02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

بجلی کا بڑا بریک ڈاؤن: ملک تاریکی میں ڈوب گیا

بجلی نہ ہونے کے باعث ایک ہجام موم بتی کی روشنی میں بال کاٹنے پر مجبور ہے۔ فائل فوٹو اے ایف پی۔۔۔

کراچی: نیشنل پاور کنٹرول سینٹر کے سسٹم میں خرابی کے باعث راولپنڈی اسلام آباد سمیت ملک کے کئی شہروں کو بجلی کی فراہمی معطل ہو گئی ہے اور نصف سے زائد ملک تاریکی میں ڈوب گیا۔

ڈان نیوز ٹی وی کے مطابق نیشنل پاور کنٹرول سسٹم میں خرابی کے باعث کراچی، لاہور، راولپنڈی، گوجرانوالہ، ملتان، کوئٹہ، پشاور اور دیگر چھوٹے بڑے شہر تاریکی میں ڈوب گئے ہیں جبکہ منگلا اور تربیلا پاور ہاؤس بھی ٹرپ کر گئے ہیں۔

نیشنل گرڈ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ بارہ سو میگا واٹ کے پلانٹ میں خرابی کی وجہ سے پانچ سو کے وی کی بیشتر لائنیں بند ہو گئی ہیں، ان کا کہنا تھا کہ فنی خرابی کو جلد سےجلد ٹھیک کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

وزارت پانی و بجلی کے حکام کے مطابق حب کو پور پلانٹ کا1200 میگا واٹ بجلی کی فراہمی کا سسٹم ٹرپ کر گیا تھا۔

اس حوالے سے ان کا مزید کہنا تھا کہ اعلیٰ افسران تکنیکی خرابی کا جائزہ لے رہے ہیں جبکہ حبکو پاور پلانٹ کی خرابی کو ہنگامی بنیادوں پر ٹھیک کرنے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ تمام شہروں میں بجلی بحال کرنے میں چند گھنٹے لگیں گے۔

آئیسکو حکام کا کہنا ہے کہ بجلی بحالی میں دو سے ڈھائی گھنٹے لگیں گے۔

بجلی کے بریک ڈاؤن سے کراچی میں 36 گرڈ اسٹیشن ٹرپ کر گئے ہیں اور شہر کا 70 فیصد سے زائد حصہ تاریکی میں ڈوب گیا ہے۔

شہر قائد کے متاثرہ علاقوں میں نارتھ ناظم آباد، ناظم آباد، لیاقت آباد، فیڈرل بی ایریا، نیو کراچی، نارتھ کراچی، گلستان جوہر، سلطان آباد، گلشن معمار، ابوالحسن اصفہانی روڈ، گلشن اقبال، سہراب گوٹھ، پی آئی بی کالونی، تین ہٹی، لی مارکیٹ، ڈیفنس، ملیر اور شاہ فیصل کالونی سمیت کئی علاقے شامل ہیں جبکہ کراچی ایئرپورٹ بھی اندھیرے میں ڈوب گیا۔

کے ای ایس سی حکام کے مطابق ٹرانسمیشن لائن ٹرپ ہونے کی وجہ سے بجلی کا بریک ڈاؤن ہوا ہے اور ہنگامی بنیادوں پر اسے درست کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

بجلی کے بریک ڈاؤن سے پنجاب اور خیبر پختونخوا کے متعدد شہروں کو بھی بجلی کی فراہمی معطل ہو گئی ہے۔

مزید براں جامشورو اور گڈو تھرمل پاور میں  فنی خرابی کے باعث حیدرآباد، سکھر، دادو، خیرپور، جامشورو، گھوٹکی سمیت کئی شہر اور اضلاع تاریکی میں ڈوب گئے ہیں۔

دوسری جانب کوئٹہ سمیت بلوچستان کے سولہ اضلاع بجلی کا بڑا بریک ڈاؤن ہونے کی وجہ سے تاریکی میں ڈوب گئے۔

کیسکو حکام کے مطابق اب تک یہ پتہ نہیں چل سکا کہ ٹرانسمیشن لائن میں کوئی تکنیکی خرابی آئی ہے یا پھر ٹرانسمیشن لائن کو ماضی کی طرح بم دھماکوں سےاڑایا گیا۔

کیسکو حکام کے مطابق اس وقت یہ کہنا قبل از وقت ہے کہ ٹرانسمینش لائن میں کہاں خرابی آئی ہے۔

وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف نے بریک ڈاؤن کا نوٹس لیتے ہوئے فوری طور پر رپورٹ طلب کر لی ہے۔

وزیر اعظم کے ترجمان کی جانب سے جاری ایک بیان کے مطابق وزیر اعظم اس معاملے کی مانیٹرنگ کر رہے ہیں اور انہوں نے ہدایت کی ہے کہ جلد از جلد بجلی کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔

اس حصے سے مزید

بے گھر افراد کے لیے 1.5 ارب روپے کے فنڈز کی درخواست

فاٹا ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کا کہنا ہے کہ فنڈز کے اجراء میں تاخیر سے نقد امداد کی تقسیم کا پروگرام معطل ہوسکتا ہے۔

سیاسی معاملات میں فوج کی مدد حاصل نہیں کریں گے، عمران خان

دوسری جانب پاک فوج نے بھی کہا ہے کہ وہ وجودہ سیاسی بحران کے پیچھے نہیں ہے۔

کسی کے کندھوں پر چڑھ کر اقتدار میں نہیں آئیں گے، عمران خان

حکومت استعفے کے علاوہ سب کچھ ماننے کے لیے تیار ہوگئی مگر نواز شریف کے استعفے کے بغیر کسی صورت واپس نہیں جاﺅں گا۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (3)

طویل بریک ڈاؤن کے بعد بجلی کی بحالی شروع – PKNewstimes
25 فروری, 2013 06:42
[...] گیارہ بجکر پینتالیس منٹ پر ملک کے مختلف علاقوں میں بریک ڈاؤن شروع [...]
Israr Muhammad Khan
26 فروری, 2013 18:26
بجلی کے اس سے بریک ڈاؤن کے عادی هم تو گزشتہ 11سال سے هیں همارے ضلع صوابی میں جہاں تربیلا ڈیم بھی هے 22 گھنٹے لوڈشیڈنگ معمول کی بات هے اس وجہ سے هم کو تو فرق محسوس نہیں هوا اس لئے تبصرۂ نہیں کرونگا البتہ هماری فریاد اگر کسی کو جائز لگے تو تبصرہ اور مدد کا طلب گآر هوں
Israr Muhammad Khan
27 فروری, 2013 13:41
ملک میں گزشتہ دنوں بجلی کا جو بریک ڈاؤن هوا هم صوابی‎ ‎‏(جہاں تربیلۂ ڈیم هے) کے لوگ گزشتہ 10/12سال سے اسطرح کے بریک ڈاؤن کے لوڈشیڈنگ کی صورت میں عادی هوچکے هیں 20/22گھنٹے لوڈشیڈنگ تو عام بات هےاس وجہ سے همیں بریک ڈاؤن کا معلوم هی نہیں تھا اخبار سے معلوم هوا 2008کے‎ ‎انتخابات میں همارے ساتھ وعدہ هوا تھا که هم بجلی کاسوئچ یہاں لیکر آئنگے اور لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کرینگے اور مفت بجلی کا بھی ذکر هوا تھا مگر وه وعدہ صرف وعدہ تھا پانچ سال حکومت کرنے بعد اب اس وعدہ کی تجدید هوگی اور شاید آئندہ یه لوگ وه"وعدہ" پورا کرسکیں‎ ‎‏"همارے پشتو کے ایک شعر کا مطلب هے که تم نے بهار لانے کا وعدہ کیا تھا مگر‎ ‎تم نه بہار لے آئے نۂ پھول تم جھوٹے تم جھوٹے هو"؟‎ ‎ویسے بھی ملک میں دهرنوں کا‎ ‎رواج نکل آیا هےهو سکتا هےکۂ هم بھی کسی دن صوابی کو لوڈشیڈنگ سے نجات کیلئے دھرنا دیں
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔