24 ستمبر, 2014 | 28 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

خط نہ لکھنے پر پی پی میں اختلافات نہیں، کاہرہ

وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف۔—فائل فوٹو

اسلام آباد: سوئس حکام کو خط نہ لکھنے پر حکمران جماعت میں اختلافات کی خبروں کی تردید کرتے ہوئے  وزیر اطلاعات قمرزمان کاہرہ نے کہا ہے وزیراعظم کو گھر بھیجنے کے خلاف مزاحمت کی تجویز پر فیصلہ پارٹی اجلاس میں فیصلہ ہوگا۔ آج اسلام آباد میں وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کی صدارت میں وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا۔

اجلاس میں وزیردفاع نوید قمر کی سربراہی میں قائم پانچ رکنی کابینہ کمیٹی نے بلوچستان کی صورتحال پر ابتدائی رپورٹ پیش کی۔

نوید قمر نے بتایا کہ کمیٹی بلوچستان کے معاملے پر فریقین سے دس سے زائد ملاقاتیں کرچکی ہے اور ملاقاتوں کا سلسلہ تاحال جاری ہے ۔

اس موقع پر انہوں نے کابینہ سے مکمل رپورٹ تیار کرنے کے لیے مزید مہلت مانگی جس کے بعد رپورٹ پر غور آئندہ اجلاس تک موخر کر دیا گیا ۔

اجلاس سے خطاب کے دوران وزیراعظم نے کہا کہ عام انتخابات کی تیاریاں شروع کی جانی چاہیئں۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان پیپلزپارٹی آزاد اور شفاف انتخابات پر یقین رکھتی ہے، عام انتخابات کے نتائج کو کھلے دل سے تسلیم کیا جائےگا۔

انہوں نے کہا کہ توانائی کے بحران کا حل حکومت کی اولین ترجیح ہے اور تمام وسائل کو بروئےکار لاتے ہوئے توانائی کے بحران کو حل کیا جائےگا۔

اجلاس میں خصوصی کمیٹی نے ملک میں توانائی کے بحران پر قابو پانے کے لیے اقدامات سے کابینہ کو آگاہ کیا۔

بجلی کے واجبات کی وصولی اور چوری کے روک تھام کے لئے پانی وبجلی، پیٹرولیم اور خزانہ کے سیکرٹریوں پر مشتمل کمیٹی قائم کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔

کابینہ نے ہندوؤں کی نقل مکانی کی خبروں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے متعلقہ اداروں کو مسئلہ حل کرنے کی ہدایت کی۔

اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اطلاعات و نشریات قمر زمان کائرہ نے کہا کہ عام انتخابات مقررہ وقت پر ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ سوئس حکام کو خط نہ لکھنے پر حکمراں جماعت میں اختلاف نہیں ہے ۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ سرکاری ملازمین کے اثاثے منظر عام پر لائے جائیں گے۔

اس حصے سے مزید

سرکاری ملازمین کے ہاﺅسنگ الاﺅنس میں دوگنا اضافے کی تجویز

اس تجویز کی سمری منظوری کے لیے وزیراعظم کو بھجوا دی گئی ہے۔

عوامی تحریک کے دھرنے میں شریک گھر واپسی کے لیے بے تاب

سینکڑوں خاندان اور لڑکیاں واپس جاچکے ہیں، جبکہ مزید درجنوں خواتین اپنے علاقوں کو جلد از جلد واپس جانا چاہتی ہیں۔

چھ بڑے شہروں میں پولیو مہم کی ناکامی کا انکشاف

لاہور، راولپنڈی، کراچی، حیدرآباد، کوئٹہ اور جیکب آباد میں پولیو وائرس کے خاتمے کی مہم ناکام رہی ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

سوشلزم کیوں؟

اگر ہم مسلسل بحث کرسکتے ہیں کہ جمہوریت کیوں نہیں، شریعت کیوں نہیں، تو اس سوال پر بھی بحث ضروری ہے کہ سوشلزم کیوں نہیں؟

مڑی تڑی باتیں اور مقاصد

چیزوں کو اپنی مرضی کے مطابق توڑ مروڑ کر پیش کرنے، اور غیر آئینی اقدامات سے پاکستان کے مسائل میں صرف اضافہ ہی ہوگا۔

بلاگ

مووی ریویو: 'خوبصورت' - فواد اور سونم کی خوبصورت کہانی

اپنے پُر مزاح کرداروں کے باوجود فلم شوخ اور رومانٹک ڈرامہ ہے، جسے آپ باآسانی ڈزنی کی طلسماتی کہانی کہہ سکتے ہیں-

کراچی میں بجلی کا مسئلہ اور نیپرا کا منفی کردار

اپنی نااہلی کی وجہ سے نیپرا نے بیرونی سرمایہ کاروں کو مشکل میں ڈال رکھا ہے، جن میں سے کچھ تو کام شروع کرنے کو تیار ہیں۔

خواب دو انقلابیوں کے

ایک انقلابی خود کو وزیر اعظم بنتا دیکھ رہا ہے تو دوسرا صدارتی محل میں مریدوں سے ہاتھ پر بوسے کروانے کے خواب دیکھ رہا ہے۔

کوئی ان سے نہیں کہتا۔۔۔

ریڈ زون کے محفوظ باسیو! ہمیں دہشت گردوں، ڈاکوؤں، چوروں، اغواکاروں، تمہاری افسر شاہی اور پولیس سے بچانے والا کوئی نہیں۔