21 اپريل, 2014 | 20 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

'پاکستان 'محفوظ پناہ گاہوں' کے خلاف کارروائی کے لیے تیار'

امریکی وزیرِ دفاع لیون پنیٹا ۔ اے پی تصویر
امریکی وزیرِ دفاع لیون پنیٹا ۔ اے پی تصویر

واشنگٹن: امریکی وزیر دفاع لیون پینیٹا نے کہا ہے کہ پاکستان نے افغان سرحد سے ملحقہ علاقوں میں موجود عسکریت پسندوں کے خلاف کارروائی پر آمادگی ظاہر کی ہے۔

کویت کے دورے کے دوران میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پنیٹا نے کہا کہ پاکستان عسکریت پسندوں کے خلاف کارروائی کی اہلیت رکھتا ہے اور پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی نے عسکریت پسندوں کے محفوظ ٹھکانوں پر مزید دباؤ بڑھانے پر آمادگی کا اظہار کیا ہے۔

پینیٹا نے اس بات کا بھی اعتراف کیا کہ پاکستان افغان طالبان کے ساتھ پرامن حل کے لیے مذاکرات میں مدد کررہا ہے۔

یہ بیان پینٹاگون کی ایک رپورٹ کے منظر عام پر آنے کے بعد آیا ہے۔

اس رپورٹ میں تاثر دیا گیا تھا کہ پاکستان نے اب بھی دہشت گردوں کو اپنے قبائلی علاقوں میں موجود محفوظ ٹھکانوں سے کارروائیوں کی اجازت دے رکھی ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ یہ رپورٹ پرانی ہے اور اب پاکستان نے اس حوالے سے اپنی کارکردگی کافی بہتر کی ہے۔

پیر کو منظر عام پر آنے والی یہ رپورٹ کانگریس کو تین مہینے قبل بھیجی گئی تھی۔

اس رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ فاٹا میں دہشت گردوں کے محفوظ ٹھکانوں کی وجہ سے امریکہ اور اتحادی افواج افغانستان میں دہشت گردوں کو ' فیصلہ کن شکست' نہیں دے پارہے ہیں۔

پینٹاگون میں حکام نے اس رپورٹ کے حوالے سے میڈیا کے نمائندوں کو بتایا تھا کہ جولائی سے اب تک پاکستان کے ساتھ تعلقات میں بہتری آئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ نیٹو فورس پاکستان کے ساتھ مل کر آپریشن کررہی ہے لیکن اس کا مطلب یہ نہیں کہ سب کچھ ٹھیک ہوگیا ہے کیوں کہ پاکستان میں ابھی تک دہشت گردوں کے محفوظ ٹھکانے موجود ہیں۔

اس حصے سے مزید

آئی ایم ایف اسٹیٹ بینک کی خودمختاری کے بل سے غیرمطمئن

آئی ایم ایف مشن کے سربراہ نے ڈان کوبتایا کہ آئی ایم ایف کو اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے ترمیمی ایکٹ میں کچھ تحفظات ہیں۔

ای سی ایل سے متعلق مشرف کی سندھ ہائی کورٹ میں درخواست

درخواست میں کہا گیا کہ مشرف اپنی والدہ سے ملنے دبئی جانا چاہتے ہیں، لہٰذا ان کا نام ای سی ایل سے خارج کیا جائے۔

سابق چیئرمین پیمرا کا برطرفی کو عدالت میں چیلنج کرنے کا فیصلہ

چوہدری رشید کے وکیل کا کہنا ہے کہ وہ اپنے مؤکل کی برطرفی کے خلاف آج پیر کو اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپیل دائر کریں گے۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

نریندر مودی اور نواز شریف ساتھ ساتھ

اگر بی جے پی حکومت بنانے میں کامیاب ہوتی ہے تو 1998 کی طرح آج بھی پاکستان میں نواز شریف کی ہی حکومت ہوگی۔

دنیاۓ صحافت: داستاں تک بھی نہ ہوگی داستانوں میں

ایک فوجی کی طرح صحافی کو بھی ہرگز اکیلا نہیں چھوڑا جاسکتا، یہ سوچنا کہ یہ ہماری جنگ نہیں، سراسر حماقت ہے-

2 - پاکستان کی شہری تاریخ ... ہمیں سب ہے یاد ذرا ذرا

بھٹو حکومت کے ابتدائی سالوں میں قوم کا مزاج یکسر تبدیل ہو گیا تھا، کیونکہ ملک ایک نئے پاکستان کی طرف بڑھ رہا تھا-

سچ، گولی اور بے بس جرنلسٹ

حامد میر پر حملہ ایک بار پھر صحافی برادری کی بے بسی کی طرف اشارہ کرتا ہے