18 ستمبر, 2014 | 22 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

بلدیاتی آرڈیننس سپریم کورٹ میں چیلنج

کراچی: سندھ کے وزیر اعلی قائم علی شاہ اور گورنر ڈاکٹر عشرت العباد ۔— پی پی آئی

اسلام آباد: سندھ میں جمعے کی رات کو جاری ہونے والے نئے بلدیاتی نظام کو سپریم کورٹ میں چیلنج کر دیا گیا ہے۔

عدالت عظمی کی کراچی رجسٹری میں کراچی الائنس کی جانب سے دائر کی گئی درخواست میں گورنر سندھ ، وزیر اعلیٰ سندھ ، چیف سیکریٹری ، سیکریٹری قانون اور سیکریٹری بلدیات کو فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست گذار نے موٴقف اختیار کیا ہے کہ آرڈیننس کا اجراء کرکے آئین کے آرٹیکل چار، پانچ، آٹھ، پچیس، بتیس اور ایک سو چالیس کے خلاف ورزی کی گئی ہے۔

سندھ پیپلز لوکل گورنمنٹ آرڈیننس دو ہزار بارہ کے اجراء پر صوبائی حکومت  کو مشکلات کا سامنا ہے ۔

حکمراں اتحاد میں شامل عوامی نیشل پارٹی اور مسلم لیگ فنکشنل صوبائی حکومت سے علیحدگی  کا اعلان کر چکی ہیں۔

دونوں جماعتوں کا کہنا ہے کہ آرڈیننس کے ذریعے سندھ کو تقسیم کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔

انہوں نے الزام عائد کیا کہ اس آرڈیننس کے ذریعے حکمراں جماعت پاکستان پیپلز پارٹی نے دیہی سندھ کی قیمت پر متحدہ قومی موومنٹ کو خوش کرنے کی کوشش کی ہے۔

دوسری جانب صوبے کی قوم پرست جماعتوں نے تیرہ ستمبر کو ہڑتال اور وزیر اعلیٰ ہاؤس کے گھیراؤ کا اعلان کر رکھا ہے ۔

اس حصے سے مزید

مقامی حکومت کےبغیرجمہوریت آمریت سےبدتر، الطاف حسین

اپنی61ویں سالگرہ کی تقریب سےویڈیولنک سےخطاب میں ان کاکہناتھاکہ دنیامیں کوئی پارلیمنٹ سڑکوں اورپلوں کی تعمیر نہیں کرتی۔

کراچی،پولیس کا آپریشن،7مبینہ دہشت گرد ہلاک

ایس ایس پی ملیرنےکہاہےکہ10دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع پر کارروائی کی,ہلاک ہونے والوں سے بھاری اسلحہ برآمدہواہے۔

کراچی میں خاتون کے ہاں 5 بچوں کی پیدائش

جڑواں بچوں میں ایک بیٹا اور چار بیٹیاں شامل تھیں، تاہم پیدائش کے فورا بعد ایک بچی انتقال کرگئی۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔

کریچر - تھری ڈی: گوڈزیلا یا ڈیوی جونز کا کزن؟

یہ کہنا غلط نہ ہوگا بپاشا ہارر تھرلرز تک محدود ہوگئی ہیں جبکہ عمران عبّاس نے انکے گرد چکر کاٹنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔