01 اکتوبر, 2014 | 5 ذوالحجہ, 1435
ڈان نیوز پیپر

عدالت کا 423 کراچی پولیس افسران معطل کرنے کا حکم

۔—فائل فوٹو
۔—فائل فوٹو

کراچی: کراچی بدامنی عمل درآمد کیس کی سماعت کےدوران سپریم کورٹ نے چارسو تیئس پولیس افسران کو معطل کرنے کا حکم دیتے ہوئے آئی جی پولیس فیاض لغاری کو شوکاز نوٹس جاری کردیا ہے۔ کیس کی سماعت کل تک ملتوی کردی گئی۔

جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں قائم لارجر بینچ نے سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں کراچی بدامنی عمل درآمد کیس کی سماعت کی۔

سماعت کے دوران سپرریم کورٹ نے آئی جی سندھ فیاض لغاری پر برہم ہوتے ہوئے کہا کہ محکمہ میں خامیوں اورخرابیوں کے ذمہ  وہ خود ہیں۔

عدالت نے انہیں شوکاز نوٹس جاری کیا۔

عدالت نے کہا کہ سنگین جرائم میں ملوث اہلکار اب بھی ڈیوٹی انجام دے رہے ہیں اور جرائم پیشہ پولیس افسران حساس مقامات پر بھی تعینات ہیں۔

گزشتہ روز ہونے والی سماعت میں سپریم کورٹ میں چیف الیکشن کمیشن کی جانب سے کراچی میں ازسر نو انتخابی حلقہ بندیوں کے حکم پر نظرثانی کی درخواست دائر کردی گئی تھی جبکہ عدالت نے متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کی جانب سے دونوں درخواستیں واپس لینے پر کیس خارج کر دیا تھا۔

جسٹس انور ظہیر نے کہا تھا کہ کراچی میں ٹریفک جام کے دوران شہریوں سے لوٹ مار معمول بن چکی ہے پولیس اور رینجرز تماشائی بنے ہوئے ہیں۔

اس حصے سے مزید

ممتاز بھٹو بیٹے سمیت مسلم لیگ ن سے بے دخل

سندھ نیشنل فرنٹ کے چیئرمین ممتاز بھٹو نے دعویٰ کیا ہے کہ مسلم لیگ ن نے اُنہیں بیٹے سمیت پارٹی سے نکال دیا ہے

'پاکستان میں حقیقی جدوجہد غریب اور اشرافیہ کے درمیان ہے'

آغا خان یونیورسٹی کے فکری مباحثے میں ماہرین نے سوال کیا کہ کیا ہمیں جمہوری فلاحی ریاست بننا چاہیے یا سیکورٹی اسٹیٹ؟

کراچی: فائرنگ کے مختلف واقعات، پانچ افراد ہلاک

دوسری جانب ایسٹ زون پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے چار ملزمان کو گرفتار کیا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماؤں اور بچوں کے قاتل ہم

پاکستان سے کم فی کس آمدنی رکھنے والے ممالک پیدائش کے دوران ماؤں اور بچوں کی اموات پر قابو پا چکے ہیں۔

تبدیلی کا پیش خیمہ

اکثر ایسے بڑے واقعات پیش آتے ہیں جو تبدیلی کے عمل کو تیز کردیتے ہیں، مگر ایسے حالات کسی فرد کے پیدا کردہ نہیں ہوتے۔

بلاگ

!گو نواز گو

اس ملک میں پڑھے لکھے لوگوں کی قدر ہی نہیں۔ جب تک پڑھے لکھوں کو وی آئی پی پروٹوکول نہیں دیا جاتا یہ ملک ترقی نہیں کرسکتا

قدرتی آفات اور پاکستان

قدرتی آفات سے پہلے انتظامات پر ایک ڈالر جبکہ بعد میں سات ڈالر خرچ ہوتے ہیں، اس کے باوجود ہم پہلے سے انتظامات نہیں کرتے۔

مقابلہ خوب ہے

کوئی دنیا کے در در پر پھیلے ہمارے کشکول کی زیارت کرے، پھر اس میں خیرات ڈالنے والوں کو فتح کرنے کے ہمارے عزم بھی دیکھے۔

پاکستان میں ذہنی بیماریاں اور ہماری بے حسی

آخر ذہنی بیماریوں کے شکار کتنے اور لوگوں کو اپنے گھرانوں کی بے حسی، اور معاشرے کی جانب سے ٹھکرائے جانے کو جھیلنا پڑے گا؟