16 ستمبر, 2014 | 20 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

رمشا کیس کی سماعت جاری

عدالت نے رمشا مسیح کیس کی تحقیقات ایس پی سطح کے کسی افسر سے کرانے کا حکم دے دیا۔ اے پی فوٹو

اسلام آباد: اسلام آباد کی ایک عدالت نے رمشا کیس کی تحقیقات ایس پی سطح کے کسی افسر سے کرانے کا حکم جاری کیا ہے۔

 پیر کو اسلام آباد ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کی عدالت میں قرآن کی مبینہ توہین کی مرتکب عیسائی لڑکی رمشا کے خلاف مقدمے کی سماعت ہوئی۔

 تفتیشی افسر نے جج عامر عزیز کو بتایا کیس کی تفتیش مکمل ہوچکی ہےتاہم چالان کے لیے مزید وقت درکار ہے۔

 دوران سماعت، مدعی کے وکیل راؤ عبدالرحیم نے بتایا کہ پولیس تفتیش کے لیے عدالت سے دو مرتبہ وقت مانگ چکی ہے، عدالت نے آخری تاریخ میں نامکمل چالان جمع کرانے  کا حکم دیا تھا۔

 درخواست گزار کے وکیل حاجی فضل نیازی نے عدالت سے کہا کہ وہ پولیس کو پابند کرے کہ درخواست گزار کو بار بار تنگ نہ کیا جائے۔

 انہوں نے عدالت سے یہ استدعا بھی کی کہ رمشا کی ضمانت خارج کی جائے۔

 نیازی نے کہا کہ یہ توہین رسالت قانون کو تبدیل کرنے کی سازش ہے۔ انہوں نے کہا کہ قرآنی اوراق کا معاملہ لڑکی سے ملایا جارہا ہے۔

اس حصے سے مزید

'پاکستان کا نظامِ حکمرانی مکمل ہے'

ایک مذاکرے میں ماہرین نے اتفاق کیا کہ پاکستان کو کسی دوسرے مسلم ملک کا حکومتی نظام اپنانے کی ضرورت نہیں۔

رحمٰن ملک کی پرواز سے بے دخلی 'تبدیلی' قرار

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاکستان تبدیل ہورہا ہے اور یہ وہی تبدیلی ہے جس کے لیےعمران خان جدوجہد کر رہے ہیں۔

چیف جسٹس جمہوریت کو بچائیں، عمران خان کی اپیل

پی ٹی آئی کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کا فرض ہے کہ وہ جمہوریت بچانے کے لیے اپنا آئینی کردار ادا کرے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ڈیم، کینال، بیراج، اور ماحول

ہندوستانی پنجاب میں زیادہ بارشیں ہوئیں، جسکی وجہ سے اپ سٹریم کا پانی پاکستانی چناب اور جہلم میں بہہ آیا ہے

انتخابی اصلاحات: اگلا قدم

بحیثیت قوم ہمیں اس بات کو یقینی بنانا ہوگا، کہ اس معاملے میں سچ سب کے سامنے آئے، اور کوئی شک شبہہ باقی نا رہے۔

بلاگ

کریچر - تھری ڈی: گوڈزیلا یا ڈیوی جونز کا کزن؟

یہ کہنا غلط نہ ہوگا بپاشا ہارر تھرلرز تک محدود ہوگئی ہیں جبکہ عمران عبّاس نے انکے گرد چکر کاٹنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔

جب خاموشی بہتر سمجھی جائے

اس بات کو تسلیم کرنا ہو گا کہ برطانوی پاکستانیوں کے پاس جنسی استحصال پر بات کرنے کے لیے آزادی نہیں ہے۔

نائنٹیز کا پاکستان - 6

اندازے کے مطابق اس دور میں پاکستانی فوج ہر ماہ اوسط ساڑھے سات کروڑ ڈالر ’مجاہدین‘ پر خرچ کر رہی تھی۔

ماضی کی جھلکیاں، میرانِ تالپورکے مقبرے

یہ دیکھ کر بہت افسوس ہوتا ہے کہ مزارات کافی خراب حالت میں ہیں۔ یہ بھی نہیں کہا جا سکتا کہ کس وقت دیواریں منہدم ہوجائیں۔