18 اپريل, 2014 | 17 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

پی ٹی آئی، جماعت اسلامی ن لیگ کے دھرنے میں شامل

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان۔ فوٹو اے ایف پی
چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان۔ فوٹو اے ایف پی

لاہور:جماعت اسلامی (جے آئی)، مسلم لیگ نون اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے دھرنے کیلئے اکھٹے بیٹھنے پر اتفاق کرلیا ہے۔

اتوار کو لاہور میں ہونے والی قومی کانفرنس میں مسلم لیگ نون، پی ٹی آئی، جماعت اسلامی اور دیگر سیاسی و مذہبی جماعتوں کے قائدین نے شرکت کی۔

کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسلم لیگ نون کے رہنماء خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ جماعت اسلامی اور مسلم لیگ نون کے راستے اور منزل ایک ہے۔

انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کی آئیڈیل سیاسی بصیرت سے تمام جماعتوں کو سیکھنا چاہیے۔

جماعت اسلامی کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے نون لیگ کے دھرنے کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ ان کی جماعت اس میں بھرپور شرکت کرے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ طاہر القادری اور حکومت کے درمیان مذاکرات کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے۔

اس موقع پر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان نے کہا کہ جتنا پیسہ اس قوم سے لوٹا گیا ہے اس کی مثال تاریخ میں نہیں ملتی۔

ان کا کہنا تھا کہ کرپشن کرنے کیلئے تمام کرپٹ جماعتیں حکومت کی اتحادی بن گئی ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ ملک میں اصل جمہوریت لانے کے لیے مورثی سیاست کو ختم کرنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کی مضبوطی کے لئے جو بھی دھرنا دے گا ان کی پارٹی اس کا ساتھ دے گی۔

پی ٹی آئی کے چیرمین کا کہنا تھا کہ اگر نگران وزیراعظم ان کی مشاورت سے نہ بنا تو ملک گیر احتجاج کیا جائے گا۔

اس حصے سے مزید

وزیر اعظم کیخلاف توہینِ عدالت کی درخواست مسترد

لاہور ہائی کورٹ نے اپنے فیصلے میں مؤقف اختیار کیا کہ وزیرِ اعظم کو آئین کے تحت استثنیٰ حاصل ہے۔

ڈیرہ غازی خان: ٹریفک حادثے میں 14 ہلاکتیں

یہ واقعہ ڈیرہ غازی خان کے علاقے کوٹ چٹھہ میں اس وقت پیش آیا جب ایک تیز رفتار بس اسٹاپ پر کھڑے لوگوں پر چڑھ گئی۔

خان پور: سکول وین کھائی میں گرنے سے متعدد بچے زخمی

زخمیوں کو فوری طور پر ہسپتال منتقل کیا جارہا ہے جن میں سے پانچ کی حالت تشویشناک ہے: ریسکیو ذرائع


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

ریویو: بھوت ناتھ - ریٹرنز

مرکزی کرداروں سے لیکر سپورٹنگ ایکٹرز سب اپنی جگہ کمال کے رہے اور جس فلم میں بگ بی ہوں اس میں چار چاند تو لگ ہی جاتے ہیں۔

میانداد کا لازوال چھکا

جب بھی کوئی بیٹسمین مقابلے کی آخری گیند پر اپنی ٹیم کو چھکے کے ذریعے جتواتا ہے تو سب کو شارجہ ہی یاد آتا ہے۔

جمہوریت، سیکولر ازم اور مذہبی سیاسی جماعتیں

مذہب کے نام پر کوئی متفقہ سیاسی نظام بن ہی نہیں سکتا کیونکہ مذاہب کے درجنوں دھڑے کسی ایک ایشو پر متفق نہیں ہو سکتے۔

یکسانیت اور رنگا رنگی

یکسانیت جانی پہچانی بلکہ اطمینان بخش بھی ہوسکتی ہے، لیکن اس کا مطلب ہے چیلنج سے بچنا، جس کے بغیر کامیابی ممکن نہیں۔