01 ستمبر, 2014 | 5 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

کوئٹہ دھماکہ:ایک ہلاک، چودہ زخمی

کوئٹہ میں ڈبل روڈ کے پاس دھماکے کے بعد جائے وقوعہ کا ایک منظر۔ رائٹرزتصویر

کوئٹہ : کوئٹہ کی ایک مصروف مارکیٹ میں بم دھماکے سے ایک ہلاک اور چودہ افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کوئٹہ کو سبی اور کراچی سے ملانے والے ڈبل روڈ پر یہ دھماکہ ہوا جس کی آواز دور تک سنی گئ۔

اس روڈ پر مشہور بڑیچ مارکیٹ کے پاس یہ دھماکہ ہوا جس میں چار پولیس اہلکار سمیت پندرہ افراد زخمی ہوئے۔

بعد ازاں دھماکے میں زخمی ایک بچہ ہسپتال میں دم توڑ گیا۔

زخمیوں کو فوری طور پر سول ہسپتال کوئٹہ منتقل کیا گیا جن میں سے کئی زخمیوں کی حالت اب بھی تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ دھماکے سے جہاں ایک رکشہ مکمل طور پر تباہ ہوا وہیں اطراف کی دکانوں کو بھی شدید نقصان پہنچا۔

ابتدائی تفتیش کے مطابق دھماکہ ریموٹ کنٹرول سے کیا گیا اور دھماکہ خیز مواد ایک موٹر سائیکل پر نصب کیا گیا تھا۔

اس حصے سے مزید

بلوچستان میں بارہ مشتبہ عسکریت پسند کی ہلاکت کا دعویٰ

گومازئی میں موجود عسکریت پسندوں کے خلاف آپریشن شروع کیا تھا جس کے نتیجے میں بارہ مشتبہ شرپسند ہلاک ہوگئے۔

بلوچستان: مختلف علاقوں میں فائرنگ، چار افراد ہلاک

کوہلو، ڈیرہ مراد جمالی اور قلعہ عبداللہ میں نامعلوم مسلح افراد کی ٹارگٹ کلنگ سے دو افراد زخمی بھی ہوئے۔

بلوچستان: ذکری فرقے کے چھ افراد سمیت نو ہلاک

حکام کے مطابق مسلح افراد نے ذکری فرقے سے تعلق والے افراد پر اس وقت فائرنگ کردی جب وہ ایک عبادت گاہ میں موجود تھے۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

احتیاطی نظربندی کا غلط قانون

فوجی اور سویلین حکومتوں نے باقاعدگی سے احتیاطی نظربندی کو اپنے مخالفین کو خاموش کرنے اوردھمکانے کے لیے استعمال کیا ہے۔

توجہ طلب شعبہ

بجلی کی لائنیں لگانے اور مرمت کرنے کو دنیا کے دس خطرناک ترین پیشوں میں شمار کیا جاتا ہے-

بلاگ

سیاست اور اخلاقیات

پتہ نہیں وہ کون سے ملک یا قومیں ہوتی ہیں جن کے عہدیدار کسی بھی ناکامی کی صورت میں فوراً اپنے عہدے سے مستعفی ہوجاتے ہیں۔

تاریخ کی تکرار

پولیس پر تشدد اور دہشت گردی کا الزام لگانے والے کیا اپنے گھروں پر کسی ایرے غیرے نتھو خیرے کو چڑھائی کی اجازت دیں گے؟

آبی مسائل کا ذمہ دار ہندوستان یا خود پاکستان؟

پاکستان میں پانی اور بجلی کے بحران کی وجہ پچھلے 5 عشروں سے پانی کے وسائل کی خراب مینیجمنٹ ہے۔

نوازشریف: قوت فیصلہ سے محروم

نواز شریف اپنے بادشاہی رویے کی وجہ سے پھنس چکے ہیں، جو فیصلے انہیں چھ ماہ پہلے کرنے چاہیے تھے وہ آج کر رہے ہیں۔