23 اگست, 2014 | 26 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

پاکستانی حکام کی افغانستان پر راکٹ فائر کیے جانے کی تردید

پاکستانی فوجی پاک افغان بارڈر پر۔ فائل فوٹو

راولپنڈی: پاکستانی عسکری حکام نے افغانستان کے سرحدی علاقوں پر چارسو راکٹ فائر کیے جانے کی تردید کرتے ہوئے الزام کو گمراہ کن قرار دیا ہے۔

پاکستانی عسکری حکام کہنا ہے کہ پاکستان اسی وقت جوابی کارروائی کرتا ہے جب کسی جانب سے سرحدی خلاف ورزی کی جائے۔

گوکہ افغان حکومت نے پاک فوج پر براہ راست الزام نہیں لگایا لیکن افغان حکام نے الزام عائد کیا ہے کہ پاکستانی سرحدی علاقے سے افغانستان کے علاقے کنڑ کے ضلع ڈانگم  پر تین سو آرٹلری شیل  فائر کیے گئے۔ جس کے چار افراد ہلاک ہوئے۔

افغان حکام کا کہنا ہے کہ افغان اور پاکستانی طالبان پاک افغان سرحدی علاقے سے کارروائیاں کررہے ہیں۔

وزارت خارجہ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ افغانستان کے نائب وزیر خارجہ جواد نے اتوار کے روز کابل میں پاکستان کے سفیر کو ڈیورنڈ لائن پر ہونے والے حالیہ شیلینگ کے حوالے سے بات چیت کے لیئے بلایا ہے۔

اس حصے سے مزید

دسواں دن: حکومت اوراحتجاجی جماعتوں میں مذاکرات

ابھی تک یہ واضح نہیں ہوسکا کہ تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے دھرنوں کے باعث موجودہ سیاسی صورتحال کیا رخ اختیار کرے گی۔

ایل او سی خلاف ورزی: ہندوستان کو ڈی جی ایم اوز کی ملاقات کی تجویز

قومی سلامتی اور خارجہ امور کے مشیر سرتاج عزیز نے کہا کہ اگر ہندوستان کے پاس سرحد پر دراندازی کے ثبوت ہیں تو پیش کرے۔

'پی ٹی آئی کے استعفے راتوں رات قبول نہیں ہوسکتے'

اسپیکر قومی اسمبلی نے کہا ہے کہ یہ استعفے عجلت میں قبول نہیں کیے جائیں گے، اس حوالے سے طریقہ کار پر عمل کیا جائے گا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ڈرامے کی آخری قسط

اب اس آخری میلوڈرامہ کا جو بھی انجام ہو- اس نے پاکستانیوں کی آخری ہلکی سی امید کوبھی ریزہ ریزہ کردیا ہے-

پی ٹی آئی کی خالی دھمکیاں

جو دھمکیاں دی جا رہی ہیں، وہ حقیقت سے دور ہیں۔ ایسا کوئی راستہ موجود نہیں، جس سے پارٹی اپنی ان دھمکیوں پر عمل کر سکے۔

بلاگ

سیاست میں شک کی گنجائش

شکوک کے ساتھ ساتھ ان افواہوں کو بھی تقویت مل رہی ہے کہ عمران خان اور طاہرالقادری اصل میں اسٹیبلشمنٹ کے مہرے ہیں۔

پکوان کہانی : شاہی قورمہ

جو اکبر اعظم کے شاہی باورچی خانے کی نگرانی میں راجپوت خانساماؤں کے تجربات کا نتیجہ ہے۔

دفاعی حکمت عملی کے نقصانات

مصباح کے دفاعی انداز کے اثرات ہمارے جارحانہ انداز رکھنے والے بیٹسمینوں پر بھی پڑے ہیں

پاکستان ایک "ساس" کی نظر سے

68 سالہ جین والر کو پاکستان بہت پسند آیا، اتنا زیادہ کہ بقول ان کے مجھے پاکستان سے محبت ہوگئی ہے۔