01 اکتوبر, 2014 | 5 ذوالحجہ, 1435
ڈان نیوز پیپر

پشاور: عسکریت پسندوں کا تھانےاور چیک پوسٹوں پرحملہ

پولیس ہیلپ لائن۔ —فائل فوٹو

پشاور: پشاور متنی پولیس اسٹیشن اور چیک پوسٹوں پر عسکریت پسندوں کے حملے کے بعد جوابی کارروائی میں چار عسکریت پسند ہلاک ہوئے۔

جبکہ حملے میں اے ایس آئی سمیت چار پولیس اہلکار زخمی اور ایک بکتربند کو نقصان پہنچا۔

عسکریت پسندوں نے گزشتہ رات پشاور کے متنی تھانے اور فرنٹیئر روڈ پر قائم چیک پوسٹوں پر بڑا حملہ کیا۔

ذرائع کے مطابق پولیس کی جوابی کارروائی میں چار عسکریت پسند مارے گئے۔

حملے میں زخمی ہونے والے چاروں پولیس اہلکاروں کو لیڈی ریڈنگ اسپتال منتقل کردیا گیا جہاں ان کی حالت خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے۔

دوسری جانب شہر میں مزید دو بم ناکارہ بنادئے گئے۔

اس حصے سے مزید

پشاور: اسکول پر دستی بم حملے میں ٹیچر ہلاک

پشاور کے علاقے شبقدر میں ایک اسکول پر دستی بم حملے میں ایک ٹیچر ہلاک اور دو بچے زخمی ہو گئے۔

وادیِ تیراہ میں ریمورٹ کنٹرول بم دھماکا، پانچ افراد ہلاک

سرکاری ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ دھماکا تیراہ میں شدت پسند گروپ لشکر اسلام کی بیس میں ہوا۔

ہنگو: متاثرین کے کیمپ میں دھماکا، سات افراد ہلاک

ہنگو میں شمالی وزیرستان سے نقل مکانی کر کے آںے والوں کے متاثرین کے کیمپ میں دھماکے سے سات افراد ہلاک ہو گئے۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (1)

Raza
04 اکتوبر, 2012 16:05
Dawn news karachi ma Allama qamar al-ditta ko goli mar ker Halaq ker diya gaya mari samaj ma yeh nahi Ataa k shia ulmaa ko kou maara jata hai kia shi kafir hain? Islam kisi ko nahaq Qatal ki Ijazat nahi data, mari ek shia se baat hoi us ka kehna tha k Lashkar-e-Taiba walay na Qatal ka Fatwa jari kia howa hai. Agar Aisa hai to Firqa wariyat khbi khatam nahi ho saqti.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ماؤں اور بچوں کے قاتل ہم

پاکستان سے کم فی کس آمدنی رکھنے والے ممالک پیدائش کے دوران ماؤں اور بچوں کی اموات پر قابو پا چکے ہیں۔

تبدیلی کا پیش خیمہ

اکثر ایسے بڑے واقعات پیش آتے ہیں جو تبدیلی کے عمل کو تیز کردیتے ہیں، مگر ایسے حالات کسی فرد کے پیدا کردہ نہیں ہوتے۔

بلاگ

!گو نواز گو

اس ملک میں پڑھے لکھے لوگوں کی قدر ہی نہیں۔ جب تک پڑھے لکھوں کو وی آئی پی پروٹوکول نہیں دیا جاتا یہ ملک ترقی نہیں کرسکتا

قدرتی آفات اور پاکستان

قدرتی آفات سے پہلے انتظامات پر ایک ڈالر جبکہ بعد میں سات ڈالر خرچ ہوتے ہیں، اس کے باوجود ہم پہلے سے انتظامات نہیں کرتے۔

مقابلہ خوب ہے

کوئی دنیا کے در در پر پھیلے ہمارے کشکول کی زیارت کرے، پھر اس میں خیرات ڈالنے والوں کو فتح کرنے کے ہمارے عزم بھی دیکھے۔

پاکستان میں ذہنی بیماریاں اور ہماری بے حسی

آخر ذہنی بیماریوں کے شکار کتنے اور لوگوں کو اپنے گھرانوں کی بے حسی، اور معاشرے کی جانب سے ٹھکرائے جانے کو جھیلنا پڑے گا؟