30 اگست, 2014 | 3 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

پشاور: عسکریت پسندوں کا تھانےاور چیک پوسٹوں پرحملہ

پولیس ہیلپ لائن۔ —فائل فوٹو

پشاور: پشاور متنی پولیس اسٹیشن اور چیک پوسٹوں پر عسکریت پسندوں کے حملے کے بعد جوابی کارروائی میں چار عسکریت پسند ہلاک ہوئے۔

جبکہ حملے میں اے ایس آئی سمیت چار پولیس اہلکار زخمی اور ایک بکتربند کو نقصان پہنچا۔

عسکریت پسندوں نے گزشتہ رات پشاور کے متنی تھانے اور فرنٹیئر روڈ پر قائم چیک پوسٹوں پر بڑا حملہ کیا۔

ذرائع کے مطابق پولیس کی جوابی کارروائی میں چار عسکریت پسند مارے گئے۔

حملے میں زخمی ہونے والے چاروں پولیس اہلکاروں کو لیڈی ریڈنگ اسپتال منتقل کردیا گیا جہاں ان کی حالت خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے۔

دوسری جانب شہر میں مزید دو بم ناکارہ بنادئے گئے۔

اس حصے سے مزید

کوہاٹ : ایک ہی خاندان کے 5 افراد قتل

نامعلوم افراد نے ایک گھر میں گھس کر فائرنگ کی، جس کے نتیجے میں میاں، بیوی، دو بیٹیاں اور ایک بیٹا ہلاک ہوگیا۔

بے گھر افراد میتوں کی تدفین کے لیے پریشان

مقامی لوگ اپنے قبرستانوں میں ان کی میتوں کی تدفین کی، جبکہ انتظامیہ شمالی وزیرستان لے جانے کی اجازت نہیں دے رہی ہے۔

چار سال سے مغوی پروفیسر اجمل خان بازیاب

رپورٹس کے مطابق سیکیورٹی فورسز نے آپریشن کے دوران پروفیسر اجمل کو بازیاب کیا گیا، ان کو 2010 میں اغوا کیا گیا تھا


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (1)

Raza
04 اکتوبر, 2012 16:05
Dawn news karachi ma Allama qamar al-ditta ko goli mar ker Halaq ker diya gaya mari samaj ma yeh nahi Ataa k shia ulmaa ko kou maara jata hai kia shi kafir hain? Islam kisi ko nahaq Qatal ki Ijazat nahi data, mari ek shia se baat hoi us ka kehna tha k Lashkar-e-Taiba walay na Qatal ka Fatwa jari kia howa hai. Agar Aisa hai to Firqa wariyat khbi khatam nahi ho saqti.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

اسلام آباد کا تماشا

عمران خان کو یہ تسلیم کرنا چاہیے کہ جوڈیشل کمیشن ایک کمزور وزیر اعظم کے اثر و رسوخ سے آزاد ہو کر تحقیقات کر سکے گا.

جمہوریت کے تسلسل کی ضرورت

حکومت نےکس قدر عجلت میں مذاکرات کا فیصلہ کیا، اس سے معاملات کے اوپر جی ایچ کیو کی گرفت کا اچھی طرح اندازہ ہوجاتا ہے۔

بلاگ

اجتماعی سیاسی قبر

فوج کو سیاسی معاملات میں شرکت کی دعوت دینا اس بات کا ثبوت ہے کہ سیاستدان سیاسی معاملات سے نمٹنے کی طاقت نہیں رکھتے۔

مووی ریویو: مردانی - پاورفل کہانی، بہترین پرفارمنس

بولی وڈ اداکار رانی مکھرجی اور طاہر بھاسن دونوں ہی اپنی بولڈ پرفارمنس کے لئے تعریف کے لائق ہیں۔

عظیم مقاصد، پر راستہ؟

اس طوفان کے نتیجے میں ان چاہی افرا تفری پھیل سکتی ہے، اسلیے اچھے مقاصد کے لیے ایسے راستے اختیار نہیں کیے جانے چاہییں۔

انقلاب معافی چاہتا ہے

ڈی چوک وہ سیاسی چراغ ہے جس کو اگر ضدی شہزادے کافی حد تک رگڑ دیں تو کچھ پتا نہیں اس میں سے انقلاب کا جن نکل ہی آئے۔