16 اپريل, 2014 | 15 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

سانحہ کراچی: صوبائی وزیر صنعت مستعفی

۔—فائل فوٹو

کراچی: سندھ کے وزیرِ صنعت و تجارت رؤف صدیقی نے سانحہ بلدیہ ٹاؤن پر اپنے عہدے سے مستعفیٰ  ہونے کا اعلان کیا ہے۔

جمعہ کی دوپہر ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے متحدہ قومی موومنٹ سے تعلق رکھنے والے صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ انہوں نے اپنا استعفی گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان اور وزیر اعلی قائم علی شاہ  کو بھجوا دیا ہے۔

واضح رہے کہ گیارہ ستمبر کی شام کراچی کے علاقے بلدیہ ٹاؤں میں واقع ایک گارمنٹس فیکٹری میں آتشزدگی کے نتیجے میں دو سو اٹھاون افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

واقعے کے بعد بعض ٹی وی چینلز نے مستعفی وزیر پر، صنعتی قوانین کے عدم نفاذ کے حوالے سے کڑی نکتہ چینی کی تھی۔

اگرچہ دنیا کے مختلف ممالک میں کسی سانحے کے بعد متعلقہ وزارت کے ذمہ دار وزیر کا استعفیٰ جمہوری روایات کا حصہ ہے مگر پاکستان میں اس طرح کی مثالیں شاذ ہی ملتی ہیں۔

اس حصے سے مزید

خیرپور میں گیس پائپ لائن دھماکے سے تباہ

پولیس کے مطابق دھماکے کے بعد سندھ کے مختلف شہروں میں گیس کی فراہمی معطل ہوگئی ہے۔

کراچی کی دوسری خاتون پولیس ایس ایچ او

پولیس حکام نے ادارے میں صنفی توازن قائم کرنے کے لیے ایک اور خاتون کو سٹیشن ہاؤس افسر تعینات کیا ہے۔

الطاف حسین نفرت اور تفریق ختم کرنے کے خواہاں

ایم کیو ایم کے قائد نے کہا کہ سندھی عوام کو اپنے حقوق کے لیے ایک ہو کر متحرک ہونا پڑے گا۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (1)

Mr.T
14 ستمبر, 2012 11:38
چلو کوئی تو ہے جس نے ذمےداری لی
مقبول ترین
بلاگ

میڈیا کے چٹخارے

پاکستانی میڈیا کو جتنی زیادہ آزادی ہے اسکی اپروچ اتنی ہی جانبدارانہ ہے، عوام کی پولرائزیشن میں میڈیا کا بہت بڑا ہاتھ ہے

ٹی ٹی پی نہیں تو پھر مذاکرات کیوں؟

عام آدمی کو صرف تحفظ چاہئے اور اگر مذاکرات یہ نہیں دے رہے تو ان کو مزید آگے بڑھانے سے کیا حاصل؟

جادو کا چراغ: نبض کے بھید اور ایک برباد محبت

بوڑھے دانا طبیب نے مختلف ناموں پر بدلتی نبض کو دیکھ کر لڑکی کی پراسرار بیماری کا علاج کیا-

سارے جہاں سے مہنگا - ریویو

فلم میں ایک اچھوتا خیال پیش کیا گیا ہے کہ کس طرح 'جگاڑ' کر کے ایک مڈل کلاس آدمی مہنگائی کا توڑ نکالتا ہے۔