25 جولائ, 2014 | 26 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

پاکستان کا لگاتار سرحدی خلاف ورزیوں پر احتجاج

لائن آف کنٹرول پر ایک ہندوستانی فوجی حفاظت پر معمور ہے۔ رائٹرز فوٹو۔
لائن آف کنٹرول پر ایک ہندوستانی فوجی حفاظت پر معمور ہے۔ رائٹرز فوٹو۔

اسلام آباد: پاکستان نے جمعے کو ہندوستانی سفیر کو طلب کرتے ہوئے ہندوستان کی جانب سے دوسری مرتبہ سرحدی خلاف ورزی کرنے پر احتجاج کیا جس کے نتیجے میں ایک اور پاکستانی فوجی کی ہلاکت ہوئی۔

 دفتر خارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق، سیکرٹری خارجہ جلیل عباس جیلانی نے لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر فائر بندی معاہدے کی خلاف ورزیوں پر ایک احتجاجی مراسلہ ہائی کمشنر کے حوالے کیا۔

 مراسلے میں پاکستان نے ناقابل قبول، بلا اشتعال اور بار بار ہونے والے حملوں کی شدید مذمت کی۔

 بیان کے مطابق، پاکستان نے ہندوستانی فوج کی جانب سے بار بار ایل او سی کی خلاف ورزی کے واقعات کی اچھی طرح جانچ پڑتال کرنے کی درخواست کی ہے۔

 پاکستان کے مطابق، جمعرات کو ہندوستانی فوج نے ایک اور پاکستانی فوجی کو ایل او سی پر ہلاک کردیا تھا۔

 گزشتہ پانچ روز کے دوران ایل او سی پر فائرنگ کے تین واقعات رونما ہوچکے ہیں جن میں چار فوجی ہلاک ہوئے ہیں جبکہ پاکستان اور ہندوستان دونوں نے ایک دوسرے کے الزامات کی تردید کی ہے۔

 ہندوستانی فوج کے ایک ترجمان نے کہا تھا کہ فائرنگ پاکستان نے کی تھی اور ہندوستانی سپاہیوں کی جانب سے اسے پسپا کردیا گیا۔

 واضح رہے کہ 2003 میں دونوں ممالک کی جنگ بندی کے بعد لائن آف کنٹرول پر فائرنگ اور ہلاکتوں کا یہ سب سے بڑا واقعہ ہے۔

اس حصے سے مزید

ہندوستان کے ساتھ تمام مسائل پر بات چیت ہوگی: دفترخارجہ

سیکریٹری خارجہ اعزاز چوہدری نے کہا ہے کہ وہ ہندوستانی سیکریٹری خارجہ کے ساتھ ملاقات میں تمام اہم مسائل پر بات کریں گے۔

کوئٹہ میں فائرنگ، دو پولیس اہلکار ہلاک

سریاب روڈ پر دو نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کی۔

کراچی سمیت سندھ کے مختلف شہروں میں بجلی کا بریک ڈاؤن

کے الیکٹرک کے مطابق نیشنل گرڈ لائن میں فنی خرابی کے باعث پورے کراچی کی بجلی معطل ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

تھوڑا سا احترام

آپ ایک مایوس، خوفزدہ بیوروکریسی سے کیا توقع کرسکتے ہیں جنہیں اپنی سمت کا علم نہ ہو؟

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بلاگ

گھریلو تشدد: پاکستانی 'کلچر' - حقیقت کیا ہے؟

پاکستانی سماج میں عورت مرد کی جائداد اور اس سے کمتر ہے چناچہ اس کے ساتھ کسی قسم کا سلوک روا رکھنا مرد کا پیدائشی حق ہے-

ریاستی تنہائی اور اجتماعی مہاجرت

جب تک سوچنے اور سوچ کے اظہار کے لیے ممکنہ حد تک ازادی موجود نہ ہو تب تک سماج میں تکثیریت پروان نہیں چڑھ سکتی

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔