01 ستمبر, 2014 | 5 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

آئی جی بلوچستان سے دوبارہ رپورٹ طلب

سپریم کورٹ۔ اے ایف پی فوٹو

اسلام آباد: سپریم کورٹ میں بلوچستان امن ومان کی صورتحال پر کیس کی سماعت کل تک کے لیئے ملتوی کردی گئی۔

چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بنچ کیس کی سماعت کر رہا تھا۔

ایڈوکیٹ جنرل جنرل امان اللہ کنرائی کی رپورٹ کو عدالت نے غیر تسلی بخش قرار دیا۔

سماعت کے آغاز پر ایڈووکیٹ بلوچستان نے عدالت کو بتایا کہ بلوچستان میں قانون نافذ کرنے والے بھی محفوظ نہیں ہے۔

انہوں نے عدالت کو بتایا کہ ہم کیسے کہہ سکتے ہیں کہ ریاستی مشینری فیل ہوگئی۔

ایڈووکیٹ جنرل نے عدالت کو بتایا کہ ڈھائی ہزار کلو میٹر طویل سرحد ہے، اس پر قابو نہیں پاسکتے۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ صوبے میں کوئی بھی محفوظ نہیں۔

چیف جسٹس نے کہا کہ وفاقی حکومت نے صوبوں میں ایف سی بھیجی ہے لحاضہ ایف سی کی ذمہ داری وفاقی حکومت پر عائد ہوگی۔

جسٹس عارف حیسن خلجی نے کہا کہ لگتا ہے کہ انتظامیہ نے ہاتھ اٹھالیے ہیں اور امن و امان کی صورتحال خراب ہورہی ہے۔

عدالت نے آئی جی بلوچستان سے دوبارہ رپورٹ طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت کل تک کے لیئے ملتوی کردی۔

 

اس حصے سے مزید

ہاشمی کے الزامات بے بنیاد ہیں، پی ٹی آئی

تحریک انصاف کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی نے فوج کے ساتھ کوئی رابطہ نہیں کیا ہے اور نہ ہی کوئی خفیہ ایجنڈا ہے

'خان صاحب نے کہا کہ فوج کے بغیر نہیں چل سکتے'

عمران کو ملک کے آئین اور قانون کی پرواہ نہیں، وہ منصوبہ بندی کے تحت اسلام آباد آئے ہیں، صدر تحریک انصاف جاوید ہاشمی

'مظاہرین کیخلاف حتمی کارروائی کا سوچ رہے ہیں'

وزیردفاع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم کے مستعفی ہونے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔