں دیتے، جن میں بڑے بڑے نام شامل ہیں جنہیں چند روز میں نوٹسز بھیج دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ان کے بس میں ہو تو ٹیکس ایمنسٹی اسکیم سے فائدہ اٹھانے والوں پر ٹیکس کی شرح صفر کردیں۔

چیئرمین ایف بی آر نے تجویز دی کہ پانچ سال سرکاری ملازمت یا حکومت میں رہنے والوں کو اس اسکیم سے نکالا جاسکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آنے والی حکومت کو بھی اس اسکیم سے فائدہ ہوگا۔

اس حصے سے مزید

کسی کو جمہوریت پر کلہاڑا نہیں چلانے دیں گے، وزیراعظم

قومی اسمبلی میں اظہارِ خیال کرتے ہوئے نواز شریف کا کہنا تھا کہ حکومت کسی کو بھی قومی سلامتی سے کھیلنے نہیں دے سکتی ہے۔

منی لانڈرنگ کیس: شریف خاندان باعزت بری

غیر قانونی اثاثہ جات، حدیبیہ پیپر مل اور رائے ونڈ محل کے ریفرنسز میں شریف خاندان کے دیگر افراد کے نام بھی شامل تھے۔

اجنبی سرزمین پر خطرات سے دوچار زندگی

ہزاروں پاکستانی بحرین کی پولیس اور شاہی افواج میں کام کررہے ہیں، جنہیں فسادات کے دوران شدید خطرات کا سامنا ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

رودرہیم کا سبق

بچوں پر ہونیوالے جنسی تشدد پر ہماری شرمندگی کی سمت غلط ہے۔ شرم کی بات تو یہ ہے کہ ہم اس کو روکنے کی کوشش نہ کریں-

رکاوٹیں توڑ دو

اشرافیہ تعلیمی نظام کا بیڑہ غرق کرنے پر تلی ہوئی ہے جو خاص طور سے 1970ء کی دہائی کے بعد سے بد سے بدتر ہورہاہے۔

بلاگ

مووی ریویو: دختر -- دلوں کو چُھو لینے والی کہانی

اپنی تمام تر خوبیوں اور کچھ خامیوں کے ساتھ اس فلم کو پاکستانی نکتہ نگاہ سے پیش کیا گیا ہے۔

پھر وہی ڈیموں پر بحث

ڈیموں سے زراعت کے لیے پانی ملتا ہے، پانی پر کنٹرول سے بجلی پیدا کی جاسکتی ہے اور توانائی بحران ختم کیا جاسکتا ہے۔

شاہد آفریدی دوبارہ کپتان، ایک قدم آگے، دو قدم پیچھے

اس بات کی ضمانت کون دے گا کہ ماضی کی طرح وقار یونس اور شاہد آفریدی کے مفادات میں ٹکراؤ پیدا نہیں ہوگا۔

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔