24 جولائ, 2014 | 25 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

کراچی میں دھماکوں سے آٹھ افراد ہلاک

کراچی کے مصروف علاقے حیدری کے ایک شاپنگ سینٹر کے باہر دو بم دھماکوں میں تباہ ہونے والی موٹر سائیکل بھی نظر آرہی ہے جس پر بم نصب کیا گیا تھا۔ اے ایف پی تصویر

کراچی: پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں دھماکوں سے آٹھ افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے۔

ڈان نیوز کی ابتدائی رپورٹس کے مطابق کراچی کے گنجان رہائشی وتجارتی علاقے حیدری میں واقع شاپنگ سینٹر میں یکے بعد دیگر دو دھماکے ہوئے جن میں چھ افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

علاقے کے قریب واقع عباسی شہید ہسپتال کے ڈاکٹرمحمد شفقت کے مطابق ہسپتال میں چار لاشیں لائی گئی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق دھماکہ حیدری میں واقع ڈالمین مال کے قریب ہوا جس کے اندر اور اطراف میں لوگوں کی بڑی تعداد موجود تھی۔

ہسپتال اور پولیس ذرائع کے مطابق ہلاک شدگان میں ایک بچہ  اور ایک خاتون بھی شامل ہے ۔

پولیس افسراعظم خان کے مطابق شام کے مصروف ترین اوقات میں ایک کے بعد ایک دو دھماکے ہوئے ۔

ڈان نیوز کے مطابق ایس ایس پی سینٹرل نے بتایا کہ پہلا دھماکہ موٹرسائیکل میں نصب بم پھٹنے سے ہوا جبکہ دوسرا دھماکہ اس سے ایک سو فٹ دور ایک درخت کے ساتھ ہوا۔ ابتدائی انکشافات کے مطابق دونوں دھماکوں میں ریموٹ کنٹرول ڈیوائس استعمال کیا گیا تھا جس سے مجموعی طور پر آٹھ تا دس کلوگرام بارود کو دھماکے سے اُڑایا گیا۔

پولیس نے دھماکے کی جگہ کو بند کرکے تحقیقات شروع کردی ہیں۔

دھماکے سے قریبی پارکنگ میں موجود کئی گاڑیوں کو بھی شدید نقصان پہنچا۔

دھماکے کے بعد رینجرز کا ایک اہلکار جائے وقوعہ پر موجود ہے۔ اے ایف پی تصویر

ابتدائی تحقیقات کے تحت دھماکے میں استعمال ہونے والی موٹرسائیکل تین ستمبر کو کراچی کے علاقے لائنز ایریا سے چھینی گئی تھی۔

دھماکوں کے بعد کراچی میں پولیس اور رینجزر کو چوکس رہنے کے ساتھ ساتھ پولیس کو حساس علاقوں میں گشت کے احکامات جاری کردئیے گئے ہیں۔

دوسری جانب صدرآصف زرداری نے کراچی بم دھماکوں پر صوبائی حکومت سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔

اس حصے سے مزید

'این آر او کے تحت پندرہ سال تک مارشل لاء نافذ نہیں ہو سکتا'

شہلا رضا نے انکشاف کیا ہے کہ امریکہ، برطانیہ ، یواے ای اور جنرل پرویز اشفاق کیانی نےبھی اس کی گارنٹی دی تھی۔

کراچی: مائی کولاچی روڈ پر ٹرالر اور ڈمپر میں تصادم، تین زخمی

بدھ کے روز علی الصبح ہونے والی ہلکی بارش سے سڑک پر پھسلن بڑھ جانے سے ڈمپر اور ٹرالر بے قابو ہوکر ایک دوسرے سے ٹکرا گئے۔

کراچی: لیاری سے گینگ وار کے تین ملزمان گرفتار

پولیس اور رینجرز نے مشترکہ طور پر لیاری کے علاقے کلری اور بغدادی میں آپریشن کیا، جہاں سے یہ گرفتاریاں عمل میں آئی ہیں۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (1)

Syed
19 ستمبر, 2012 03:59
طالبان جیسے “شجرہ خبیثہ” کو خلق کرنے والی فورسز نے طالبان کے اجزائے ترکیبی میں اہم جزو “شیعہ دشمنی” رکھا ہے، گڈ طالبان، بیڈ طالبان، اینٹی پاکستان، پرو پاکستان۔۔۔ طالبان سب کے سب شیعہ دشمنی کے ایجنڈے پر اکٹھے نظر آتے ہیں۔ طالبان نوازی کی پالیسی کا سب سے زیادہ تاوان شیعہ قوم نے ادا کیا ہے، آخر کب تک اِس مبینہ “اِسٹریٹیجک ایسیٹس” کے نام پر ملک میں فرقہ واریت کا بازار گرم رکھا جائے گا۔۔۔؟ اِن مبینہ “اِسٹریٹیجک ایسیٹس” کی وجہ سے وہ کونسی آفت ہے جو پاکستان پر نہیں ٹوٹی، پاکستانی عوام آخر کب تک اِن غلط پالیسیوں کا خراج دیتی رہے گی۔۔۔ آخر کب تک؟
سروے
مقبول ترین
قلم کار

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

کیا بڑا بہتر ہے؟

ہم اپنی جنوب ایشیائی شناخت سے پیچھا کیوں چھڑانا چاہتے ہیں جو تاریخی اعتبار سے عرب کے مقابلے میں کہیں زیادہ مالامال ہے؟

بلاگ

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-

مووی ریویو: پیزا - پلاٹ اچھا ہے

اگرچہ سکرین پلے کافی کمزور ہے مگر فلم کی کہانی میں آنے والے موڑ دیکھنے والوں کی دلچسپی برقرار رکھتے ہیں۔

جہادی برائے فروخت

اگر اب بھی سمجھ نہ آئی تو پاکستان کا حشر بھی عراق و شام سے مختلف نہیں ہوگا۔