16 اپريل, 2014 | 15 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

باڑہ سے اٹھارہ لاشیں برآمد

خیبر ایجنسی میں ایک بکتر بند گاڑی کی چھت پر پولیس اہلکار سوار ہے۔ فائل تصویر رائٹرز
خیبر ایجنسی میں ایک بکتر بند گاڑی کی چھت پر پولیس اہلکار سوار ہے۔ فائل تصویر رائٹرز

خیبر ایجنسی: خیبر ایجنسی کی باڑہ تحصیل کے علاقے عالم گودر سے اٹھارہ لاشیں ملی ہیں جنہیں گولیاں مار کر ہلاک کی گیا تھا۔ مقامی اور قبائلی ذرائع نے اس بات کی تصدیق کی ہے۔

آفیشلز نے ان کی تعداد تو درست بتائی ہے لیکن تاحال ان کی شناخت نہیں ہوسکی ہے۔

ڈان ڈاٹ کام کو انٹیلی جنس ذرائع نے بتایا کہ ایک علاقے میں 18 لاشیں موجود ہیں جن میں چار خاصہ دار بھی شامل ہیں جنہیں عسکریت پسندوں نے اغوا کیا تھا۔ اس کے علاوہ ایک سیکیورٹی اہلکار اور امن کمیٹی کے چند اراکین بھی شامل ہیں۔

' یوں لگتا ہے کہ عسکریت پسند انہیں فائرنگ سے قتل کرنے کے بعد لاشوں کو یہی چھوڑ گئے،' انٹیلی جنس ذرائع نے بتایا۔

مقامی قبائلیوں نے بتایا کہ مرنے والوں میں ایک ہی خاندان کے سات افراد بھی شامل ہیں۔

جب سیکیورٹی اور انتظامی آفیشلز سے رابطہ کیا گیا تو بتایا گیا کہ انہوں نے بھی لاشوں کے بارے میں سنا ہے لیکن ان کے پاس مزید تفصیلات نہیں ۔

اس حصے سے مزید

' مذاکرات کا عمل پیچیدہ ہے، ٹاک شوز پر حل نہیں کیا جاسکتا '

فاٹا کو افغانستان اور سنٹرل ایشیاء کا گیٹ وے بنائینگے اور امن و امان کیلئے کام کرینگے، نو منتخب گورنر سردار مہتاب عباسی۔

وزیرستان میں پمفلٹ نہیں بانٹے، افغان طالبان

افغان طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے کہا ہے کہ 'ملا محمد عمر سے منسوب پمفلٹ میں کوئی حقیقت نہیں'۔

خیبر ایجسنی: فورسز کی گاڑی کے قریب دھماکے میں اہلکار زخمی

یہ واقعہ شمالی وزیرستان میں غلام خان روڈ پر پیش آیا جہاں سیکیورٹی فورسز کی گاڑی کو ایک دیسی ساختہ بم سے نشانہ بنایا گیا۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

جادو کا چراغ: نبض کے بھید اور ایک برباد محبت

بوڑھے دانا طبیب نے مختلف ناموں پر بدلتی نبض کو دیکھ کر لڑکی کی پراسرار بیماری کا علاج کیا-

سارے جہاں سے مہنگا - ریویو

فلم میں ایک اچھوتا خیال پیش کیا گیا ہے کہ کس طرح 'جگاڑ' کر کے ایک مڈل کلاس آدمی مہنگائی کا توڑ نکالتا ہے۔

فتویٰ براۓ سیکولر ازم

فرقہ واریت کے ہولناک عفریت کی خون آشام گرفت میں جکڑے پاکستان کی بقا صرف اور صرف سیکولر ازم میں ہے.

ڈیئر پرائم منسٹر

بس اتنا بتانا چاہتا ہوں ہوں کہ آپ بالکُل بھی فکرمند نہ ہوں یہاں سب امن سُکھ چین اور شانتی کا دور دورە ہے۔