02 ستمبر, 2014 | 6 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

صدر، وزیر اعظم ملاقات، پیپلز پارٹی کور کمیٹی کا اجلاس طلب

گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد اور وزیر اعلیٰ قائم علی شاہ صدر زرداری سے ملاقات میں صوبے کی صورتحال پر بریفنگ دے رہے ہیں۔ فوٹو آئی این پی

کراچی: صدر آصف زرداری اور وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کی بلاول ہاؤس میں دوبدو ملاقات ہوئی جس کے بعد صدر مملکت نے جمعرات کو پیپلز پارٹی کور کمیٹی کا اجلاس طلب کرلیا ہے جس میں اہم فیصلے متوقع ہیں۔

اس موقع پر پانچ اکتوبر سے شروع ہونے والے قومی اسمبلی کے اجلاس میں دوہری شہریت کے حوالے سے قانون سازی اور سرائیکی صوبے کے حوالے سے بھی معاملے کو آگے بڑھانے  کا فیصلہ کیا جبکہ پیپلز پارٹی نے نگراں وزیر اعظم کو بھی پنجاب سے لانے کا اصولی فیصلہ کرلیا ہے۔

اس سے قبل گورنر اور وزیراعلٰی سندھ نے بھی صدر مملکت سے ملاقات کی جس میں انہوں نے بلدیاتی آرڈیننس کی منظوری کےبعد کی صورتحال پر بریفنگ دی۔

صدر زرداری اور وزیر اعظم کے درمیان کراچی میں ہونے والی ملاقات میں پانچ اکتوبر سے شروع ہونے والے قومی اسمبلی کے اجلاس میں کے حوالے سے اہم ایجنڈے پر غور کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق صدرزرداری نے حکمران اتحاد کے ارکان پارلیمنٹ کو قومی اسمبلی اجلاس میں شرکت کی ہدایت  اور وفاقی وزیر مذہبی امور سید خورشید شاہ کو اتحادیوں سے فوری رابطے کا ٹاسک دے دیا گیاہے۔

ذرائع کے مطابق قومی اسمبلی کے اجلاس میں دوہری شہریت کے حوالے سے قانون سازی کے ساتھ ساتھ سرائیکی صوبے کے حوالے سے بھی معاملے کو آگے بڑھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

صدر اور وزیراعظم کی ملاقات کے دوران اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا کہ سپریم کورٹ کی طرف سے وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کو نااہل قرار دیے جانے کی صورت میں  نئے قائد ایوان فوری انتخاب کیا جائے گا۔

پیپلزپارٹی نے نگران سیٹ اپ کیلیے اتحادیوں سے مشاورت کا بھی فیصلہ کیا ہے، ذرائع کا کہنا ہے پاکستان مسلم لیگ ن کی جانب سے  حکومت کو تاحال نگران وزیراعظم کیلیے کسی نام سے آگاہ نہیں کیا گیا جس کے بعد پیپلز پارٹی اب خود نگران وزیراعظم کیلئے تین ناموں پر مشاور ت کرے گی، ملاقات میں پیپلز پارٹی نے نگران وزیراعظم کو پنجاب سے لانے کا اصولی فیصلہ کیا ہے۔

اس حصے سے مزید

وزیراعظم، وزیرداخلہ کی نااہلی کے لیے درخواست دائر

سندھ ہائی کورٹ میں دائر درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ نواز شریف کو آرٹیکل باسٹھ اور تریسٹھ کے تحت نااہل قرار دیا جائے

کراچی: دو پولیس اہلکار ٹارگٹ کلنگ میں ہلاک

آج صبح نامعلوم دہشت گردوں نے گشت پر مامور موٹر سائکل سوار پولیس اہلکاروں کو فائرنگ کا نشانہ بنایا۔

اسلام آباد احتجاج میں ایم کیو ایم کی شرکت کا امکان

متحدہ قومی موومنٹ کے فاروق ستار کا کہنا ہے کہ اگر حکومت نے مظاہرین پر تشدد کا جاری رکھا تو ہمیں بھی سڑکوں پر آنا پڑے گا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔