18 ستمبر, 2014 | 22 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

لائن آف کنٹرول پر بس سروس،تجارت دوبارہ شروع

۔۔۔۔۔۔۔۔۔اے ایف پی فوٹو
۔۔۔۔۔۔۔۔۔اے ایف پی فوٹو

سرینگر: ہندوستان کی جانب سے سرحدی حدود کی خلاف ورزی کے بعد بند کی جانے والی پاک ہندوستان بس سروس کو بحال کر دیا گیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ پیر کو پاکستان سے 64 مسافروں نے جبکہ ضلع پونچھ، راولاکوٹ سے کشمیر میں (لائن آف کنٹرول) کنٹرول لائن کو 84 مسافروں نے عبور کیا۔

یہ سروس کنٹرول لائن پر حالیہ کشیدگی کی وجہ سے 17 روز تک معطل رہنے کے بعد دو طرفہ کوششوں سے آج بحال ہوگئی۔

بس سروس بحال ہونے پر لوگوں نے خوشی کا اظہار کیا ہے، ان کا کہنا ہے کہ اس طرح کے واقعات سے دونوں طرف کے عوام کو پریشانیاں اٹھانا پڑتی ہیں۔

واضح رہے کہ لائن آف کنٹرول پر ہونے والی جھڑپوں سے ہلاکتوں کے بعد یہ سروس بند کردی گئی تھی تاہم دونوں اطراف کے ڈائریکٹر جنرل ملٹری آپریشنز کے ٹیلی فونک رابطوں میں ایل او سی پر کشیدگی کم کرنے پر اتفاق ہوا تھا۔

لائن آف کنٹرول پر تجارت منگل سے دوبارہ شروع ہوگی اس حوالے سے تمام تاجروں کو آگاہ کر دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ ہندوستان کے زیر انتظام کشمیر میں پونچھ راولاکوٹ سے پار کنٹرول لائن بس سروس کا آغاز 2005 میں ہوا تھا، جو کہ خطے میں تقسیم خاندانوں کے لیے ایک دوسرے سے ملنے کا ایک ذریعہ ہے.

اس حصے سے مزید

سیلاب سے ہلاکتیں، لواحقین کیلئے 10 لاکھ روپے امداد کا اعلان

وزیراعظم نے اسلام آبادتامظفرآباد ٹرین چلانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ وہ آزاد کشمیر میں سیاحت کو فروغ دیں گے۔

ملک بھر میں طوفانی بارشیں، ہلاکتیں 137 ہوگئیں

دو روز میں ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 137 تک جاپہنچی ہے جبکہ بڑی تعداد میں افراد زخمی ہیں۔

ایل و سی کےقریب مٹی کا تودہ گرنے سے 3 اہلکار ہلاک

اس حادثے میں زخمی ہونے والے تین فوجی اہلکاروں کو فوجی ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے اور انہیں طبی امداد دی جا رہی ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔

کریچر - تھری ڈی: گوڈزیلا یا ڈیوی جونز کا کزن؟

یہ کہنا غلط نہ ہوگا بپاشا ہارر تھرلرز تک محدود ہوگئی ہیں جبکہ عمران عبّاس نے انکے گرد چکر کاٹنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔