28 اگست, 2014 | 1 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

'بلوچستان سے ایف سی واپس نہیں بلاسکتے'

وفاقی وزیر اطلاعات قمر زمان کائرہ۔ — اے پی پی فوٹو

لاہور: وفاقی وزیر اطلاعات قمر زمان کائرہ نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن کے مطالبے پر فرنٹئیر کانسٹیبلری (ایف سی) کو بلوچستان سے واپس نہیں بلایا جاسکتا۔

منگل کو لاہور ائیرپورٹ پر صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کائرہ نے کہا کہ نواز شریف کی بلوچ رہنماؤں سے ملاقاتیں خوش آئند ہیں مگران کے کہنے پر صوبے سے ایف سی کو نکالنا ممکن نہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ن لیگ کے مطالبے پر جنوبی پنجاب صوبے پر کمیشن بنایا گیا تھا مگراب ن لیگ کو ہی اس پراعتراض ہے۔

حج کوٹہ کیس کی سماعت کے لیے لاہورآنے والے وفاقی وزیر برائے مذہبی امور خورشید شاہ نے کہا کہ انہیں نواز شریف کی کسی بات پر اعتبار نہیں۔

شاہ نے کہا کہ حکمراں جماعت پاکستان پیپلز پارٹی نے سندھ سے کوئی غداری نہیں کی بلکہ نواز شریف پنجاب کے لوگوں سے غداری کررہے ہیں۔

اس حصے سے مزید

عوام کے فیصلےکا دن آگیا،آج یوم انقلاب ہو گا،طاہر القادری

سربراہ پاکستان عوامی تحریک نےکہا ہےکہ اب مذاکرات کادروازہ بند ہو گیا ہے، جمعرات کو یوم انقلاب ہوگا اب ہم فیصلہ کریں گے۔

ہم اس نظام کےخلاف بغاوت کرتےہیں،عمران خان

چیئرمین تحریک انصاف کےمطابق اہم اعلان 24 گھنٹے کیلئے ملتوی کررہاہوں،مزیدمذاکرات نہیں ہوں گےآج ہی لائحہ عمل کااعلان ہوگا

آزادی' اور 'انقلاب' کی بدبو'

دھرنوں کے مقامات، کچرے اور فضلے کے ڈھیر سے اٹھنے والی بو کے باعث یہاں آنا کافی ناخوشگوار تجربہ ثابت ہوتا ہے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

دو کشتیوں کے سوار نواز شریف

نواز شریف کے مطابق اگر ان کو طاقت کے زور پر نکالا گیا تو پاکستان کو سنبھالنا مشکل ہوجائے گا۔

پاکستان میں جمہوریت

کیا جمہوریت پاکستان میں عوام کیلیے ہے یا حکمرانوں کو انتخابات میں دوبارہ منتخب ہونے کی یقین دہانی کیلیے ہے؟

بلاگ

آزادی کے سائیڈ افیکٹس

اس قوم کا مزید آزادی کی بات کرنا بہت حیران کن ہے۔ یہ قوم تو آزادی کے سائیڈ افیکٹس کا شکار ہے۔

'آزادی' کے بعد: 'نیا پاکستان' اور 'انقلابی کابینہ'

سب سے زیادہ توجہ میڈیا پر دینی ہوگی اور گندی مچھلیوں سے پاک کرنے کے لئے تمام 'ملک دشمن' چینلز پر فوری پابندی لگانی ہوگی

مووی ریویو: ٹین ایج میوٹنٹ ننجا ٹرٹلز

تباہی و بربادی کے سینز، سپر ہیروز اور ایک حسینہ والے کامیاب ثابت شدہ فارمولے فلم کا حصہ رہے۔

تجزیوں کا بخار

گھر کے تمام افراد کو اتنے گروپس میں تقسیم کیا جا سکتا ہے، جتنے کہ تجزیہ کار موجود ہیں۔