19 ستمبر, 2014 | 23 ذوالقعد, 1435
ڈان نیوز پیپر

'افغان انٹیلی جنس سربراہ پر حملہ کا منصوبہ پاکستان میں بنا'

File picture shows Afghanistan's Intelligence Chief Khalid speaking to the media in the Arghandab district of Kandahar province
افغان نیشنل ڈائریکٹوریٹ آف سیکورٹی کے سربراہ اسد اللہ خالد۔—رائٹرز

کابل: صدر حامد کرزئی نے الزام لگایا ہے کہ افغان انٹیلی جنس کے سربراہ اسد اللہ خالد پرحملہ کی منصوبہ بندی پاکستان کے شہر کوئٹہ میں کی گئی۔

نیشنل ڈائریکٹوریٹ آف سیکورٹی(این ڈی ایس) کے سربراہ خالد پر جمعرات کو کابل کے  وسطی علاقے تائیمان میں خود کش حملہ کیا گیا تھا۔

حملے کے بعد گزشتہ روز خالد کو بگرام میں امریکی فوجی ہسپتال منتقل کردیا گیا تھا، جہاں ان کی حالت خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے۔

ہفتہ کو ایک پریس کانفرنس سے بات چیت میں کرزئی نے پاکستان پر براہ راست الزام لگانے سے گریز کیا تاہم ان کا کہنا تھا کہ وہ اس معاملے پر اسلام آباد سے بات کریں گے۔

افغان طالبان نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی تھی لیکن کرزئی کا کہنا ہے کہ عسکریت پسند کابل کے وسط میں اس طرح کی کارروائی نہیں کر سکتے۔

افغان صدر کا کہنا تھا کہ 'بظاہر دوسرے حملوں کی طرح اس کی ذمہ داری طالبان نے قبول کی ہے لیکن اپنے جسم کے اندر بارودی مواد چھپا کر اس طرح کی پیچیدہ کارروائی ان کی نہیں ہو سکتی'۔

' یہ انتہائی مہارت سے کیا گیا حملہ ہے۔۔۔۔ طالبان ایسا نہیں کر سکتے ، اس کے پیچھے کوئی بڑا اور منظم ہاتھ ملوث ہے'۔

افغان صدر نے کہا کہ وہ یہ معاملہ ترکی میں پاکستانی حکام سے ملاقات کے دوران اٹھائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ 'یہ ایک اہم مسئلہ ہے اور ہم امید کرتے ہیں کہ پاکستانی حکومت ہمیں اس حوالے سے درست معلومات دینے کے علاوہ سنجیدگی سے تعاون کرے گی تاکہ ہمارے خدشات ختم ہو سکیں'۔

اس حصے سے مزید

افغانستان: بغلان میں مسجد کے باہر دھماکا، 6 ہلاک

صوبائی پولیس چیف کے ترجمان کا کہنا ہے کہ دھماکا مسجد کے باہر ہوا تاہم یہ واضح نہیں ہے کہ اس کے پیچھے کون ملوث ہے۔

افغانستان: طالبان کے حملے میں 6 پولیس اہلکار ہلاک

صوبائی پولیس چیف ترجمان کے مطابق پولیس کی جوابی کارروائی سے آٹھ طالبان بھی مارے گئے ہیں۔

کابل: امریکی سفارتخانے کے قریب خودکش حملہ،3 ہلاک

حکام کے مطابق خودکش حملہ آور بارود سے بھری ایک گاڑی میں سوار تھا، جس نے غیرملکی فوج کے ایک قافلے کو نشانہ بنایا۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

رودرہیم کا سبق

بچوں پر ہونیوالے جنسی تشدد پر ہماری شرمندگی کی سمت غلط ہے۔ شرم کی بات تو یہ ہے کہ ہم اس کو روکنے کی کوشش نہ کریں-

رکاوٹیں توڑ دو

اشرافیہ تعلیمی نظام کا بیڑہ غرق کرنے پر تلی ہوئی ہے جو خاص طور سے 1970ء کی دہائی کے بعد سے بد سے بدتر ہورہاہے۔

بلاگ

مووی ریویو: دختر -- دلوں کو چُھو لینے والی کہانی

اپنی تمام تر خوبیوں اور کچھ خامیوں کے ساتھ اس فلم کو پاکستانی نکتہ نگاہ سے پیش کیا گیا ہے۔

پھر وہی ڈیموں پر بحث

ڈیموں سے زراعت کے لیے پانی ملتا ہے، پانی پر کنٹرول سے بجلی پیدا کی جاسکتی ہے اور توانائی بحران ختم کیا جاسکتا ہے۔

شاہد آفریدی دوبارہ کپتان، ایک قدم آگے، دو قدم پیچھے

اس بات کی ضمانت کون دے گا کہ ماضی کی طرح وقار یونس اور شاہد آفریدی کے مفادات میں ٹکراؤ پیدا نہیں ہوگا۔

وارے نیارے ہیں بے ضمیروں کے

ماضی ہو یا حال، اربابِ اختیار و اقتدار کی رشوت اور بدعنوانی کے خلاف کھوکھلی بڑھکوں کی حیثیت محض لطیفوں سے زیادہ نہیں۔