02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

ترکی کی کرد باغیوں کو محفوظ انخلا کی ضمانت

ترکی کے وزیر اعظم طیب اردگان پارلیمنٹ سے خطاب کر رہے ہیں۔ فوٹو اے ایف پی۔۔۔

انقرہ: ترکی کے وزیر اعظم رجب طیب اردگان ان کی حکومت تین دہائیوں سے کرد باغیوں کے ساتھ جاری تنازع کو حل کرنے کیلیے پرعزم ہیں اور اگر باغی ملک چھوڑ کر جانا چاہتے ہیں تو ہم گارنٹی دیتے ہیں کہ انہیں انخلا محفوظ راستہ فراہم کیا جائے گا۔

اردگان نے پارلیمنٹ میں حکمران جماعت کے رہنماؤں سے خطاب میں کردستان ورکرز پارٹی(پی کے کے) کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اگر وہ مخلص اور سچے ہیں تو ہتھیار پھینک دیں۔

انہوں نے کہا کہ اگر آپ اس ملک میں نہیں رہنا چاہتے تو آپ جس ملک بھی جانا چاہیں جا سکتے ہیں، آپ کو اس کی مکمل آزادی ہے، ہم آپ کو ضمانت دیتے ہیں کہ ہم اپنی پوری کوشش کریں گے کہ جو کچھ ہماری سرحدوں پر ماضی میں ہو چکا ہے وہ دوبارہ نہ ہو۔

ترکی، ایران، شام اور عراق کے سرحدی علاقوں میں کرد اقلیت موجود ہے۔

ماضی میں جب پی کے کے نے شمالی عراق کی جانب جانے کوشش کی تھی تو اس وقت ان کا ترک سیکیورٹی فورسز سے تصادم ہوا تھا، شمالی عراق میں پی کے کے محفوظ ٹھکانے موجود ہیں۔

یاد رہے کہ حال ہی میں ترک خفیہ ادارے اور جیل میں قید کرد لیڈر عبداللہ اوجلان کے درمیان مذاکرات ہوئے تھے جس کا مقصد باغیوں کو غیر مسلح کرنا تھا۔

ترک میڈیا کا ماننا ہے کہ ان مذاکرات سے تقریباً تین دہائیوں سے جاری تنازع کو ختم کرنے میں مدد ملے گی جس میں اندازاً 45 ہزار سےزائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

اردگان کا یہ بیان ایک ایسے موقع پر منظر عام پر آیا ہے کہ جب سیکیورٹی ذرائع کے مطابق شام کی سرحد کے قریب کرد باغیوں اور ترک سیکیورٹی فورسز کے درمیان تصادم میں دو خواتین سمیت 6 باغی ہلاک ہو چکے ہیں۔

ترک وزیر اعظم نے کہا کہ ہم اپنے کرد بھائیوں کا کھلے دل سے استقبال کرتے ہیں، ہم نے ان پر نہیں بلکہ دہشت گردوں پر بمباری کی تھی۔

واضح رہے کہ کردستان ورکرز پارٹی کو ترکی سمیت عالمی برادری کے زیادہ تر ملکوں نے دہشت گرد گروہ قرار دیا ہوا ہے۔

اس حصے سے مزید

اقوام متحدہ کافلسطینی زمینوں پراسرائیلی قبضے پر اظہار تشویش

بان کی مون نے بیت اللحم کے ایک ہزار ایکڑ رقبے کو خودساختہ" ریاستی زمین" قرار دینے پر تشویش کا اظہار کیا ہے

عراق: داعش کے ہاتھوں ایک ماہ میں 1420 لوگ ہلاک

اقوام متحدہ کے ڈیٹا کے مطابق عراق میں تشدد کے واقعات میں جولائی میں 1737 جبکہ جون میں 2400 لوگ ہلاک ہوئے ہیں۔

اہم عراقی قصبے سے آئی ایس کا محاصرہ ختم

یہ آئی ایس کے خلاف عراقی حکومت کی سب سے بڑی کامیابی ہے جو رواں سال جون سے پانچ صوبوں کے بڑے حصوں پر قابض تھی۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماڈل ٹاؤن کیس: کچھ حماقتیں

حکمرانوں کے منع کرنے پر پولیس کی جانب سے مقتولین کی ایف آئی آر درج کرنے میں تاخیر کی وجہ سے معاملہ مزید خراب ہوا۔

بیوروکریٹس کی یونین

ذاتی مفادات کے لیے چوری چھپے سیاسی ہونے سے زیادہ بہتر ہے کہ ریاست کے وسیع تر مفاد کے لیے کھلے عام سیاسی ہوا جائے۔

بلاگ

سستا خون: براۓ انقلاب

"انقلاب" سیاست چمکانے کے لیے ایک خوشنما لفظ بن چکا ہے، اور اسے مزید چمکانے کے لیے کارکنوں کا سستا خون بھی دستیاب ہے۔

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔