28 اگست, 2014 | 1 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

بلوچستان حکومت سے لاپتہ افراد کے متعلق جواب طلب

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری ۔ فائل فوٹو

کوئٹہ: سپریم کورٹ نے بلوچستان حکومت کو لاپتہ افراد سے متعلق کل حتمی جواب داخل کرنے کا حکم دیا ہے۔

بدھ کو چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے سپریم کورٹ کوئٹہ رجسٹری میں بلوچستان بدامنی کیس کی سماعت کی۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے وفاقی سیکریٹری دفاع و داخلہ کی غیر حاضری پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے انہیں کل عدالت میں پیش ہوکر اپنا بیان جمع کرانے کا حکم بھی جاری کیا۔

جسٹس افتخار کے مطابق وفاق، صوبائی حکومت اور ایف  سی نے لاپتہ افراد کا مسئلہ حل کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی لیکن تین ماہ گذرنے کے باوجود کوئی پیش رفت نہیں ہوئی۔

اس موقع پر ایف سی کے وکیل راجہ ارشاد نے کہا کہ سپریم کورٹ نے زبردستی یقین دہانی کروائی تھی۔

جس پر چیف جسٹس نے انہیں کہا کہ وہ عدالت میں سوچ سمجھ کر بات کیا کریں،کیونکہ ان کی بات توہین عدالت کے زمرے میں آتی ہے۔

سماعت کے دوران آئی جی ایف سی نے سپریم کورٹ کو بتایا کہ پانچ سال میں دو ہزارافراد کو ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنایا گیا اور تقریباً اتنے ہی لوگ زخمی ہوئے۔

چیف جسٹس نے آئی جی ایف سی سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ قانون نافذ کرنے والے بائیس ادارے اور ایجنسیاں کام کر رہی ہیں، لیکن نتیجہ کچھ بھی نہیں۔

انہوں نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ آپ لوگ ناکام  ہوچکے ہیں، اگر آپ سے کچھ نہیں ہوسکتا تو لکھ کر دیں،گورنر اور وزیراعلٰی کو بلا کر بتائیں گے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ مخصوص مکتبہ فکر کے لوگوں کی ٹارگٹ کلنگ کا اقوام متحدہ نے بھی نوٹس لیا ہے۔

دوران سماعت آئی جی ایف سی نے اعتراف کیا کہ لاپتہ افراد کے حوالے سے ان کی کارکردگی متاثرکن نہیں ہے۔

اس حصے سے مزید

اکبر بگٹی کی برسی پر بلوچستان میں ہڑتال

ہڑتال کے موقع پر امن و امان کے قیام کے لئے صوبائی حکومت کی جانب سے سیکیورٹی کے خصوصی انتظامات کیے گئے۔

مستونگ: صوفی بزرگ کے مزار پر دھماکا

شیخ تقی کے مزار میں شدت پسندوں نے دھماکا خیز مواد نصب کیا تھا، عمارت مکمل طور پر تباہ ہوگئی ہے، ایک خاتون زخمی ہوئی ہیں۔

بلوچستان کے مغربی علاقوں میں زلزلے کے جھٹکے

زلزلے کے جھٹکوں کے باعث لوگوں میں خوف پایا جاتا ہے، تاہم ابتدائی طور پر اس کے شدت معلوم نہیں ہوسکی ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

دو کشتیوں کے سوار نواز شریف

نواز شریف کے مطابق اگر ان کو طاقت کے زور پر نکالا گیا تو پاکستان کو سنبھالنا مشکل ہوجائے گا۔

پاکستان میں جمہوریت

کیا جمہوریت پاکستان میں عوام کیلیے ہے یا حکمرانوں کو انتخابات میں دوبارہ منتخب ہونے کی یقین دہانی کیلیے ہے؟

بلاگ

آزادی کے سائیڈ افیکٹس

اس قوم کا مزید آزادی کی بات کرنا بہت حیران کن ہے۔ یہ قوم تو آزادی کے سائیڈ افیکٹس کا شکار ہے۔

'آزادی' کے بعد: 'نیا پاکستان' اور 'انقلابی کابینہ'

سب سے زیادہ توجہ میڈیا پر دینی ہوگی اور گندی مچھلیوں سے پاک کرنے کے لئے تمام 'ملک دشمن' چینلز پر فوری پابندی لگانی ہوگی

مووی ریویو: ٹین ایج میوٹنٹ ننجا ٹرٹلز

تباہی و بربادی کے سینز، سپر ہیروز اور ایک حسینہ والے کامیاب ثابت شدہ فارمولے فلم کا حصہ رہے۔

تجزیوں کا بخار

گھر کے تمام افراد کو اتنے گروپس میں تقسیم کیا جا سکتا ہے، جتنے کہ تجزیہ کار موجود ہیں۔