21 ستمبر, 2014 | 25 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

کراچی میں پرتشدد واقعات جاری، سات ہلاک

کراچی میں تعینات پولیس۔ فائل فوٹو

کراچی: کراچی میں قتل و غارت کا سلسلہ جاری ہے جس کے نتیجے میں مزید سات ہلاک ہوگئے۔

کراچی میں لسبیلہ پل کے قریب دہشت گردوں کی فائرنگ سایک شخص ہلاک ہوگیا۔ ہلاک ہونے والا نوجوان مجلس وحدت المسلمین کا کارکن تھا۔

واقعہ کے بعد علاقہ مکین سڑک پر نکل آئے اور احتجاج کیا۔

اس دوران کاروبار اور دکانیں بھی بند ہوگئیں اور علاقے میں فائرنگ کا سلسلہ بھی شروع ہوگیا۔

فائرنگ کی زد میں آکر دیگر چار افراد زخمی ہوگئے جبکہ ۔زخمی ہونے والا ایک شخص نجی اسپتال میں دوران علاج دم توڑ گیا۔

احتجاج کے باعث لسبیلہ پل سے گولی مار جانے والی سڑک ٹریفک کے لیے بند کردی گئی جس کے بعد پولیس اور رینجرز کی اضافی نفری طلب کرکے تعینات کردی گئی۔

تاہم علاقے میں صورتحال کشدگی برقرار ہے۔

دوسری جانب سولجر بازار کے دکانداروں نے تھانے کےباہر احتجاج کیا۔

مظاہرین نے پولیس کے خلاف نعرے بازی کی۔

مظاہرین کا کہنا تھا کہ موٹر سائیکل سوار ملزمان نے پولیس کی موجودگی میں دودھ فروش کو گولیوں کا نشانہ بنایا اور وہاں موجود افراد نے تعاقب کے بعد ایک ملزم کو پکڑ لیا جسے پولیس چھڑا کر لے گئی۔

مظاہرین نے  مطالبہ کیا کہ ملزم کو ان کے حوالے کیا جائے۔

دوسری جانب بھینس کالونی میں فائرنگ سے ایک شخص ہلاک ہوگیا۔

سہراب گوٹھ جمالی گوٹھ میں سیکیورٹی گارڈ جبکہ نرسری پر ڈاکوؤں کی فائرنگ سے ایک شخص ہلاک اور پیرآباد سیکٹر فور ای میں فائرنگ سے سیاسی جماعت کا کارکن ہلاک جبکہ اسکے دو بھائی زخمی ہوگئے۔

ادھر گلشن اقبال میں پولیس نے کارروائی کرکے دو مبینہ بھتہ خوروں کو گرفتار کرکے اسلحہ برآمد کرنے کا دعوی کیا ہے۔

اس حصے سے مزید

کراچی میں خودکش بمبار داخل

حساس ادارے کا سندھ حکومت کو خط، دہشت گرد کراچی میں داخل ہو گئے اور شہر کے کسی بھی مقام کو نشانہ بنا سکتے ہیں۔

وزیراعظم کے استعفی کیلیے عمران کا لاہور جانے کا اعلان

قوموں کوتقسیم کرکےسیاسی فائدہ اٹھایاگیا،انہیں یکجا کریں گے،نوازشریف کوسعودی عرب وامریکانہیں بچاسکتے،کراچی میں جلسےسےخطاب

کراچی میں فائرنگ سے تین افراد ہلاک

ہلاک ہونے والوں کی شناخت نوید، عمران اور ساجد کے ناموں سے ہوئی۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

پاکستان کی "مڈل کلاس" بغاوت

پاکستان کے مڈل کلاس لوگ ہی جمہوریت کے سب سے بڑے مخالف ہیں اور کچھ کیسز میں تو جمہوریت کی مخالفت بغاوت کی حد تک شدید ہے۔

!میرے پیارے اسلام آباد

میں آپ سے معافی چاہتا ہوں کہ میں نے آپ کی جانب دو دھرنے بھیجے ہیں، جنہوں نے آپ کا امن و سکون تباہ کر دیا ہے۔

بلاگ

بلوچ نیشنلزم میں زبان کا کردار

لسانی معاملات پر غیر دانشمندانہ طریقہ سے اصرار مزید ناراضگی اور پیچیدگیوں کا سبب بن سکتا ہے، جو شاید مناسب قدم نہیں۔

خواندگی کا عالمی دن اور پاکستان

تعلیم کو سرمایہ کاروں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے جن کے لیے تعلیم ایک جنس ہے جسے بیچ کر منافع کمایا جاسکتا ہے-

ڈرامہ ریویو: چپ رہو - حساس ترین موضوع پر بہترین پیشکش

زیادتی جیسے واقعات ہر وقت خبروں میں رہتے ہیں اس حوالے سے یہ ڈرامہ شعور اجاگر کرنے میں اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔

میں باغی ہوں

اس ملک میں کہیں قانون کی حکمرانی نہیں، ہر جگہ لوٹ مار مچی ہے- کسی کو قانون کا پاس نہیں- تبدیلی آئی تو سب کا احتساب ہوگا-