16 اپريل, 2014 | 15 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

لانگ مارچ پر حملے کے منصوبے کا انکشاف

سربراہ تحریک منہاج القرآن ڈاکٹر طاہر القادری۔ فائل فوٹو اے ایف پی۔۔۔

اسلام آباد: طاہر القادری کے 14 جنوری کو ہونے والے لانگ مارچ پر حملے کے منصوبے کا انکشاف ہوا ہے۔

وزارت داخلہ نےحکیم اللہ محسود کی قریبی ساتھی کی فون  پر بات چیت ریکارڈ کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

وزارت داخلہ کے ذرائع کا کہنا ہےکہ حکیم اللہ محسود  کے قریبی ساتھی نے فون پر رابطہ کر کے طالبان رہنما سے  طاہر القادری کے لانگ مارچ پر  حملے  کیلیے گاڑی مانگی ہے۔ وزارت داخلہ کےمطابق طالبان کی طرف سے چودہ  جنوری کو لانگ مارچ پر حملہ نہ کرنے کے بیان کا  مقصد عوام خصوصاً طاہرالقادری کو دھوکہ دینا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ آٹھ جنوری کو مختلف ٹی وی چینلز پر تحریک طالبان کے ترجمان کے حوالے سے نشر ہونے والا بیان گمراہ کن ہے۔

وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ تحریک طالبان کا ترجمان نام نہاد  ہے اور اس کی جانب سے جاری کیے گئے بیانات درست نہیں، حکومت لانگ مارچ کی سیکیورٹی کے اقدامات جاری رکھے گی۔

یاد رہے کہ منگل کو تحریک طالبان پاکستان کے ترجمان احسان اللہ احسان نے بیان دیا تھا ان کا طاہر القادری کے لانگ مارچ ہر حملے کا کوئی ارادہ نہیں اور نہ ہی انہوں نے لانگ مارچ پر حملے کے حوالے سے کوئی دھمکی دی ہے۔

ٹی ٹی پی ترجمان کا کہنا تھا کہ طالبان کا نام اس معاملے میں سیاسی مقاصد کے لئے استعمال کیا جا رہا ہے۔

اس حصے سے مزید

'غیر جمہوری عمل کے خلاف پیپلز پارٹی حکومت کے ساتھ ہوگی'

سول اور فوجی قیادت کے درمیان اختلافات پر فرحت اللہ بابر کا کہنا تھا کہ انہیں خدشہ ہے کہ سول نظام کو خطرا ہوسکتا ہے۔

مشرف غداری کیس کی سماعت جاری

منگل کو ہونے والی سماعت میں عدالت نے کہا کہ میں پروسیکیوٹر کی تقرری سے متعلق فیصلہ 18 اپریل کو سنایا جائے گا۔

'حکومت گیلانی اور تاثیر کی رہائی میں سنجیدہ نہیں'

طالبان پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ حکومت نے علی حیدر اور شہباز تاثیر کی رہائی کا ان سے مطالبہ نہیں کیا: خورشید شاہ


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

جادو کا چراغ: نبض کے بھید اور ایک برباد محبت

بوڑھے دانا طبیب نے مختلف ناموں پر بدلتی نبض کو دیکھ کر لڑکی کی پراسرار بیماری کا علاج کیا-

سارے جہاں سے مہنگا - ریویو

فلم میں ایک اچھوتا خیال پیش کیا گیا ہے کہ کس طرح 'جگاڑ' کر کے ایک مڈل کلاس آدمی مہنگائی کا توڑ نکالتا ہے۔

فتویٰ براۓ سیکولر ازم

فرقہ واریت کے ہولناک عفریت کی خون آشام گرفت میں جکڑے پاکستان کی بقا صرف اور صرف سیکولر ازم میں ہے.

ڈیئر پرائم منسٹر

بس اتنا بتانا چاہتا ہوں ہوں کہ آپ بالکُل بھی فکرمند نہ ہوں یہاں سب امن سُکھ چین اور شانتی کا دور دورە ہے۔