24 جولائ, 2014 | 25 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

ہندوستانِ، پاکستان کشیدگی کم کرنے پر متفق

دونوں ممالک کے سینیئر فوجی حکام کے درمیان کشیدگی کو کم کرنے پر مفاہمت ہوگئی ہے، ترجمان انڈین فوج۔ اے پی فوٹو۔
دونوں ممالک کے سینیئر فوجی حکام کے درمیان کشیدگی کو کم کرنے پر مفاہمت ہوگئی ہے، ترجمان انڈین فوج۔ اے پی فوٹو۔

نئی دہلی: ہندوستانی فوج اور پاکستان کے درمیان کشمیر میں ہونے والی حالیہ کشیدگی کے بعد بڑھنے والی کشیدگی کو کم کرنے پر مفاہمت ہوگئی ہے۔

اے یف پی کی ایک رپورٹ کے مطابق، انڈین فوج کے ترجمان جگدیپ داہیہ نے کہا ہے کہ 'دونوں ممالک کی ملٹری آپریشنز کے ڈائریکٹر جنرلز کے درمیان کشیدگی کو کم کرنے پر مفاہمت ہوگئی ہے'

داہیہ کے مطابق، دونوں ممالک کے سینیئر فوجی حکام کے درمیان ٹیلی فون پر دس منٹ گفتگو ہوئی جس میں یہ معاہدہ طے پایا۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ گفتگو صبح دس بجے ہوئی جبکہ ڈی جی ایم او پاکستان کا کہنا ہے کہ فائر بندی نہ توڑنے کے سخت احکامات جاری کردیئے گئے ہیں۔

داہیہ نے بھی ان ہی کی بات دہراتے ہوئے کہا کہ ان کی جانب سے بھی فائر بندی کی خلاف ورزی نہیں کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ان کی جانب سے کبھی بھی اس کی خلاف ورزی نہیں ہوئی، انہوں نے ہمیشہ جوابی کارروائی کی ہے۔

ترجمان نے ہندوستان کے ڈی جی ایم او جنرل ونود بھاٹیہ اور انکے پاکستان ہم منصب جنرل اشفاق ندیم کے درمیان ہوئی اس گفتگو کی مزید معلومات فراہم نہیں کیں۔

اس حصے سے مزید

بلوچستان: ڈھائی سال میں پہلا پولیو کیس

یونیسیف کے مطابق پولیو وائرس کا شکار 18 ماہ کی بچی کا خاندان رواں سال کراچی سے قلعہ عبداللہ منتقل ہوا تھا۔

وفاقی حکومت نے آزادی تقریبات کا اعلان کر دیا

تقریبات کا اعلان کرتے ہوئے سعد رفیق نے تحریک انصاف کے مارچ کے حوالے سے سوال کا جواب دینے سے معذرت کر لی۔

گجرات: زمیندار نے دس سالہ بچے کے دونوں بازو کاٹ دیے

معمولی رنجش پر زمیندار کے بیٹے نے تبسم شہزاد کو موٹر پر دھکا دیدیا جس کی زد میں آکر بچے کے دونوں بازو جسم سے جدا ہوگئے


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

بلاگ

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

شکایتوں کا بن جو میرا دیس ہے

شکایتی ٹٹو زنده قوم کی نشانی ہوتے ہیں۔ مستقل شکایت کرتے رہنا اب ہماری پہچان بن چکا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-