22 ستمبر, 2014 | 26 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

'جمہوریت کو ڈی ریل نہیں ہونے دیں گے'

تحریک منہاج القرآن کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری۔ اے ایف پی فائل فوٹو۔
تحریک منہاج القرآن کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری۔ اے ایف پی فائل فوٹو۔

لاہور: تحریک منہاج القرآن کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا ہے کہ وہ جمہوریت کو ڈی ریل نہیں ہونے دیں گے۔

پیر کو لاہور میں تاجر کنوینشن سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ انکا مقصد عام انتخابات کو ملتوی کرنا نہیں ہے، انتخابات مقررہ وقت پر ہی ہونے چاہئیں۔

تحریک منہاج القرآن کے سربراہ کا کہنا تھا کہ چور، لٹیروں اور ڈاکوؤں کی جگہ پارلیمنٹ میں نہیں جیل میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ غریبوں کے محل اجاڑ کر محل بنالئے گئے ہیں۔

طاہرالقادری نے کہا کہ سرکاری مشینری لانگ مارچ روکنے کی کوشش کر رہی ہے۔

انہوں نے انتظامیہ سے اپیل کی کہ لانگ مارچ روکنے کے ناجائز احکامات کو نہ مانیں اور اس کا حصہ بن جائیں۔

اس موقع پر آل پاکستان تاجر اتحاد نے طاہرالقادری کی حمایت کا اعلان کیا۔

اس حصے سے مزید

کارکنوں کی گرفتاری سے روکنے کے لیے آئی جی پی کا حکم تاخیر سے ملا

پنجاب کے انسپکٹر جنرل نے ایسے کسی اقدام پر سخت کارروائی کی دھمکی دی تھی، لیکن راولپنڈی میں اب بھی میں یہ سلسلہ جاری ہے۔

کیا قومی اسمبلی اقلیتوں کے معاملات سے لاتعلق ہوگئی ہے؟

اقلیتی برادریاں جن کی آواز مشکل سے ہی سنائی دیتی ہے، کسی سیاسی نمائندگی سے محروم ہیں۔

پی ٹی آئی کی جانب سے این اے 149 کے ضمنی انتخابات کا بائیکاٹ

تحریک انصاف کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کور کمیٹی کے اجلاس میں کیا جائے گا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مڑی تڑی باتیں اور مقاصد

چیزوں کو اپنی مرضی کے مطابق توڑ مروڑ کر پیش کرنے، اور غیر آئینی اقدامات سے پاکستان کے مسائل میں صرف اضافہ ہی ہوگا۔

ذمہ داری ضروری ہے

سرکلر ڈیٹ کے لاعلاج مرض کی بدولت عالمی مالیاتی ادارے ہمارے توانائی کے منصوبوں میں سرمایہ کاری میں دلچسپی نہیں رکھتے۔

بلاگ

خواب دو انقلابیوں کے

ایک انقلابی خود کو وزیر اعظم بنتا دیکھ رہا ہے تو دوسرا صدارتی محل میں مریدوں سے ہاتھ پر بوسے کروانے کے خواب دیکھ رہا ہے۔

کوئی ان سے نہیں کہتا۔۔۔

ریڈ زون کے محفوظ باسیو! ہمیں دہشت گردوں، ڈاکوؤں، چوروں، اغواکاروں، تمہاری افسر شاہی اور پولیس سے بچانے والا کوئی نہیں۔

بلوچ نیشنلزم میں زبان کا کردار

لسانی معاملات پر غیر دانشمندانہ طریقہ سے اصرار مزید ناراضگی اور پیچیدگیوں کا سبب بن سکتا ہے، جو شاید مناسب قدم نہیں۔

خواندگی کا عالمی دن اور پاکستان

تعلیم کو سرمایہ کاروں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے جن کے لیے تعلیم ایک جنس ہے جسے بیچ کر منافع کمایا جاسکتا ہے-