01 اکتوبر, 2014 | 5 ذوالحجہ, 1435
ڈان نیوز پیپر

'افغان انٹیلی جنس سربراہ پر حملہ کا منصوبہ پاکستان میں بنا'

File picture shows Afghanistan's Intelligence Chief Khalid speaking to the media in the Arghandab district of Kandahar province
افغان نیشنل ڈائریکٹوریٹ آف سیکورٹی کے سربراہ اسد اللہ خالد۔—رائٹرز

کابل: صدر حامد کرزئی نے الزام لگایا ہے کہ افغان انٹیلی جنس کے سربراہ اسد اللہ خالد پرحملہ کی منصوبہ بندی پاکستان کے شہر کوئٹہ میں کی گئی۔

نیشنل ڈائریکٹوریٹ آف سیکورٹی(این ڈی ایس) کے سربراہ خالد پر جمعرات کو کابل کے  وسطی علاقے تائیمان میں خود کش حملہ کیا گیا تھا۔

حملے کے بعد گزشتہ روز خالد کو بگرام میں امریکی فوجی ہسپتال منتقل کردیا گیا تھا، جہاں ان کی حالت خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے۔

ہفتہ کو ایک پریس کانفرنس سے بات چیت میں کرزئی نے پاکستان پر براہ راست الزام لگانے سے گریز کیا تاہم ان کا کہنا تھا کہ وہ اس معاملے پر اسلام آباد سے بات کریں گے۔

افغان طالبان نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی تھی لیکن کرزئی کا کہنا ہے کہ عسکریت پسند کابل کے وسط میں اس طرح کی کارروائی نہیں کر سکتے۔

افغان صدر کا کہنا تھا کہ 'بظاہر دوسرے حملوں کی طرح اس کی ذمہ داری طالبان نے قبول کی ہے لیکن اپنے جسم کے اندر بارودی مواد چھپا کر اس طرح کی پیچیدہ کارروائی ان کی نہیں ہو سکتی'۔

' یہ انتہائی مہارت سے کیا گیا حملہ ہے۔۔۔۔ طالبان ایسا نہیں کر سکتے ، اس کے پیچھے کوئی بڑا اور منظم ہاتھ ملوث ہے'۔

افغان صدر نے کہا کہ وہ یہ معاملہ ترکی میں پاکستانی حکام سے ملاقات کے دوران اٹھائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ 'یہ ایک اہم مسئلہ ہے اور ہم امید کرتے ہیں کہ پاکستانی حکومت ہمیں اس حوالے سے درست معلومات دینے کے علاوہ سنجیدگی سے تعاون کرے گی تاکہ ہمارے خدشات ختم ہو سکیں'۔

اس حصے سے مزید

افغان امریکا دوطرفہ سیکیورٹی معاہدے پر دستخط

افغانستان اور امریکا نے منگل کو افغان صدارتی محل میں دوطرفہ سیکیورٹی کے معاہدے پر دستخط کردیئے۔

افغان صدر اشرف غنی اور چیف ایگزیکٹیو عبداللہ نے حلف اٹھا لیا

حلف برداری کی تقریب کے موقع پر دارالحکومت کابل میں سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے تھے۔

افغانستان میں دو بم دھماکے، پانچ پولیس اہلکار ہلاک

یہ بم دھماکے ایک ایسے وقت میں ہوئے ہیں جب پیر کو نو منتخب افغان صدر اپنے عہدے کا حلف اٹھانے جارہے ہیں۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

فائرنگ کی زد میں

پولیس کی قیادت کو ادراک ہوا ہے کہ اسے صاحب اختیار لوگوں کے غیر قانونی مطالبات کو نا کہنے کی ہمت دکھانے کی ضرورت ہے.

پالیسی سازی کا فن

پنجاب میں باربارآنے والے سیلاب نے فیصلہ سازی اور پالیسی سازی کے درمیان خلا کو بےنقاب کردیا ہے۔

بلاگ

مقابلہ خوب ہے

کوئی دنیا کے در در پر پھیلے ہمارے کشکول کی زیارت کرے، پھر اس میں خیرات ڈالنے والوں کو فتح کرنے کے ہمارے عزم بھی دیکھے۔

پاکستان میں ذہنی بیماریاں اور ہماری بے حسی

آخر ذہنی بیماریوں کے شکار کتنے اور لوگوں کو اپنے گھرانوں کی بے حسی، اور معاشرے کی جانب سے ٹھکرائے جانے کو جھیلنا پڑے گا؟

مووی ریویو: دی پرنس — انسپائر کرنے میں ناکام

مجموعی طور پر روبوٹ جیسی پرفارمنسز اور کمزور پلاٹ کی وجہ سے یہ فلم ناظرین کی دلچسپی قائم رکھنے میں ناکام رہی-

مخلص سیاستدانوں کے سچے بیانات

جب سے دھرنے جاری ہیں، تب سے ہم نے سیاستدانوں سے طرح طرح کی باتیں سنی ہیں جن میں سے کچھ پیش خدمت ہیں۔