23 اگست, 2014 | 26 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

اپوزیشن جماعتوں کا جمہوریت کے تحفظ کا عزم

اجلاس کے بعد مسلم لیگ ن کے صدر میاں نواز شریف دیگر اپوزیشن رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کررہے ہیں۔ پی پی آئی فوٹو۔
اجلاس کے بعد مسلم لیگ ن کے صدر میاں نواز شریف دیگر اپوزیشن رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کررہے ہیں۔ پی پی آئی فوٹو۔

رائے ونڈ: اپوزیشن جماعتوں نے بدھ کے روز جمہوریت کے تحفظ کا عزم اور بروقت انتخابات کا مطالبہ کردیا ہے۔

حزب اختلاف کی جماعتوں کے رائے ونڈ میں ہونے والے اجلاس میں جمہوریت کو پٹری سے اتارنے کی کوئی سازش کامیاب نہ ہونے دینے کا عزم کیا گیا۔

اجلاس میں شریک تمام جماعتوں اور رہنماؤں نے بروقت انتخابات کے انعقاد کا مطالبہ کیا اور عام انتخابات کا التوا کسی صورت برداشت نہ کرنے کا اعلان کیا۔

اجلاس میں ہر حال میں آئین اور قانون کی حکمرانی کا عزم بھی کیا گیا۔

اس سے قبل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے میاں نواز شریف نے کہا کہ ان کی جماعت اقتدار کے لئے نہیں بلکہ جمہوریت کے لئے سرگرم ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ کسی کو جمہوریت پر شب خون مارنے کی اجازت نہیں دی جائے گی جبکہ عوام جمہوریت کے تحفظ کے لئے ڈٹ گئے ہیں۔

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ اگر پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) چارٹر آف ڈیموکریسی پر عمل کرتی تو حالات مختلف ہوتے۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ صورت حال حکومت کی ناکامی کا ثبوت ہے۔

جمیعت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ تمام جماعتیں کسی بھی غیر آئینی اقدام کیخلاف بھرپور مزاحمت کریں گی۔

انہوں نے کہا کہ حکومت اب عام انتخابات میں تاخیر کے بجائے ان کے انعقاد کا  فوری اعلان کرے۔

امیر جماعت اسلامی سید منور حسن کے مطابق، غیر جمہوری قوتوں کو کوئی موقع فراہم نہیں کرنا چاہیئے۔

پختونخواہ ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی کا کہنا تھا کہ سیاست میں 'مسخروں' کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔۔

کانفرنس میں طلال اکبر بگٹی، محمود خان اچکزئی، حامد ناصر چٹھہ، ہارون اختر، غلام مصطفی کھر سمیت اہم رہنماؤں نے شرکت کی۔

اس حصے سے مزید

سرحد پار سے عسکریت پسندوں کا حملہ، سیکورٹی اہلکار ہلاک

ترجمان فرنٹیئر کور کے مطابق ستر سے زائد دہشت گرد پاکستانی سرحد بلوچستان کے ضلع سیف اللہ میں داخل ہوئے۔

اسمبلی کی تحلیل کا کوئی خطرہ نہیں، اسپیکر قومی اسمبلی

ایاز صادق نے کہا کہ عجلت میں پی ٹی آئی کے اراکین اسمبلی کے استعفے قبول نہیں کیئے جائیں گے۔

ماڈل ٹاؤن ہلاکتیں: مقدمے کے احکامات عدالت میں چیلنج

وفاقی وزراء نےخواجہ سعد رفیق، عابد شیرعلی اور پرویز رشید نے اندراج مقدمے کے احکامات کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (2)

Israr Muhammad
16 جنوری, 2013 20:51
شیح الاسلام کے مارچ کےحوالے سے عدالت اعظمۂ کی وضاحت کے بعد سپریم کورٹ کے وزیراعظم کے بارے حکم اور مارچ کے ربط حوالے سے جو شکوک وشبہات پیدا هوگئے تھے اب حتم هو چکے هیں اور آج تمام سیاسی جماعتوں کا ایک واضح اور مشترکہ موقف اس بات کی دلیل هے کۂ تمام پاکستانی انتخابات کے زریعے تبدیلی چاہتے هیں کسی دوسرے طریقے سے نہیں اور یۂ طے هوجکی هے کۂ پاکستان کے سیاسی قوتیں اور جمہوریت کا تسلسل چاہتے هیں البتہ ایک اور طرف سے بھی وضاحت لازمی هے تاکہ لوگوں کے دلوں انکے بارے میں جو خدشات هیں وه دور هو جائیں
Israr Muhammad
16 جنوری, 2013 20:54
شیح الاسلام کے مارچ کےحوالے سے عدالت اعظمۂ کی وضاحت کے بعد سپریم کورٹ کے وزیراعظم کے بارے حکم اور مارچ کے ربط حوالے سے جو شکوک وشبہات پیدا هوگئے تھے اب حتم هو چکے هیں اور آج تمام سیاسی جماعتوں کا ایک واضح اور مشترکہ موقف اس بات کی دلیل هےکۂ تمام پاکستانی انتخابات اور ووٹ کے زریعے تبدیلی چاہتے هیںکسی دوسرے طریقے سے نہیں اور یۂ طے هے کۂ پاکستان کے سیاسی قوتیں اور عوام جمہوریت کا تسلسل چاہتے هیں البتہ ایک اور طرف سے بھی وضاحت لازمی هے تاکہ لوگوں کے دلوں انکے بارے میں جو خدشات هیں وه دور هو جائیں
سروے
مقبول ترین
قلم کار

کچھ جوابات

وزیر اعظم کا اعلان کردہ کمیشن مسئلے سلجھانے کے بجائے زیادہ الجھا دے گا۔

بڑھتی مایوسی

مایوسی تب اور بڑھتی ہے جب عوام دیکھتے ہیں کہ حکمران عوامی پیسے سے اپنے کام چلانے میں شرم بھی محسوس نہیں کرتے۔

بلاگ

پاکستان ایک "ساس" کی نظر سے

68 سالہ جین والر کو پاکستان بہت پسند آیا، اتنا زیادہ کہ بقول ان کے مجھے پاکستان سے محبت ہوگئی ہے۔

مووی ریویو: گارڈینز آف گیلیکسی ایک ویژول ٹریٹ ہے

جو یادوں کے ایسے دور میں لے جاتی ہے جب ایکشن کے بجائے مزاح کسی کامک کا سرمایہ اور اسے بیان کرنے کا ذریعہ ہوا کرتا تھا۔

اب مارشل لاء کیوں ناممکن؟

ایوب، ضیاء اور مشرّف، تینوں ہی مغربی قوّتوں کے جغرافیائی سیاسی کھیلوں میں اسٹریٹجک کردار کے بدلے جیتے تھے۔

عمران خان کے نام کھلا خط

گزشتہ ایک ہفتے کے واقعات پی ٹی آئی ورکرز کی تمام امیدوں اور توقعات کو بچکانہ، سادہ لوح اور غلط ثابت کر رہے ہیں۔