02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

پی ٹی آئی، جماعت اسلامی ن لیگ کے دھرنے میں شامل

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان۔ فوٹو اے ایف پی
چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان۔ فوٹو اے ایف پی

لاہور:جماعت اسلامی (جے آئی)، مسلم لیگ نون اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے دھرنے کیلئے اکھٹے بیٹھنے پر اتفاق کرلیا ہے۔

اتوار کو لاہور میں ہونے والی قومی کانفرنس میں مسلم لیگ نون، پی ٹی آئی، جماعت اسلامی اور دیگر سیاسی و مذہبی جماعتوں کے قائدین نے شرکت کی۔

کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسلم لیگ نون کے رہنماء خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ جماعت اسلامی اور مسلم لیگ نون کے راستے اور منزل ایک ہے۔

انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کی آئیڈیل سیاسی بصیرت سے تمام جماعتوں کو سیکھنا چاہیے۔

جماعت اسلامی کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے نون لیگ کے دھرنے کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ ان کی جماعت اس میں بھرپور شرکت کرے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ طاہر القادری اور حکومت کے درمیان مذاکرات کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے۔

اس موقع پر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان نے کہا کہ جتنا پیسہ اس قوم سے لوٹا گیا ہے اس کی مثال تاریخ میں نہیں ملتی۔

ان کا کہنا تھا کہ کرپشن کرنے کیلئے تمام کرپٹ جماعتیں حکومت کی اتحادی بن گئی ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ ملک میں اصل جمہوریت لانے کے لیے مورثی سیاست کو ختم کرنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کی مضبوطی کے لئے جو بھی دھرنا دے گا ان کی پارٹی اس کا ساتھ دے گی۔

پی ٹی آئی کے چیرمین کا کہنا تھا کہ اگر نگران وزیراعظم ان کی مشاورت سے نہ بنا تو ملک گیر احتجاج کیا جائے گا۔

اس حصے سے مزید

نام نہاد لیڈر ملک کو میدانِ جنگ بنانا چاہتے ہیں، شہباز شریف

وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ کچھ نام نہاد لیڈر آئین و قانون کی دھجیاں اڑاتے ہوئے ریاستی اداروں کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔

'حکومت اور مظاہرین کی ہٹ دھرمی سے جمہوریت کو نقصان ہوگا'

جماعت اسلامی کے جنرل سیکرٹری لیاقت بلوچ کا کہنا ہے کہ قوم کو سیاسی بحران پر تشویش ہے اور وہ مسئلے کا فوری حل چاہتی ہے۔

پی ٹی آئی اور پی اے ٹی 80 سےزائد کارکنان گرفتار

پنجاب کے مختلف شہروں میں اسلام آباد کے مظاہرین پر مبینہ تشدد کے خلاف ریلیاں نکالی گئیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔