18 ستمبر, 2014 | 22 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

کراچی سانحہ: ذمہ داروں کے خلاف قتل کا مقدمہ

کراچی: آتشزدگی سے متاثرہ عمارت کا اندرونی منظر۔— اے ایف پی

کراچی: کراچی پولیس نے ایک گارمنٹ فیکٹری میں آتشزدگی کے نتیجے میں کم از کم 250 ہلاکتوں کے بعد جمعرات کو فیکٹری مالکان اور حکومتی عہدے داروں کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔

منگل کی شام سائیٹ کے علاقے میں واقع علی انٹرپرائزز گارمنٹ فیکٹری میں آگ لگنے سے ملازمین کی بڑی تعداد جلھسنے اور دم گھٹنے کے باعث ہلاک ہو گئی تھی۔

ایک سرکاری عہدے دار نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ فیکٹری مالکان کے ملک سے باہر جانے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔

مقامی پولیس اسٹیشن کے محمد نواز گوندل نے جمعرات کو بتایا کہ انہوں نے فیکٹری مالکان اور حکومتی عہدے داروں کے خلاف ملازمین کے تحفظ کے حوالے سے انتہائی غفلت برتنے پر قتل کا مقدمہ درج کیا ہے۔

گوندل نے مزید بتایا کہ مقدمہ میں عبدالعزیز، محمد ارشد، شاہد بھائیلا اور فیکٹری انتظامیہ کے دیگر ارکان کو ملزمان نامزد کیا گیا ہے۔

کراچی پولیس کے ایک سینئر افسر نعیم اکرم نے مقدمہ کے اندارج کی تصدیق کی ہے۔

پولیس منگل کو پیش آنے والے واقعے کے بعد سے روپوش فیکٹری مالکان کی تلاش میں ہے۔

دوسری جانب، سندھ حکومت نے سابق جج پر مشتمل ایک کمیشن بھی بنادیا ہے۔

ڈان نیوز نے کمشنرکراچی کے حوالے سے بتایا کہ متاثرہ عمارت میں ریسکیو آپریشن مکمل کرلیا گیا ہے۔

کراچی میں آگ بجھانے والے عملے کے سربراہ نے عمارت کو انتہائی خطرناک قرار دیتے ہوئے بتایا کہ اس کی تلاشی کا کام مکمل ہو گیا ہے۔

اس حصے سے مزید

'محکمہ تعلیم ایمپلائمنٹ ایکسچینج بن گیا ہے'

بچوں کی تعلیم پر منعقدہ کانفرنس میں ڈاکٹر فضل اللہ پیچوہو نے کہا کہ ہمارے ہاں نوّے فیصد ٹیچرز غیر تربیت یافتہ ہیں۔

حکومت وی آئی پیز پر پوری سیکیورٹی لگا دیتی ہے، پروفیسر افتخار اعظمی

سندھ پروفیسرز ایسوسی ایشن کے صدر کا کہنا ہے کہ اساتذہ کی ٹارگٹ کلنگ کے باعث کراچی پڑھے لکھے لوگوں سے محروم ہو جائے گا۔

جامعہ کراچی: شعبہ اسلامک اسٹڈیز کے سربراہ فائرنگ سے ہلاک

ڈاکٹر شکیل اوج کی گاڑی کو گلشن اقبال میں نامعلوم افراد نے نشانہ بنایا، جامعہ کراچی تین دن کے لیے بند رکھنے کا اعلان۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

شاہد آفریدی دوبارہ کپتان، ایک قدم آگے، دو قدم پیچھے

اس بات کی ضمانت کون دے گا کہ ماضی کی طرح وقار یونس اور شاہد آفریدی کے مفادات میں ٹکراؤ پیدا نہیں ہوگا۔

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔