24 اگست, 2014 | 27 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

بجلی کی فراہمی جزوی طور پر بحال

فائل تصویر --.
فائل تصویر --.

لاہور: ملک میں پیر کی شام تک تقریباً تیس فیصد علاقے ایسے تھے جہاں شام کو دیر تک بجلی غائب رہی۔ وزارت پانی و بجلی کے ذرائع کے مطابق، سندھ، اندرونی پنجاب اور بلوچستان میں ابھی بھی کچھ علاقوں میں بجلی بحال ہونا باقی ہے۔

کل ان علاقوں میں بھی لمبے وقت تک لوڈ شیڈنگ کی گئی جہاں جہاں بجلی بحال کردی گئی تھی۔

پانی اور بجلی کے وزیر اور وزارت کے ترجمان سے جب اس معاملے پر جواب کے لیے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کسی فون کال اور میسج کا جواب نہیں دیا۔

شام میں جنریشن 6700 میگاواٹ تھی جبکہ اتوار کی شام کو جنریشن 8500 میگاواٹ تھی۔ نیشنل ٹرانسمیشن اور ڈسپیچ کمپنی (این ٹی ڈی سی) کے ایک عہدیدار نے کہا کہ بجلی کی پلانگ کرنے والے افسران جنریشن کے اعداد و شمار پر کام کرتے رہے۔

'این ٹی ڈی سی کو ان بجلی بحال ہونے والے علاقوں سے لوڈشیڈنگ کرکے دوسرے گرڈوں پر دینی پڑی تاکہ ان علاقوں کو باضابطہ طور پر بجلی بحال ہونے والے علاقوں کی گنتی میں شامل کیا جاسکے۔ این ٹی ڈی سی کے عہدیدار نے کہا کہ شام تک ستر فیصد علاقوں میں 'سرکاری طور' پر بجلی بحال کردی گئی تھی، اب آگر وہاں لوڈشیڈنگ کی گئی یا نہیں کی گئی یہ الگ مسئلہ ہے۔

پاکستان الیکٹرک پاور کمپنی کے سابق منیجنگ ڈائریکٹر، بصیر احمد نے اتوار کو ہونے والے بجلی کے سانحے کو نااہلی قرار دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ حقیقت یہ ہے کہ نظام بیوروکریٹس چلا رہے ہیں جو پیداوار، ٹرانسمیشن اور تقسیم کی تکنیکی سے واقف نہیں ہیں اور یہی وجہ ہے کہ نظام بدحالی کی طرف جارہا ہے۔

دریں اثناء اچ پاور کے ترجمان نے اس بات کو ماننے سے انکار کیا کہ ان کے پلانٹ میں خرابی کی وجہ سے تمام مسئلہ کھڑا ہوا۔ انہوں نے ایسی رپاورٹوں کو غلط قرار دیا۔

اس حصے سے مزید

مدت پوری کرنا پارلیمنٹ کا حق ہے، آصف زرداری

سابق صدر نے کہا ہے کہ عمران خان اور طاہر القادری کی رنجشیں مذاکرات سے دور ہو سکتی ہیں، سازشیں سیاست کا حصہ ہوتی ہیں۔

زرداری ۔ نواز ملاقات: وزیراعظم کے استعفیٰ کا مطالبہ مسترد

رائے ونڈ میں ہونے والی اس ملاقات میں دونوں رہنماؤں نے ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال پر مشاورت کی۔

بلوبٹ سمیت ن لیگ کے 18 کارکنوں کی ضمانت قبل از گرفتاری منظور

بلوبٹ نے شاہ محمود قریشی کے گھر پر حملے میں ملوث ہونے کی تردید کی، اور کہا کہ وہ کارکنوں کو روکنے کی کوشش کر رہے تھے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ڈرامے کی آخری قسط

اب اس آخری میلوڈرامہ کا جو بھی انجام ہو- اس نے پاکستانیوں کی آخری ہلکی سی امید کوبھی ریزہ ریزہ کردیا ہے-

پی ٹی آئی کی خالی دھمکیاں

جو دھمکیاں دی جا رہی ہیں، وہ حقیقت سے دور ہیں۔ ایسا کوئی راستہ موجود نہیں، جس سے پارٹی اپنی ان دھمکیوں پر عمل کر سکے۔

بلاگ

سیاست میں شک کی گنجائش

شکوک کے ساتھ ساتھ ان افواہوں کو بھی تقویت مل رہی ہے کہ عمران خان اور طاہرالقادری اصل میں اسٹیبلشمنٹ کے مہرے ہیں۔

پکوان کہانی : شاہی قورمہ

جو اکبر اعظم کے شاہی باورچی خانے کی نگرانی میں راجپوت خانساماؤں کے تجربات کا نتیجہ ہے۔

دفاعی حکمت عملی کے نقصانات

مصباح کے دفاعی انداز کے اثرات ہمارے جارحانہ انداز رکھنے والے بیٹسمینوں پر بھی پڑے ہیں

پاکستان ایک "ساس" کی نظر سے

68 سالہ جین والر کو پاکستان بہت پسند آیا، اتنا زیادہ کہ بقول ان کے مجھے پاکستان سے محبت ہوگئی ہے۔