24 جولائ, 2014 | 25 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

'شام میں بھوک سے بے حال دس لاکھ افراد کی مدد نہیں کرسکتے'

فوٹو اے پی۔۔۔

جنیوا: عالمی ادارہ خوراک(ورلڈ فوڈ پروگرام) نے منگل کو کہا ہے کہ شام میں سیکیورٹی کی خراب صورتحال کے باعث وہ وہاں بھوک سے بے حال تقریباً دس لاکھ لوگوں کی مدد نہیں کر سکتے۔

ادارے کی ترجمان نے کہا کہ الیسا بیتھ بائرس نے بتایا کہ ایجنسی نے رواں ماہ شام کے 15 سے 25 لاکھ افراد کی مدد کرنیکا ارادہ کیا تھا جن کے بارے میں سیرین عرب ریڈ کریسنٹ کا کہنا ہے کہ انہیں غذائی امداد کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ سیکیورٹی کی خراب  صرتحال اور ایجنسی کی جانب سے شام کی ترتوس بندرگاہ تک رسائی میں ناکامی کے باعث ہم ملک کے شدید متاثرہ علاقوں میں رہائش پذیر لوگوں کی بڑی تعداد کی مدد نہیں کر سکیں گے۔

بائرس نے کہا کہ ہمارا اہم پارٹنر ریڈ کریسنٹ اس پر انتہائی دباؤ ہے اور اس صورتحال میں مزید کام کرنا اس کی استعداد سے باہر ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ شام کے شہروں حمص، الیپو، ترتوس اور کامسلی میں بڑھتے ہوئے خطرات کے پیش نظر ہم نے اپنے عملے کو وقتی طور پر وہاں کے دفاتر سے بلا لیا ہے۔

شام میں جاری بحران کا آغاز مارچ 2011 یں پرامن مظاہروں سے ہوا تھا تاہم بعد میں اس نے خانہ جنگی کی کی شکل اختیار کر لی تھی۔ اقوام متحدہ کی حال ہی میں جاری کی گئی رہورٹ کے مطابق مارچ 2011 سے 2012 کے اختتام تک اس تنازع میں اب 60 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

اس حصے سے مزید

غزہ: فوجی آپریشن کا سترھواں روز، ہلاکتوں کی تعداد 700 سے زائد

دوسری جانب حماس نے فضائی کمپنیوں کی جانب سے اسرائیل کے لیے اپنی سروس بند کیے جانے کو ایک عظیم کامیابی قرار دیا ہے۔

حماس ایک 'مضبوط دشمن' بن چکا ہے، اسرائیل کا اعتراف

حماس کے جنگجو تربیت یافتہ ہیں، ان کے پاس سپلائز کی کوئی کمی نہیں اور ان کے حوصلے بلند ہیں، ترجمان اسرائیلی فوج۔

سعودی عرب: جرائم کی شرح میں 102 فیصد اضافہ

وزارتِ انصاف کے مطابق 2012ء میں جرائم کی تعداد دس ہزار نو سو چار تھی، جو 2013ء میں بائیس ہزار ایک سو تیرہ تک پہنچ گئی۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

بلاگ

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

شکایتوں کا بن جو میرا دیس ہے

شکایتی ٹٹو زنده قوم کی نشانی ہوتے ہیں۔ مستقل شکایت کرتے رہنا اب ہماری پہچان بن چکا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-