18 ستمبر, 2014 | 22 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

صدر، وزیر اعظم ملاقات، پیپلز پارٹی کور کمیٹی کا اجلاس طلب

گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد اور وزیر اعلیٰ قائم علی شاہ صدر زرداری سے ملاقات میں صوبے کی صورتحال پر بریفنگ دے رہے ہیں۔ فوٹو آئی این پی

کراچی: صدر آصف زرداری اور وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کی بلاول ہاؤس میں دوبدو ملاقات ہوئی جس کے بعد صدر مملکت نے جمعرات کو پیپلز پارٹی کور کمیٹی کا اجلاس طلب کرلیا ہے جس میں اہم فیصلے متوقع ہیں۔

اس موقع پر پانچ اکتوبر سے شروع ہونے والے قومی اسمبلی کے اجلاس میں دوہری شہریت کے حوالے سے قانون سازی اور سرائیکی صوبے کے حوالے سے بھی معاملے کو آگے بڑھانے  کا فیصلہ کیا جبکہ پیپلز پارٹی نے نگراں وزیر اعظم کو بھی پنجاب سے لانے کا اصولی فیصلہ کرلیا ہے۔

اس سے قبل گورنر اور وزیراعلٰی سندھ نے بھی صدر مملکت سے ملاقات کی جس میں انہوں نے بلدیاتی آرڈیننس کی منظوری کےبعد کی صورتحال پر بریفنگ دی۔

صدر زرداری اور وزیر اعظم کے درمیان کراچی میں ہونے والی ملاقات میں پانچ اکتوبر سے شروع ہونے والے قومی اسمبلی کے اجلاس میں کے حوالے سے اہم ایجنڈے پر غور کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق صدرزرداری نے حکمران اتحاد کے ارکان پارلیمنٹ کو قومی اسمبلی اجلاس میں شرکت کی ہدایت  اور وفاقی وزیر مذہبی امور سید خورشید شاہ کو اتحادیوں سے فوری رابطے کا ٹاسک دے دیا گیاہے۔

ذرائع کے مطابق قومی اسمبلی کے اجلاس میں دوہری شہریت کے حوالے سے قانون سازی کے ساتھ ساتھ سرائیکی صوبے کے حوالے سے بھی معاملے کو آگے بڑھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

صدر اور وزیراعظم کی ملاقات کے دوران اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا کہ سپریم کورٹ کی طرف سے وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کو نااہل قرار دیے جانے کی صورت میں  نئے قائد ایوان فوری انتخاب کیا جائے گا۔

پیپلزپارٹی نے نگران سیٹ اپ کیلیے اتحادیوں سے مشاورت کا بھی فیصلہ کیا ہے، ذرائع کا کہنا ہے پاکستان مسلم لیگ ن کی جانب سے  حکومت کو تاحال نگران وزیراعظم کیلیے کسی نام سے آگاہ نہیں کیا گیا جس کے بعد پیپلز پارٹی اب خود نگران وزیراعظم کیلئے تین ناموں پر مشاور ت کرے گی، ملاقات میں پیپلز پارٹی نے نگران وزیراعظم کو پنجاب سے لانے کا اصولی فیصلہ کیا ہے۔

اس حصے سے مزید

'محکمہ تعلیم ایمپلائمنٹ ایکسچینج بن گیا ہے'

بچوں کی تعلیم پر منعقدہ کانفرنس میں ڈاکٹر فضل اللہ پیچوہو نے کہا کہ ہمارے ہاں نوّے فیصد ٹیچرز غیر تربیت یافتہ ہیں۔

حکومت وی آئی پیز پر پوری سیکیورٹی لگا دیتی ہے، پروفیسر افتخار اعظمی

سندھ پروفیسرز ایسوسی ایشن کے صدر کا کہنا ہے کہ اساتذہ کی ٹارگٹ کلنگ کے باعث کراچی پڑھے لکھے لوگوں سے محروم ہو جائے گا۔

جامعہ کراچی: شعبہ اسلامک اسٹڈیز کے سربراہ فائرنگ سے ہلاک

ڈاکٹر شکیل اوج کی گاڑی کو گلشن اقبال میں نامعلوم افراد نے نشانہ بنایا، جامعہ کراچی تین دن کے لیے بند رکھنے کا اعلان۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

مزید جمہوریت

نظام لپیٹ دینے اور امپائر کی باتیں کرنے کے بجائے ہمارا مطالبہ صرف مزید جمہوریت ہونا چاہیے، کم جمہوریت نہیں۔

تبدیلی آگئی ہے

ملک میں شہری حقوق کی عدم موجودگی میں عوام اب وسیع تر بھلائی کا سوچنے کے بجائے اپنے اپنے مفاد کے لیے اقدامات کررہے ہیں۔

بلاگ

شاہد آفریدی دوبارہ کپتان، ایک قدم آگے، دو قدم پیچھے

اس بات کی ضمانت کون دے گا کہ ماضی کی طرح وقار یونس اور شاہد آفریدی کے مفادات میں ٹکراؤ پیدا نہیں ہوگا۔

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔

کراچی میں فرقہ وارانہ دہشتگردی

کراچی ایک مرتبہ پھر فرقہ وارانہ دہشت گردی کی زد میں ہے اور روزانہ کوئی نہ کوئی بے گناہ سنی یا شیعہ اپنی جان گنوا رہا ہے۔

اجمل کے بغیر ورلڈ کپ جیتنا ممکن

خود کو ورلڈ کلاس باؤلنگ اٹیک کہنے والے ہمارے کرکٹ حکام کی پوری باؤلنگ کیا صرف اجمل کے گرد گھومتی ہے۔