25 جولائ, 2014 | 26 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

سراج تالپور، شاہ رخ کیخلاف وعدہ معاف گواہ بننے پر تیار

شاہ زیب خان۔ فائل فوٹو

کراچی: شاہ زیب قتل کیس میں زیرحراست ملزم سراج تالپور، شاہ رخ جتوئی کے خلاف وعدہ معاف گواہ بننے پر تیار ہو گئے ہیں جبکہ اس بات کا بھی انکشاف ہوا ہے کہ کیس کے مرکزی ملزم شاہ رخ جتوئی امارات ایئرلائن کی پرواز ای کے 603 کے ذریعے بیرون ملک فرار ہو گئے تھے۔

ذرائع کے مطابق سراج تالپور کے والد امداد تالپور کے اعلیٰ پولیس افسران سے رابطے ہوئے ہیں جس میں معاملات طے پا گئے ہیں اور طے ہوا ہے کہ سراج تالپور، شاہ رخ کیخلاف وعدہ معاف گواہ بنیں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اس تمام معاملے میں اہم قبائلی سردار بھی اہم کردار ادا کررہے ہیں۔

سراج تالپور کو کل انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

ذرائع نے انکشاف کیا کہ شاہ رخ جتوئی امارات ایئرلائن کی پرواز ای کے چھ سو تین  کے ذریعے بیرون ملک ملک فرار ہوئے۔

اس حوالے سے مزید بتایا گیا کہ شاہ رخ جتوئی کو ایف آئی اے کے پائیسس کے سسٹم سے نہیں گزارا گیا جبکہ انہیں بغیر امیگریشن کے ٹرمینل تھری  سے ایئرپورٹ میں داخل کرایا گیا۔

اس حصے سے مزید

کامران خان نے بھی جیونیوز چھوڑ دیا

صحافی برادری سے تعلق رکھنے والے ذرائع کا کہنا ہے کہ کامران خان عنقریب آنے والے میڈیا گروپ ’’بول‘‘ سے وابستہ ہو رہے ہیں۔

'این آر او کے تحت پندرہ سال تک مارشل لاء نافذ نہیں ہو سکتا'

شہلا رضا نے انکشاف کیا ہے کہ امریکہ، برطانیہ ، یواے ای اور جنرل پرویز اشفاق کیانی نےبھی اس کی گارنٹی دی تھی۔

کراچی: فائرنگ کے مختلف واقعات میں پانچ افراد ہلاک

دوسری جانب گودھرا میں ایک پولیس مقابلے میں مشتبہ ملزمان کی فائرنگ سے اے ایس آئی ہلاک ہوگیا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

بلاگ

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

شکایتوں کا بن جو میرا دیس ہے

شکایتی ٹٹو زنده قوم کی نشانی ہوتے ہیں۔ مستقل شکایت کرتے رہنا اب ہماری پہچان بن چکا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-