18 اپريل, 2014 | 17 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

افغانستان فضل اللہ کو حوالے کرے، پاکستان

وزیرِخارجہ حناربانی کھر۔ —فائل تصویر

اسلام آباد: اطلاعات کے مطابق پاکستان نےافغانستان میں روپوش پاکستان تحریک طالبان سوات کے چیف مولوی فضل اللہ کی حوالگی کا مطالبہ کیا ہے۔

فضل اللہ سوات میں فوجی آپریشن کے بعد افغان  صوبے کنڑ میں روپوش ہو گئے تھے۔

ٹی وی چینلز نے سفارتی ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ پاکستان کی وزیر خارجہ حنا ربانی کھر نے  یہ مطالبہ اتوار کی رات امریکہ کے نمائندہ خصوصی برائے پاکستان اور افغانستان مارک گراسمین کے ساتھ ایک ملاقات میں کیا  تھا۔

کھر نے گرامسین پر زور دیا تھا کہ وہ افغانستان پر مولوی فضل اللہ کو حوالے کرنے کے لیے دباؤ ڈالیں۔

ان کا کہنا تھا کہ فضل اللہ پاکستانی سرحد سے ملحقہ افغان علاقے میں روپوش ہیں اور ان کے ساتھی وقتاً فوقتاً پاکستان کی دیر، چترال اور دوسرے علاقوں میں موجود فوجی چیک پوسٹوں پر حملے کرتے ہیں۔

ٹی وی چینلز کے مطابق وزیر خارجہ نے امریکی  نمائندے کو بتایا کہ فضل اللہ پاکستان میں سرحد پار حملوں میں مُلوث ہیں اور ان پر الزام ہے کہ انہوں نے ملالئے یوسف زئی پر حملے کی منصوبہ بندی کی تھی۔

اس حصے سے مزید

افغان انتخابات: ابتدائی نتائج میں عبداللہ عبداللہ پہلے نمبر پر

الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری ان نتائج کے مطابق اشرف عنی دوسرے اور زلمے رسول تیسرے نمبر پر ہیں۔

افغان صدارتی انتخابات کے بعد ووٹوں کی گنتی جاری

پاکستان سمیت دنیا بھر نے افغانستان میں صدارتی انتخابات کی تکمیل کا خیرمقدم۔

پرامن افغان صدارتی انتخابات ختم، بھاری ٹرن آؤٹ متوقع

امریکی صدر باراک اوباما نے افغان عوام کو انتخابات میں بڑی تعداد میں شرکت پر مبارکباد دیتے ہوئے تاریخی سنگ میل قرار دیا۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

ریویو: بھوت ناتھ - ریٹرنز

مرکزی کرداروں سے لیکر سپورٹنگ ایکٹرز سب اپنی جگہ کمال کے رہے اور جس فلم میں بگ بی ہوں اس میں چار چاند تو لگ ہی جاتے ہیں۔

میانداد کا لازوال چھکا

جب بھی کوئی بیٹسمین مقابلے کی آخری گیند پر اپنی ٹیم کو چھکے کے ذریعے جتواتا ہے تو سب کو شارجہ ہی یاد آتا ہے۔

جمہوریت، سیکولر ازم اور مذہبی سیاسی جماعتیں

مذہب کے نام پر کوئی متفقہ سیاسی نظام بن ہی نہیں سکتا کیونکہ مذاہب کے درجنوں دھڑے کسی ایک ایشو پر متفق نہیں ہو سکتے۔

یکسانیت اور رنگا رنگی

یکسانیت جانی پہچانی بلکہ اطمینان بخش بھی ہوسکتی ہے، لیکن اس کا مطلب ہے چیلنج سے بچنا، جس کے بغیر کامیابی ممکن نہیں۔