02 اگست, 2014 | 5 شوال, 1435
ڈان نیوز پیپر

'میڈیا اور عدلیہ کو مضبوط اور مستحکم بنانا چاہتے ہیں'

وزیرِ اعظم راجہ پرویز اشرف۔ رائٹرز تصویر
وزیرِ اعظم راجہ پرویز اشرف۔ رائٹرز تصویر

گوجر خان: وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے کہا ہے کہ میڈیا اور عدلیہ ہمارے ادارے ہیں، انہیں مزید مضبوط و مستحکم بنانا چاہتے ہیں۔

 ہفتے کو وزیراعظم سے گوجر خان کے اکابرین کے وفد نے ملاقات کی جس میں انکا کہنا تھا کہ انہیں کسی سے سبق حاصل کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔

 وزیراعظم نے کہا کہ سستی روٹی اور لیپ ٹاپ اسکیموں کیبجائے ہم نے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام شروع کیا جسے پوری دنیا نے غربت کے خاتمے کے لیے مثالی قرار دیا ہے۔

 انہوں نے کہا کہ میڈیا اور عدلیہ آج آزاد اور ہمارے ادارے ہیں، انہیں مزید مضبوط اور مستحکم بنانا چاہتے ہیں۔

 انکا کہنا تھا کہ میڈیا، تجزیہ کاروں کی تمام تر پیشن گوئیوں کے باوجود حکومت اپنی پانچ سالہ مدت پوری کرنے جا رہی ہے۔

 وزیراعظم نے کہا کہ وہ مخالفت برائے مخالفت کے خلاف ہیں، 'کسی بھی فورم پر یہ ثابت کرنے کو تیار ہوں جو کارکردگی ہم نے دکھائی پہلے کسی نے نہیں دکھائی۔'

 انہوں نے کہا کہ پاکستان گندم درآمد کرنے سے برآمد کرنا والا ملک بن گیا ہے۔

 راجہ پرویز اشرف نے کہا کہ 'قوم کو یقین دلاتا ہوں کہ آئندہ عام انتخابات آزادانہ اور شفاف ہوں گے'

 انہوں نے  کہا کہ انتخابی فہرستوں سے جعلی ووٹ ختم کر دیئے گئے ہیں، اب کوئی بوگس ووٹ نہیں ڈال سکے گا۔

 وزیراعظم نے انکشاف کیا کہ صرف گوجر خان میں ایک لاکھ، اکیس ہزار جعلی ووٹ فہرستوں سے نکالے گئے ہیں۔

 انہوں نے کہا کہ فخرالدین جی ابراہیم کی بطور چیف الیکشن کمشنر تعیناتی ثابت کرتی ہے، ہم اداروں کو مستحکم کرنا چاہتے ہیں۔

اس حصے سے مزید

لاہور: شوہر نے بیوی کو تیزاب سے جلا دیا

خاتون حسینہ بی بی کے شوہر کے ساتھ گھر جانے سے انکار پر ملزم قدیر نے اپنی بیوی پر تیزاب پھینک دیا۔

رحیم یار خان: ماں بیٹی کو تیزاب سے جھلسا دیا گیا

پولیس نے آمنہ کے سابق شوہر احمد سمیت چار نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کر کے کاروائی شروع کردی ہے۔

ق لیگ، طاہر القادری پی ٹی آئی مارچ میں شامل ہو سکتے ہیں

ڈاکٹر قادری چوہدری شجاعت کے ذریعے پی ٹی آئی اور اپنے نمائندوں کے درمیان بات چیت کے حتمی نتائج کے منتظر۔


تبصرے بند ہیں.
سروے
مقبول ترین
قلم کار

کاؤنٹ ڈاؤن ٹو 14 اگست

پی ایم ایل-این نے پی ٹی آئی کے لانگ مارچ کو ناکام بنانے کے لئے یوم آزادی کو چنا ہے-

ہمارا پارٹ ٹائم لیڈر

اتنی ناکارہ لیڈرشپ کی مثال مشکل سے ملیگی جس میں کسی دوراندیشی کی کوئی جھلک نہ ہو-

بلاگ

پاکستان یا متاثرستان

اس ملک میں تو متاثرین ہی متاثرین ہیں ایک حکومت کس کس کو سنبھالے؟

کیا یہ بھی پاکستان ہے؟

گُل خان آتی جاتی بسوں کو دیکھتا رہا اور سوچتا رہا کہ اس بس میں سفر کرنے والے کتنے خُوش نصیب ہیں۔

پکوان کہانی: موسم گرما کی سوغات 'آم

پرانے وقتوں کے لوگوں کی دلچسپ تصور اور حکمت کی بدولت، پھلوں کا بادشاہ عام انسان کی غذا بن گیا۔

پاکستان میں اسٹارٹ اپس اب تک ناکام کیوں؟

آجکل یہ فیشن سا بن گیا ہے کہ ہر کوئی یہی کہتا نظر آ رہا ہے کہ اس کے پاس 'اسٹارٹ اپ' ہے-