16 اپريل, 2014 | 15 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

بلوچستان حکومت سے لاپتہ افراد کے متعلق جواب طلب

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری ۔ فائل فوٹو

کوئٹہ: سپریم کورٹ نے بلوچستان حکومت کو لاپتہ افراد سے متعلق کل حتمی جواب داخل کرنے کا حکم دیا ہے۔

بدھ کو چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے سپریم کورٹ کوئٹہ رجسٹری میں بلوچستان بدامنی کیس کی سماعت کی۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے وفاقی سیکریٹری دفاع و داخلہ کی غیر حاضری پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے انہیں کل عدالت میں پیش ہوکر اپنا بیان جمع کرانے کا حکم بھی جاری کیا۔

جسٹس افتخار کے مطابق وفاق، صوبائی حکومت اور ایف  سی نے لاپتہ افراد کا مسئلہ حل کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی لیکن تین ماہ گذرنے کے باوجود کوئی پیش رفت نہیں ہوئی۔

اس موقع پر ایف سی کے وکیل راجہ ارشاد نے کہا کہ سپریم کورٹ نے زبردستی یقین دہانی کروائی تھی۔

جس پر چیف جسٹس نے انہیں کہا کہ وہ عدالت میں سوچ سمجھ کر بات کیا کریں،کیونکہ ان کی بات توہین عدالت کے زمرے میں آتی ہے۔

سماعت کے دوران آئی جی ایف سی نے سپریم کورٹ کو بتایا کہ پانچ سال میں دو ہزارافراد کو ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنایا گیا اور تقریباً اتنے ہی لوگ زخمی ہوئے۔

چیف جسٹس نے آئی جی ایف سی سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ قانون نافذ کرنے والے بائیس ادارے اور ایجنسیاں کام کر رہی ہیں، لیکن نتیجہ کچھ بھی نہیں۔

انہوں نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ آپ لوگ ناکام  ہوچکے ہیں، اگر آپ سے کچھ نہیں ہوسکتا تو لکھ کر دیں،گورنر اور وزیراعلٰی کو بلا کر بتائیں گے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ مخصوص مکتبہ فکر کے لوگوں کی ٹارگٹ کلنگ کا اقوام متحدہ نے بھی نوٹس لیا ہے۔

دوران سماعت آئی جی ایف سی نے اعتراف کیا کہ لاپتہ افراد کے حوالے سے ان کی کارکردگی متاثرکن نہیں ہے۔

اس حصے سے مزید

کوئٹہ میں فائرنگ، دو افراد ہلاک

موٹر سایئکل سوار حملہ آوروں نے دکان کو نشانہ بنایا جسکے نتیجے میں پنجاب سے تعلق رکھنے والے دو افراد ہلاک ہوگئے، پولیس۔

'ہندوستان بلوچ علیحدگی پسند تحریک کی فنڈنگ کرتا ہے'

سینیئر صوبائی وزیر ثناء اللہ زہری کے مطابق گوادر پورٹ کے قیام سے دیگر ممالک بھی صوبے میں مداخلت کرسکتے ہیں۔

کوئٹہ: ہزارہ برادری کے دو افراد کی ٹارگٹ کلنگ

مسلح افراد نے کوئٹہ کے علاقے سریاب روڈ پر ہفتے کی رات فائرنگ کر کے شیعہ ہزارہ برادری کے دو افراد کو ہلاک کردیا۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

میڈیا کے چٹخارے

پاکستانی میڈیا کو جتنی زیادہ آزادی ہے اسکی اپروچ اتنی ہی جانبدارانہ ہے، عوام کی پولرائزیشن میں میڈیا کا بہت بڑا ہاتھ ہے

ٹی ٹی پی نہیں تو پھر مذاکرات کیوں؟

عام آدمی کو صرف تحفظ چاہئے اور اگر مذاکرات یہ نہیں دے رہے تو ان کو مزید آگے بڑھانے سے کیا حاصل؟

جادو کا چراغ: نبض کے بھید اور ایک برباد محبت

بوڑھے دانا طبیب نے مختلف ناموں پر بدلتی نبض کو دیکھ کر لڑکی کی پراسرار بیماری کا علاج کیا-

سارے جہاں سے مہنگا - ریویو

فلم میں ایک اچھوتا خیال پیش کیا گیا ہے کہ کس طرح 'جگاڑ' کر کے ایک مڈل کلاس آدمی مہنگائی کا توڑ نکالتا ہے۔