02 اکتوبر, 2014 | 6 ذوالحجہ, 1435
ڈان نیوز پیپر

پاکستان کا لگاتار سرحدی خلاف ورزیوں پر احتجاج

لائن آف کنٹرول پر ایک ہندوستانی فوجی حفاظت پر معمور ہے۔ رائٹرز فوٹو۔
لائن آف کنٹرول پر ایک ہندوستانی فوجی حفاظت پر معمور ہے۔ رائٹرز فوٹو۔

اسلام آباد: پاکستان نے جمعے کو ہندوستانی سفیر کو طلب کرتے ہوئے ہندوستان کی جانب سے دوسری مرتبہ سرحدی خلاف ورزی کرنے پر احتجاج کیا جس کے نتیجے میں ایک اور پاکستانی فوجی کی ہلاکت ہوئی۔

 دفتر خارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق، سیکرٹری خارجہ جلیل عباس جیلانی نے لائن آف کنٹرول (ایل او سی) پر فائر بندی معاہدے کی خلاف ورزیوں پر ایک احتجاجی مراسلہ ہائی کمشنر کے حوالے کیا۔

 مراسلے میں پاکستان نے ناقابل قبول، بلا اشتعال اور بار بار ہونے والے حملوں کی شدید مذمت کی۔

 بیان کے مطابق، پاکستان نے ہندوستانی فوج کی جانب سے بار بار ایل او سی کی خلاف ورزی کے واقعات کی اچھی طرح جانچ پڑتال کرنے کی درخواست کی ہے۔

 پاکستان کے مطابق، جمعرات کو ہندوستانی فوج نے ایک اور پاکستانی فوجی کو ایل او سی پر ہلاک کردیا تھا۔

 گزشتہ پانچ روز کے دوران ایل او سی پر فائرنگ کے تین واقعات رونما ہوچکے ہیں جن میں چار فوجی ہلاک ہوئے ہیں جبکہ پاکستان اور ہندوستان دونوں نے ایک دوسرے کے الزامات کی تردید کی ہے۔

 ہندوستانی فوج کے ایک ترجمان نے کہا تھا کہ فائرنگ پاکستان نے کی تھی اور ہندوستانی سپاہیوں کی جانب سے اسے پسپا کردیا گیا۔

 واضح رہے کہ 2003 میں دونوں ممالک کی جنگ بندی کے بعد لائن آف کنٹرول پر فائرنگ اور ہلاکتوں کا یہ سب سے بڑا واقعہ ہے۔

اس حصے سے مزید

وزيراعظم نااہلی کيس:سپريم کورٹ کالارجربينچ بنانےکی درخواست مسترد

بینچ کے سربراہ جسٹس جواد ایس خواجہ پر اعتراض کی درخواست بھی چیف جسٹس نے مسترد کر دی، کیس کی سماعت جمعرات سے ہو گی۔

کراچی: ایک گھنٹے میں پولیس پر دو حملے، دو اہلکار زخمی

پہلا واقعہ حسن اسکوائر کے قریب پیش آیا جہاں ایک پولیس موبائل کو موٹر سائیکل سوار حملہ آوروں نے دستی بم سے نشانہ بنایا۔

لائن آف کنٹرول: ہندوستان کی جانب سے بلا اشتعال فائرنگ

انٹر سروسز پبلک ریلیشنز کے مطابق انڈین فورسز نے ایل او سی پر باغ سیکٹر میں فائرنگ کی جس کا بھر پور جواب دیا گیا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماؤں اور بچوں کے قاتل ہم

پاکستان سے کم فی کس آمدنی رکھنے والے ممالک پیدائش کے دوران ماؤں اور بچوں کی اموات پر قابو پا چکے ہیں۔

تبدیلی کا پیش خیمہ

اکثر ایسے بڑے واقعات پیش آتے ہیں جو تبدیلی کے عمل کو تیز کردیتے ہیں، مگر ایسے حالات کسی فرد کے پیدا کردہ نہیں ہوتے۔

بلاگ

!گو نواز گو

اس ملک میں پڑھے لکھے لوگوں کی قدر ہی نہیں۔ جب تک پڑھے لکھوں کو وی آئی پی پروٹوکول نہیں دیا جاتا یہ ملک ترقی نہیں کرسکتا

قدرتی آفات اور پاکستان

قدرتی آفات سے پہلے انتظامات پر ایک ڈالر جبکہ بعد میں سات ڈالر خرچ ہوتے ہیں، اس کے باوجود ہم پہلے سے انتظامات نہیں کرتے۔

مقابلہ خوب ہے

کوئی دنیا کے در در پر پھیلے ہمارے کشکول کی زیارت کرے، پھر اس میں خیرات ڈالنے والوں کو فتح کرنے کے ہمارے عزم بھی دیکھے۔

پاکستان میں ذہنی بیماریاں اور ہماری بے حسی

آخر ذہنی بیماریوں کے شکار کتنے اور لوگوں کو اپنے گھرانوں کی بے حسی، اور معاشرے کی جانب سے ٹھکرائے جانے کو جھیلنا پڑے گا؟