03 ستمبر, 2014 | 7 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

قادری کے مطالبات غیر آئینی ہیں، کائرہ

اے پی پی فوٹو

اسلام آباد :  وفاقی وزیر اطلاعات قمر زمان کائرہ نے منہاج القران کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری کے مطالبات کو غیر آئینی قرار دیدیا ہے۔

 ڈان نیوز کے مطابق بدھ کے روز اسلام آباد میں  وفاقی وزیر اطلاعات قمر زمان کائرہ نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ  سیاسی قوتوں نے آئین میں متفقہ ترمیم کے ذریعے نگران حکومت کے قیام کا پرانا طریقہ کار ختم کیا ہے۔

 وزیر اطلاعات نے کہا کہ سیاسی جماعتیں انتخابات کے انعقاد پر متفق ہیں۔ طاہر القادری عوام کو بہکانے کیلئے ہتکھنڈے استعمال نہ کرے۔

 انہوں نے کہا کہ پاکستان کو کسی بھولو پہلوان کی نہیں بلکہ ایک ذہین چیف الیکشن کمشنر کی ضرورت ہے۔

 قمر زمان کائرہ  نے کہا کہ کسی کی خواہش پر ادارے ختم نہیں کرسکتے،  ڈاکٹر قادری نے خواتین اور بچوں کو ڈھال بنایا ہوا ہے۔

 وفاقی وزیر نے کہا کہ لانگ مارچ سے آئین و قانون کے مطابق نمٹا جائےگا۔

 کائرہ کا کہنا تھا کہ حکومت نے تو طالبان کے ساتھ بھی مذاکرات سے انکار نہیں کیا طاہر القادری آئین کے دائرے میں رہیں تو ان سے بات ہوسکتی ہے۔

  وفاقی وزیر نے کہا حکومت اپنی مدت پوری کرے گی انتخابات 5 اور 15 مئی کے درمیان منعقد ہوں گے۔

اس حصے سے مزید

مناسب خوراک کی کمی اور تھکاوٹ انقلابیوں پر اثرانداز ہونے لگی

یہ بدقسمتی ہے کہ یہ احتجاجی مظاہرین اس طرح کے مضر صحت ماحول میں رہنے پر مجبور ہیں۔

برطانیہ کا شہریوں کو پاکستان کے سفر پر انتباہ

سفارت کار، سرکاری وفود اور شہریپاکستان کے اپنے سفر پر نظرثانی کریں، دفتر خارجہ و کامن ویلتھ۔

آصف زرداری ملکی سیاسی بحران کے حل میں کردار ادا کرنے کے خواہشمند

آصف علی زرداری نے وفاقی دارالحکومت میں قیام کرکے صورتحال کو حل کرنے کے لیے کردار ادا کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (1)

Israr Muhammad
16 جنوری, 2013 18:02
موجود خالات میں تمام سیاسی جماعتوں کااس وقت ایک اور دوٹوک موقف اپنانا نہایت هی خوش آئند هے آج کا دن پاکستان کی سیاسی تاریخی کاایک اہم موڑ هےاوراس کیلئےهم تمام سیاسی لیڈروں اورسیول سوسائٹی کے رہنماؤں اورکارکنوں اور میڈیاکو خراج عقیدت اور سلام پیش کرتےهیں اسکےبعد بھی اگرکوئی اپنی هٹ درمی پر قائم رہتا هے تو ؟
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماڈل ٹاؤن کیس: کچھ حماقتیں

حکمرانوں کے منع کرنے پر پولیس کی جانب سے مقتولین کی ایف آئی آر درج کرنے میں تاخیر کی وجہ سے معاملہ مزید خراب ہوا۔

بیوروکریٹس کی یونین

ذاتی مفادات کے لیے چوری چھپے سیاسی ہونے سے زیادہ بہتر ہے کہ ریاست کے وسیع تر مفاد کے لیے کھلے عام سیاسی ہوا جائے۔

بلاگ

ڈرامہ ریویو: 'لا'...الجھتے رشتوں کی کہانی

ڈرامہ پرفیکٹ نہیں بھی تھا تو بھی یہ ان ڈراموں میں سے ایک ضرور تھا جسے دیکھ کر بیزاری کا احساس نہیں ہوتا۔

مووی ریویو : 'راجہ نٹور لال' سٹیریو ٹائپنگ کا شکار ہوگئی

یہ فلم نہ تو مزاح پر پوری اترتی ہے اور نہ ہی اس میں اتنا تھرلر ہے جو اسے ذہن میں نقش کر دے۔

سستا خون: براۓ انقلاب

"انقلاب" سیاست چمکانے کے لیے ایک خوشنما لفظ بن چکا ہے، اور اسے مزید چمکانے کے لیے کارکنوں کا سستا خون بھی دستیاب ہے۔

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔