24 جولائ, 2014 | 25 رمضان, 1435
ڈان نیوز پیپر

ملالئے کو نوبل انعام ملنا چاہیے، انجلینا جولی

۔— فائل فوٹو

ہالی ووڈ کی سپر اسٹار اور اقوام متحدہ کی سفیربرائے خیر سگالی انجلینا  جولی نے کہا ہے کہ ملالئے یوسف زئی کا نام نوبل امن انعام کے لیے زیر غور آنا چاہیے۔

اپنے ایک مضمون میں جولی نے طالبان کی فائرنگ سے شدید زخمی ہونے والی سوات کی چودہ سالہ طالب علم کی بہادری کو خراج تحسین پیش کیا۔

جولی کے مطابق ملالئے پر حملے کا ان کے بچوں کو بھی دکھ ہے۔

ان کی بیٹی زاہرہ کا کہنا ہے کہ ملالئے کو نا صرف اعزاز سے نوازنا چاہئے بلکہ اس کا ایک مجسمہ بھی بنانا چاہئے۔

ہالی ووڈ سپر اسٹار کی چھ سالہ بیٹی شیلو کو ملالئے کے ساتھ اس کے پالتو جانوروں کی بھی فکر لاحق ہے۔

جولی نے مضمون میں مزید لکھا کہ ان کی بچوں کو ملالئے کے والدین سے بھی دلی ہمدردی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ نوبل کمیٹی کو نوبل انعام کے لیے ملالئے کے نام پر ضرور غور کرنا چاہئے۔

انہوں نے زور دیا کہ پاکستان کی ہر بچی کو ملالئے کے لیے آواز اٹھانی چاہئےکیونکہ 'اب ہم سب ملالہ ہیں' ۔

جولی نے دنیا بھرمیں کام کرنے والی تنظمیوں سے پاکستان میں خواتین اور بچوں کے حقوق کے لیے فنڈز جمع کرنے کی اپیل بھی کی ہے۔

اس حصے سے مزید

بولی وڈ سٹار زہرہ سہگل کا دہلی میں انتقال

حرکت قلب بند ہونے کے سبب مشہور اداکار 102 سال کی عمر میں جمعرات کو دہلی میں انتقال کر گئیں۔

معروف شیف فرح جہانزیب انتقال کرگئیں

فرح جہانزیب بریسٹ کینسر سے اپنی جنگ ہار کر 45 سال کی عمر میں اس دنیا سے رخصت ہوئی

پاکستانی ڈراموں کیلئے ہندوستانی مارکیٹ دروازے کھل گئے

زی انٹرٹینمنٹ انٹرپرائزز لمیٹیڈ (زیل) نے اپنے چینیل پر 'زندگی' کے نام سے ٹاپ پاکستانی ڈراموں کے سلسلے کا آغاز کیا ہے۔


تبصرے بند ہیں.

تبصرے (1)

rai tanveer
18 اکتوبر, 2012 09:31
is larki ko goli jis ne b mari he is ko b saza lazmi milni chaye aur jis ne nabi pak ki shan e pak me gustakhi ki he iske koi mafi ne . is larki k liay to har koi tarap raha he aur humary nabi pak k liay kisi pe koi asar ne huwa he. yeh hein humary hukmaran
سروے
مقبول ترین
قلم کار

ایک عہد ساز فیصلہ

مذہب کا مطلب صرف بے لچک پن اور سخت گیری نہیں ہوتا، مذہبی آزادی میں ضمیر، خیالات، احساسات، عقیدہ سب شامل ہونا چاہئے-

بے وجہ پوائنٹ اسکورنگ

ہوسکتا ہے عمران خان پی ایم ایل-ن کی حکومت گرانا چاہتے ہوں لیکن کیا وہ واقعی ملک اور اسکے جمہوری اداروں کے لئے خطرہ ہیں؟

بلاگ

صحت عامہ کا بنیادی مسئلہ

سیاسی جماعتیں اپنے حامیوں کو محض نعرے لگوانے کے بجاۓ تعمیری سرگرمیوں کے لئے کیوں متحرک نہیں کرتیں؟

وزیرستان کے اکھاڑے سے

کشتی کا تو پتا نہیں اصلی ہے یا نہیں لیکن ہم نے ان پہلوانوں کو کسرت اکٹھے ہی کرتے دیکھا ہے۔

شکایتوں کا بن جو میرا دیس ہے

شکایتی ٹٹو زنده قوم کی نشانی ہوتے ہیں۔ مستقل شکایت کرتے رہنا اب ہماری پہچان بن چکا ہے۔

کھیلنے دو: گراؤنڈز کہاں ہیں؟

سیدھی سی بات ہے، ملائی تبھی زیادہ اور بہترین ہوگی جب دودھ زیادہ ہوگا-