19 اپريل, 2014 | 18 جمادی الثانی, 1435
ڈان نیوز پیپر

عراق میں بم دھماکوں سے 7 افراد ہلاک، 27 زخمی

کرکوک میں کار بم دھماکے بعد فائر بریگیڈ کا اہلکار گاڑی میں لگی آگ بجھانے کی کوشش کر رہا ہے۔ فائل فوٹو اے ایف پی۔۔۔

کرکوک: عراق کے شمالی شہر کرکوک میں اتوار اہل تشیع کی عبادت گاہوں پر ہونے والے بم دھماکوں میں پانچ افراد ہلاک ہو گئے جبکہ کرد پولیٹیکل دفتر پر ہونے والے حملے میں دو افراد جان کی بازی ہار گئے۔

سینئر پولیس آفیسر نے اے ایف پی کو بتایا کہ کرکوک کے شمال اور جنوب میں شیعہ مسلمانوں کی دو عبادت گاہوں کو دو کار بم دھماکوں اور سات سڑک کنارے نصب بم دھماکوں سے نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں پانچ افراد ہلاک اور 14 زخمی ہو گئے۔

افسر کے مطابق حملے رات ساڑھے سات بجے کیے گئے، کرکوک جنرل اسپتال کے ایک ڈاکٹر نے ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے۔

ایک پولیس افسر کے مطابق اتوار کو ہی صوبے دیالا کے علاقے جلاولا میں عراق کے صدر جلال طالبانی کی پارٹی کے مقامی ہیڈکوارٹر کے باہر اس وقت کار بم دھماکہ ہوا جب لوگوں کی بڑی تعداد کرد پیش مرگا سیکیورٹی فورسز کو جوائن کرنے کیلیے جمع ہوئی تھی۔

جلاولا اسپتال کے ڈاکٹر اور پولیس افسر کے مطابق جلاولا جو کرکوک کی طرح متنازع علاقے میں واقع ہے میں ہونے والے حملے میں دو افراد ہلاک 13 زخمی ہو گئے۔

اس حصے سے مزید

اسرائیل کا فلسطین پر مالی پابندیوں کا اعلان

اسرائیلی وزیرِ اعظم کا فلسطینی افسروں اور وزیروں سے رابطہ نہ رکھنے کا حکم، فلسطینی سیل فون کمپنی کا سامان بھی ضبط۔

عسکری تنظیم کا ایرانی محافظ رہا کرنے کا دعویٰ

ان محافظوں کو پاکستانی سرحد کے قریب فروری میں جیش العدل نامی تنظیم نے اغوا کیا تھا۔

شامی جنگ: 'لبنان میں مہاجرین کی تعداد دس لاکھ سے تجاوز'

یو این ایچ سی آر نے کہا کہ شامی مہاجرین کی تعداد لبنان کی آبادی کے چوتھائی حصہ کے برابر ہو گئی ہے۔


تبصرے بند ہیں.
مقبول ترین
بلاگ

ریویو: بھوت ناتھ - ریٹرنز

مرکزی کرداروں سے لیکر سپورٹنگ ایکٹرز سب اپنی جگہ کمال کے رہے اور جس فلم میں بگ بی ہوں اس میں چار چاند تو لگ ہی جاتے ہیں۔

میانداد کا لازوال چھکا

جب بھی کوئی بیٹسمین مقابلے کی آخری گیند پر اپنی ٹیم کو چھکے کے ذریعے جتواتا ہے تو سب کو شارجہ ہی یاد آتا ہے۔

جمہوریت، سیکولر ازم اور مذہبی سیاسی جماعتیں

مذہب کے نام پر کوئی متفقہ سیاسی نظام بن ہی نہیں سکتا کیونکہ مذاہب کے درجنوں دھڑے کسی ایک ایشو پر متفق نہیں ہو سکتے۔

یکسانیت اور رنگا رنگی

یکسانیت جانی پہچانی بلکہ اطمینان بخش بھی ہوسکتی ہے، لیکن اس کا مطلب ہے چیلنج سے بچنا، جس کے بغیر کامیابی ممکن نہیں۔