22 ستمبر, 2014 | 26 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

عدالت کا تحریری حکم نہیں ملا، کائرہ

وفاقی وزیر برائے اطلاعات و نشریات، قمر زمان کائرہ۔ فائل تصویر اے ایف پی
وفاقی وزیر برائے اطلاعات و نشریات، قمر زمان کائرہ۔ فائل تصویر اے ایف پی

اسلام آباد: وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات قمرزمان کائرہ نے کہا ہے کہ وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کو گرفتار کرنے سے متعلق سپریم کورٹ کا فیصلہ ابھی تک حکومت کو نہیں ملا۔

منگل کو جیو ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان بھر کے وکلاء اور ملک کے دوسرے سیاستدان یہی کہہ رہے ہیں کہ یہ فیصلہ جس موقع پر آیا اس موقع اور سپریم کورٹ کے فیصلے میں کچھ مماثلت ضرور ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم اس بات کا جائزہ لے رہے ہیں کہ طاہر القادری کی تقریر اور سپریم کورٹ کے فیصلے میں کہاں کہاں مماثلت ہے اور طاہر القادری کی تقریر میں کیا کرامات ہیں۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ انتخابات مقررہ وقت پر ہونگے، یہ بات ہم بار بار کہہ چکے ہیں، کسی کی خواہشات کچھ بھی ہوں، عوام جمہوریت کو ڈی ریل نہیں ہونے دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت جمہوریت کو کوئی خطرہ نہیں ہے، طاہر القادری کے لہجے سے لگ رہا تھا کہ انہیں سپریم کورٹ کے اس فیصلے کا شاید پہلے سے علم تھا، جس کے سبب انہوں نے کہا کہ میری آدھی تقریر سے آدھا کام ہو گیا ہے باقی آدھا کام کل ہو جائے گا۔

ایک سوال کے جواب میں قمر زمان کائرہ نے کہا کہ کوئٹہ کی صورتحال کا اسلام آباد کی صورتحال کے ساتھ موازنہ نہیں کیا جاسکتا۔کوئٹہ اور اسلام آباد کی صورتحال میں بڑا فرق ہے۔

انہوں نے کہا کہ منہاج القرآن ایک سیاسی تنظیم نہیں ہے، طاہر القادری نے ابھی تک اپنی پوزیشن واضح نہیں کی ہے کہ وہ انتخابات میں حصہ لینا چاہتے ہیں یا نہیں۔

وزیر اطلاعات کے مطابق، ڈاکٹر قادری نے ابھی تک اپنی جماعت کو الیکشن کمیشن کے پاس رجسٹرڈ بھی نہیں کرایا۔

قمر زمان کائرہ نے کہا کہ طاہر القادری سے مذاکرات کے حق میں ہیں کیونکہ ہم نے تو طالبان کے ساتھ بھی مذاکرات کی حامی بھری ہوئی ہے۔

اس حصے سے مزید

لیفٹیننٹ جنرل رضوان اختر ڈی جی آئی ایس آئی مقرر

رضوان اختر اب تک ڈائریکٹر جنرل رینجرز کے عہدے پر کام کررہے تھے، وہ جلد ہی اپنی نئی ذمہ داری سنبھال لیں گے۔

سرکاری اداروں میں بھرتیوں پرپابندی ختم

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ سیلاب متاثرین کو فی خاندان 25 ہزار روپے امداد دی جائے۔

حج کرپشن کیس، مرکزی ملزم کی ضمانت منظور

سپریم کورٹ نے راؤ شکیل کی درخواست ضمانت اپنا پاسپورٹ اور ایک کروڑ روپے کا ضمانتی مچلکہ جمع کرانے کے عوض منظور کر لی۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مڑی تڑی باتیں اور مقاصد

چیزوں کو اپنی مرضی کے مطابق توڑ مروڑ کر پیش کرنے، اور غیر آئینی اقدامات سے پاکستان کے مسائل میں صرف اضافہ ہی ہوگا۔

ذمہ داری ضروری ہے

سرکلر ڈیٹ کے لاعلاج مرض کی بدولت عالمی مالیاتی ادارے ہمارے توانائی کے منصوبوں میں سرمایہ کاری میں دلچسپی نہیں رکھتے۔

بلاگ

خواب دو انقلابیوں کے

ایک انقلابی خود کو وزیر اعظم بنتا دیکھ رہا ہے تو دوسرا صدارتی محل میں مریدوں سے ہاتھ پر بوسے کروانے کے خواب دیکھ رہا ہے۔

کوئی ان سے نہیں کہتا۔۔۔

ریڈ زون کے محفوظ باسیو! ہمیں دہشت گردوں، ڈاکوؤں، چوروں، اغواکاروں، تمہاری افسر شاہی اور پولیس سے بچانے والا کوئی نہیں۔

بلوچ نیشنلزم میں زبان کا کردار

لسانی معاملات پر غیر دانشمندانہ طریقہ سے اصرار مزید ناراضگی اور پیچیدگیوں کا سبب بن سکتا ہے، جو شاید مناسب قدم نہیں۔

خواندگی کا عالمی دن اور پاکستان

تعلیم کو سرمایہ کاروں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے جن کے لیے تعلیم ایک جنس ہے جسے بیچ کر منافع کمایا جاسکتا ہے-